உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ’جموں وکشمیر اور لداخ ہمارے تھے، ہیں اور رہیں گے‘ اقوام متحدہ میں عمران خان کے جھوٹ پر ہندوستان کا جواب

    ’جموں وکشمیر اور لداخ ہمارے تھے، ہیں اور رہیں گے‘ اقوام متحدہ میں عمران خان کے جھوٹ پر ہندوستان کا جواب

    ’جموں وکشمیر اور لداخ ہمارے تھے، ہیں اور رہیں گے‘ اقوام متحدہ میں عمران خان کے جھوٹ پر ہندوستان کا جواب

    India at UNGA: اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں ہندوستان کی پہلی خاتون سکریٹری اسنیہا دوبے نے کہا کہ دہشت گردوں پناہ دینا، مدد کرنا اور حمایت کرنا پاکستان کی تاریخ اور پالیسی میں شمار ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Share this:
      اقوام متحدہ: امریکہ کے تین روزہ دورے کے آخری دن وزیر اعظم نریندر مودی (PM Narendra Modi) اقوام متحدہ جنرل اسمبلی (UNGA) کو خطاب کریں گے۔ اس سے قبل ہندوستان نے پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان (Imran Khan) کی طرف سے کشمیر کو لے کر دیئے گئے بیان کا جواب دیا۔ ہندوستان نے ہفتہ کے روز واضح کردیا ہے کہ جموں وکشمیر اور لداخ ہندوستان کا حصہ ہیں۔ ساتھ ہی ہندوستان نے ایک بار پھر پاکستان کے دہشت گردی کے حامی ہونے کی بات اٹھائی ہے۔

      ہندوستان نے کہا کہ دہشت گردوں کو پناہ دینا، مدد کرنا اور حمایت کرنا پاکستان کی تاریخ اور پالیسی میں شمار ہے۔ اس بات پر زور دیا گیا کہ پاکستان کے ناجائز قبضے میں شامل حصہ بھی ہندوستان کا حصہ ہے۔ ہندوستان نے یو این میں کہا کہ جموں وکشمیر اور لداخ ’ہندوستان کا اٹوٹ اور ناقابل تقسیم حصہ تھے، ہیں اور ہمیشہ رہیں گے‘۔

      اقوام متحدہ جنرل اسمبلی میں پاکستان کے سربراہ عمران خان کا ایک ریکارڈڈ میسیج چلایا گیا تھا، جہاں وہ اپنے خطاب میں 13 بار کشمیر کا ذکر کر رہے ہیں اور حریت پسند لیڈر سید علی شاہ گیلانی کے جنازے سے متعلق جھوٹ پھیلانے کی کوشش کر رہے ہیں۔
      اقوام متحدہ جنرل اسمبلی میں پاکستان کے سربراہ عمران خان کا ایک ریکارڈڈ میسیج چلایا گیا تھا، جہاں وہ اپنے خطاب میں 13 بار کشمیر کا ذکر کر رہے ہیں اور حریت پسند لیڈر سید علی شاہ گیلانی کے جنازے سے متعلق جھوٹ پھیلانے کی کوشش کر رہے ہیں۔


      اقوام متحدہ جنرل اسمبلی میں ہندوستان کی پہلی خاتون سکریٹری اسنیہا دوبے نے کہا، ’آج بھی پاکستان کے وزیرا عظم کو دہشت گردانہ حادثات کو درست ثابت کرنے کی کوشش کرتے ہوئے سنا۔ جدید دنیا میں دہشت گردی کا ایسا بچاو قابل قبول نہیں ہے‘۔ انہوں نے کہا، ’پاکستان آگ لگانے والا ہے، جو خود کو آگے بجھانے والے کی طرح دکھا رہا ہے۔ پاکستان میں اقلیتیں خوف اور حکومت حامی افسران کے استحصال کے سائے میں جی رہے ہیں‘۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان ایسا ملک ہے، جس کی عالمی سطح پر پہچان ’کھل کر دہشت گردوں کو ہتھیار دینے، ٹریننگ دینے اور اقتصادی مدد کرنے والے‘ کے طور پر ہوچکی ہے۔

      اقوام متحدہ جنرل اسمبلی میں پاکستان کے سربراہ عمران خان کا ایک ریکارڈڈ میسیج چلایا گیا تھا، جہاں وہ اپنے خطاب میں 13 بار کشمیر کا ذکر کر رہے ہیں اور حریت پسند لیڈر سید علی شاہ گیلانی کے جنازے سے متعلق جھوٹ پھیلانے کی کوشش کر رہے ہیں۔ ریکارڈڈ میسیج میں عمران خان نے ’ہندوستان کے ساتھ امن‘ کی بات کہی تھی، لیکن انہون نے یہ بھی کہا تھا کہ جنوبی ایشیا میں امن جموں وکشمیر کے تنازعہ کو حل کرنے پر بھی منحصر کرتا ہے۔ انہوں نے بیان دیا، ’پاکستان کے ساتھ بامعنی اور نتیجہ خیز نتائج دینے والے رابطہ کے لئے  سازگار ماحول بنانے کی ذمہ داری ہندوستان کی ہے‘۔

       

       
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: