உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Turkey Pakistani Nationals: پاکستانی شہریوں کے جرائم سے پریشان ہوا ترکی، اٹھایا یہ بڑا قدم، بند کردی یہ سروس

    Turkey Pakistani Nationals: پاکستانی شہریوں کے جرائم سے پریشان ہوا ترکی، اٹھایا یہ بڑا قدم، بند کردی یہ سروس

    Turkey Pakistani Nationals: پاکستانی شہریوں کے جرائم سے پریشان ہوا ترکی، اٹھایا یہ بڑا قدم، بند کردی یہ سروس

    Turkey Pakistani Nationals: ترکی میں پاکستانی شہریوں کی طرف سے کی جانے والی بڑے پیمانے پر مجرمانہ سرگرمیوں نے ترکی حکام کو پریشان کر دیا ہے۔ اب ترکی نے سختی کا مظاہرہ کرتے ہوئے پاکستانی شہریوں کے لیے اپنی ویزا پالیسیاں مزید سخت کر دی ہیں۔

    • Share this:
      نئی دہلی : ترکی میں پاکستانی شہریوں کی طرف سے کی جانے والی بڑے پیمانے پر مجرمانہ سرگرمیوں نے ترکی حکام کو پریشان کر دیا ہے۔ اب ترکی نے سختی کا مظاہرہ کرتے ہوئے پاکستانی شہریوں کے لیے اپنی ویزا پالیسیاں مزید سخت کر دی ہیں۔ مقامی میڈیا کے مطابق ترکی کی حکومت نے یہ قدم استنبول میں چار نیپالی شہریوں کے اغوا میں پاکستانی شہریوں کے ملوث ہونے کے سامنے آنے کے کچھ دنوں بعد اٹھایا ہے۔ یہی نہیں ترک حکومت نے پاکستانیوں کو عارضی رہائشی اجازت نامہ جاری کرنا بھی روک دیا ہے۔

       

      یہ بھی پڑھئے : PM مودی کا مشورہ، مقامی زبان میں ہو عدالتی کارروائی، تب عدالتی نظام سے جڑا ہوا محسوس کریں گے لوگ


      رپورٹس کے مطابق استنبول میں چار نیپالیوں کو پاکستانیوں نے اغوا کر لیا تھا۔ ملزمین نے اغوا کی واردات کو شہر کے تقسم چوک پر انجام دیا تھا ۔ نیپالی شہری اس علاقے میں گھوم رہے تھے جب انہیں بندوق کی نوک پر اغوا کر کے ایک گھر میں لے جایا گیا۔ اغوا شدہ افراد کے ساتھ بدسلوکی کی گئی اور جب انہیں گھر لے جایا جا رہا تھا تو ان کے ٹیپ بنائے گئے۔

       

      یہ بھی پڑھئے : عرشی خان نے دبئی میں کی منگنی، جلد بنیں گی دلہن! اب Actress نے خاموشی توڑ کر بتایا سچ


      اغوا کاروں نے ان کی رہائی کے لیے دس ہزار یورو تاوان کا مطالبہ کیا تھا۔ ملزمان، جن کی عمریں 16 سے 35 سال ہیں، پر ڈکیتی، اغوا، جان بوجھ کر زخمی کرنے اور بندوق کے قانون کی خلاف ورزی کے الزامات لگائے گئے تھے۔ پاکستانی شرپسندوں کا ایک اور گروہ گزشتہ سال استنبول میں اپنے ہی ملک کے ایک ساتھی کا اغوا کرنے اور 50,000 یورو تاوان کا مطالبہ کرنے کے بعد پکڑا گیا تھا۔

      ترکی میں مقیم پاکستانیوں نے اغوا کے واقعہ کی مذمت کی ہے۔ انہیں خدشہ ہے کہ دنیا میں کہیں اور اسی طرح کے  واقعات پاکستان کے امیج کو داغدار کر سکتے ہیں۔ واقعہ سے قبل ترک حکام نے سابق وزیراعظم عمران خان کو اقتدار سے ہٹانے کے خلاف احتجاج کر رہے کچھ پاکستانی شہریوں کو حراست میں لے لیا تھا۔ تاہم ترکی میں پاکستانی سفارت کاروں کی مداخلت کے بعد بعد میں انہیں رہا کر دیا گیا۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: