உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ملکہ برطانیہ الزبتھ دوم کے تاج کا کوہ نور آخر کس کا تھا؟ اوڈیشہ کی تنظیم نے کہی یہ بڑی بات

    Queen Elizabeth II & Kohinoor: مذکورہ تنظیم نے یہ بات گزشتہ ہفتے ملکہ کے انتقال کے بعد کہی ہے۔ جب ٹویٹر پر بہت سے لوگوں نے Kohinoor# پر خوب بحث کی، اس کے ٹرینڈ کو چلایا اور مطالبہ کیا کہ قیمتی ہیرا صحیح طریقے سے ہندوستان کو واپس کیا جائے۔

    Queen Elizabeth II & Kohinoor: مذکورہ تنظیم نے یہ بات گزشتہ ہفتے ملکہ کے انتقال کے بعد کہی ہے۔ جب ٹویٹر پر بہت سے لوگوں نے Kohinoor# پر خوب بحث کی، اس کے ٹرینڈ کو چلایا اور مطالبہ کیا کہ قیمتی ہیرا صحیح طریقے سے ہندوستان کو واپس کیا جائے۔

    Queen Elizabeth II & Kohinoor: مذکورہ تنظیم نے یہ بات گزشتہ ہفتے ملکہ کے انتقال کے بعد کہی ہے۔ جب ٹویٹر پر بہت سے لوگوں نے Kohinoor# پر خوب بحث کی، اس کے ٹرینڈ کو چلایا اور مطالبہ کیا کہ قیمتی ہیرا صحیح طریقے سے ہندوستان کو واپس کیا جائے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • inter, Indiaukukuk
    • Share this:
      اوڈیشہ میں قائم ایک تنظیم نے دعویٰ کیا ہے کہ ملکہ الزبتھ دوم (Queen Elizabeth II) کے تاج پر کوہ نور ہیرا (Kohinoor diamond) ایک ہندو دیوتا بھگوان جگن ناتھ (Lord Jagannath) کا ہے۔ ہندوستان پر برطانوی دور حکومت کے دوران انگریزوں نے اسے چھین لیا تھا۔ مذکورہ تنظیم نے یہ بات گزشتہ ہفتے ملکہ کے انتقال کے بعد کہی ہے۔ جب ٹویٹر پر بہت سے لوگوں نے Kohinoor# پر خوب بحث کی، اس کے ٹرینڈ کو چلایا اور مطالبہ کیا کہ قیمتی ہیرا صحیح طریقے سے ہندوستان کو واپس کیا جائے۔

      اوڈیشہ کی ایک سماجی و ثقافتی ادارہ شری جگناتھ سینا (Shree Jagannath Sena) نے دعویٰ کیا ہے کہ کوہ نور بھگوان جگن ناتھ کا تھا۔ اس نے ہیرے کو واپس لانے کے لیے صدر دروپدی مرمو سے مداخلت کی درخواست کی۔ ملکہ کا گزشتہ ہفتے سکاٹش ہائی لینڈز میں واقع بالمورل میں اپنے گھر میں انتقال ہوگیا۔ ان کے بیٹے شہزادہ چارلس (Prince Charles) نے تخت سنبھال لیا ہے اور اصولوں کے مطابق 105 قیراط کا ہیرا ان کی اہلیہ کیملا کے پاس جائے گا، جو اب ملکہ کی ہمشیرہ بن چکی ہیں۔

      خبر رساں ایجنسی پی ٹی آئی کے مطابق پوری میں مقیم تنظیم نے صدر جمہوریہ کے پاس جمع کرائے گئے ایک میمورنڈم میں کوہ نور ہیرے کو 12ویں صدی کے مشہور پوری مندر میں واپس لانے کے عمل کو آسان بنانے کے لیے ان سے مداخلت کی درخواست کی ہے۔

      سینا کی کنوینر پریا درشن پٹنائک نے میمورنڈم میں کہا کہ کوہ نور ہیرا سری جگن ناتھ بھگبن کا ہے۔ اب یہ انگلینڈ کی ملکہ کے پاس ہے۔ برائے مہربانی ہمارے وزیر اعظم سے درخواست کریں کہ وہ بھگوان جگن ناتھ کے لیے اسے ہندوستان لانے کے اقدامات کریں کیونکہ مہاراجہ رنجیت سنگھ نے اسے اپنی مرضی سے بھگوان جگن ناتھ کو عطیہ کیا تھا۔

      یہ بھی پڑھیں:

      صدر جمہوریہ دروپدی مرمو نے کیا غلام علی کو Rajya Sabha کے لئے نامزد، کشمیر سے رکھتے ہیں تعلق

      پٹنائک نے دعویٰ کیا کہ پنجاب کے مہاراجہ رنجیت سنگھ نے افغانستان کے نادر شاہ کے خلاف جنگ جیتنے کے بعد پوری لارڈ کو ہیرا عطیہ کیا تھا۔ تاہم اسے فوری طور پر حوالے نہیں کیا گیا۔ مورخ اور محقق انیل دھیر نے پی ٹی آئی کو بتایا کہ رنجیت سنگھ کا انتقال 1839 میں ہوا اور 10 سال بعد انگریزوں نے کوہ نور کو ان کے بیٹے دلیپ سنگھ سے چھین لیا، حالانکہ وہ جانتے تھے کہ یہ پوری میں بھگوان جگن ناتھ کو وصیت کی گئی تھی۔

      یہ بھی پڑھیں: 

      ملکہ برطانیہ الزبتھ دوم کی آخری رسومات 19 ستمبر کو طئے، ملک بھر میں 4 دن تک ہوگا عوامی دیدار



      کوہ نور کو دنیا کے سب سے قیمتی جواہرات میں سے ایک سمجھا جاتا ہے۔ کوہ نور 14ویں صدی میں کاکتیہ خاندان کے دور میں جنوبی ہندوستان میں کولور کان میں کوئلے کی کان کنی کے دوران ملا تھا۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: