உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    امریکی وزیر خارجہ جان کیری ہیروشیما کے تاریخی دورہ پر

    ہیروشیما۔ امریکی وزیر خارجہ جان کیری آج جاپان کے ہیروشیما پہنچے اور انہوں نے یہاں جی۔7 ملکوں کے وزرائے خارجہ کے ساتھ نیوکلیائی بم میوزیم کا معائنہ کیا۔

    ہیروشیما۔ امریکی وزیر خارجہ جان کیری آج جاپان کے ہیروشیما پہنچے اور انہوں نے یہاں جی۔7 ملکوں کے وزرائے خارجہ کے ساتھ نیوکلیائی بم میوزیم کا معائنہ کیا۔

    ہیروشیما۔ امریکی وزیر خارجہ جان کیری آج جاپان کے ہیروشیما پہنچے اور انہوں نے یہاں جی۔7 ملکوں کے وزرائے خارجہ کے ساتھ نیوکلیائی بم میوزیم کا معائنہ کیا۔

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:

      ہیروشیما۔ امریکی وزیر خارجہ جان کیری آج جاپان کے ہیروشیما پہنچے اور انہوں نے یہاں جی۔7 ملکوں کے وزرائے خارجہ کے ساتھ نیوکلیائی بم میوزیم کا معائنہ کیا۔ دوسری عالمی جنگ کے دوران 16 اگست 1945 کو ہیروشیما پر نیوکلیائی بم گرائے جانے کے بعد مسٹر کیری امریکہ کے ایسے پہلے وزیر خارجہ ہیں، جو یہاں آئے ہیں۔ امریکی صدر بارک اوبامہ کے جلد ہی ہیروشیما آنے کی امید ہے۔


      امریکہ کے ایک سینئر افسر نے کل کہا تھا کہ ہیروشیما پر نیوکلیائی بم گرانے کے لئے مسٹر کیری معافی نہیں مانگیں گے۔ خیال رہے کہ امریکہ کے ہاتھوں ہیروشیما پر نیوکلیائی بم گرانے سے ایک لاکھ 40 ہزار افراد مارے گئے تھے۔


       امریکی وزیرخارجہ جان کیری نے 1945 میں اپنے ملک کے ذریعے کئے گئے نیوکلیائی حملے میں مارے گئے لوگوں کو ہیروشیما میموریل پہنچ کر آج خراج عقیدت پیش کیا۔ مسٹر کیری امریکہ کے پہلے وزیر خارجہ ہیں جنہوں نے ہیروشیما جاکر نیوکلیائی حملے میں مارے گئے لوگوں کو خراج عقیدت پیش کیا ہے اور ان کے اس قدم سے مئی میں امریکی صدر بارک اوبامہ کے ہیروشیما کے دورے کا امکان ظاہر کیا جانے لگا۔


      مسٹر کیری ہیروشیما کے امن یادگار اور میوزیم بھی گئے، جہاں نیوکلیائی حملے میں بری طرح زخمی لوگوں کی تصویریں رکھی گئی ہیں۔ مسٹر کیری ایسے تنہا امریکی عہدیدار نہیں ہیں جو یادگار مقام گئے بلکہ ان سے پہلے بھی سال 2008 میں امریکی ایوان نمائندگان کی اسپیکر نینسی پلوسی ا س مقام کا دورہ کرچکی ہیں۔


      First published: