فلسطینی بچے کے قاتلوں کے خلاف اسرائیل سخت کارروائی کرے گا

اسرائیل نے کہا ہے کہ وہ مغربی کنارے پر واقع ایک مکان میں آگ لگا کر 18 ماہ کے ایک فلسطینی بچے کی جان لینے والے مشتبہ یہودی شدت پسندوں کو پکڑ کر ہی دم لے گا۔

Aug 01, 2015 11:54 AM IST | Updated on: Aug 01, 2015 11:54 AM IST
فلسطینی بچے کے قاتلوں کے خلاف اسرائیل سخت کارروائی کرے گا

دبئی ۔ اسرائیل نے کہا ہے کہ وہ مغربی کنارے پر واقع ایک مکان میں آگ لگا کر 18 ماہ کے ایک فلسطینی بچے کی جان لینے والے مشتبہ یہودی شدت پسندوں کو پکڑ کر ہی دم لے گا۔ وزیر اعظم بنجامن نیتن ياهو نے کہا ’’اسرائیل اس طرح کے جرائم کے خلاف جنگ کرنے اورایسے عناصر کو انجام تک پہنچانے کے لئے انصاف کے کٹہرے میں کھڑا کرنے کے لئے مصروف عمل ہے‘‘۔انہوں نے کہا کہ یہ حملہ ہر طرح سے دہشت گردانہ کارروائی ہے۔ اگرچہ فلسطینی حکام نے اس حملے کے لئے اسرائیل کو ذمہ دار ٹھہرایا ہے۔ مغربی کنارے کے نیبلس شہر میں ہوئی آگ زنی کی اس واردات میں 18 ماہ کے علی شاد دوابشا کی موت ہو گئی اور اس کے والدین اور ایک چار سالہ بھائی شدید طور پر زخمی ہو گئے ہیں۔اس کی ماں 90 فیصد تک جل چکی ہے اور اس کی حالت سنگین بتائی جا رہی ہے۔ مشتبہ یہودی شدت پسندوں نے دو مکانوں میں آگ زنی کی جن میں سے ایک کی دیوار پر عبرانی زبان میں’’ بدلہ ‘‘لکھا گیا تھا۔ آگ زنی میں دونوں مکان مکمل طور پر تباہ ہو گئے۔مکانوں میں اس وقت آگ لگائی گئی جب خاندان کے رکن سو رہے تھے۔

Loading...

Loading...