ہوم » نیوز » عالمی منظر

جاپان نے جاری کیا نیتا جی سبھاش چندر بوس سے متعلق خفیہ دستاویز ، موت کے راز سے اٹھایا پردہ

نیتا جی سبھاش چندر بوس سے متعلق جاپان حکومت کے 60 سالہ پرانے ایک خفیہ دستاویز کو آج عام کردیا گیا، جس میں کہا گیا ہے کہ مجاہد آزادی بوس کا انتقال 18 اگست 1945 کو تائیوان میں ایک طیارہ حادثے میں ہوا تھا

  • Agencies
  • Last Updated: Sep 01, 2016 10:54 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
جاپان نے جاری کیا نیتا جی سبھاش چندر بوس سے متعلق خفیہ دستاویز ، موت کے راز سے اٹھایا پردہ
نیتا جی سبھاش چندر بوس سے متعلق جاپان حکومت کے 60 سالہ پرانے ایک خفیہ دستاویز کو آج عام کردیا گیا، جس میں کہا گیا ہے کہ مجاہد آزادی بوس کا انتقال 18 اگست 1945 کو تائیوان میں ایک طیارہ حادثے میں ہوا تھا

لندن :  نیتا جی سبھاش چندر بوس سے متعلق جاپان حکومت کے 60 سالہ پرانے ایک خفیہ دستاویز کو آج عام کردیا گیا، جس میں کہا گیا ہے کہ مجاہد آزادی بوس کا انتقال 18 اگست 1945 کو تائیوان میں ایک طیارہ حادثے میں ہوا تھا ۔ یہ دستاویز نیتا جی کے بارے میں سرکاری تفصیلات کی حمایت کرتا ہے ۔


نیتا جی کی موت سے وابستہ صورتحال سے متعلق دستاویزی ثبوت کے لئے بنائی گئی برطانوی ویب سائٹ بوس فائلس ڈاٹ انفارمیشن نے آج کہا کہ یہ پہلی مرتبہ ہے جب  سبھاش چندر بوس کی موت کی وجہ اور دیگر حقائق کی جانچ سے متعلق رپورٹ کو عام کیا گیا ہے ، کیونکہ جاپانی حکام اور حکومت ہند نے اسے خفیہ رکھا تھا ۔


ویب سائٹ کا کہنا ہے کہ رپورٹ جنوری 1956 میں مکمل ہوئی اور ٹوکیو میں ہندوستانی سفارت خانے کو سونپ دی گئی، لیکن کیونکہ یہ ایک خفیہ دستاویز تھا، اس لیے اسے کبھی جاری نہیں کیا گیا ۔ جاپانی زبان میں سات صفحات اور انگریزی میں 10 صفحات کے ترجمہ والی یہ رپورٹ اس نتیجے پر پہنچتی ہے کہ نیتا جی 18 اگست 1945 کو طیارہ حادثہ کا شکار ہو گئے اور اسی دن شام کو تائی پے کے ایک اسپتال میں ان کا انتقال ہو گیا ۔


رپورٹ میں لکھا ہے کہ پرواز بھرنے کے فورا بعد ہوائی جہاز نیچے گر پڑا ، جس میں نیتا جی سوار تھے اور وہ زخمی ہو گئے ۔ اس میں مزید کہا گیا ہے کہ شام تقریبا تین بجے انہیں تائی پے فوجی اسپتال کی نانمون برانچ لے جایا گیا اور شام تقریبا سات بجے ان کا انتقال ہو گیا ۔
First published: Sep 01, 2016 10:52 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading