ہوم » نیوز » عالمی منظر

کلبھوشن جادھو اب موت کی سزا کو کر سکیں کے چیلنج، پاکستان نے پاس کیا بل

Kulbhushan Jadhav Case: پاکستان کی جیل میں قید کلبھوشن جادھو (Kulbhushan Jadhav) جلد ہی سزائے موت کے خلاف اپیل کر سکتے ہیں۔

  • Share this:
کلبھوشن جادھو اب موت کی سزا کو کر سکیں کے چیلنج، پاکستان نے پاس کیا بل
Kulbhushan Jadhav Case: پاکستان کی جیل میں قید کلبھوشن جادھو (Kulbhushan Jadhav) جلد ہی سزائے موت کے خلاف اپیل کر سکتے ہیں۔

پاکستان کی پارلیمنٹ نے وہ بل پاس کر دیا ہے جس کے تحت پاکستان کی جیل میں قید کلبھوشن جادھو (Kulbhushan Jadhav) جلد ہی سزائے موت کے خلاف اپیل کر سکتے ہیں۔ بتادیں کہ پاکستان کی ملٹری کورٹ نے انہیں موت کی سزا سنائی ہے۔ دراصل پاکستان نے انٹرنیشنل کورٹ آف جسٹس ریویو اینڈ ری کنسیڈریشن آرڈیننس 2020 کو منظوری دی ہے۔ اب بین الاقوامی عدالت ICJ کے فیصلے کے تحے کلبھوشن جادھو کو سفارتی مدد دی جاسکے گی۔


بتادیں کہ جادھو کو اپریل 2017 میں ایک پاکستانی عدالت نے جاسوسی اور دہشت گردی کے الزام میں موت کی سزا سنائی تھی ۔ بعد میں ہندوستان جادھو تک سفارتی رسائی دینے سے انکار کرنے اور موت کی سزا کو چیلنج دیتے ہوئے پاکستان کے خلاف آئی سی جے یعنی انٹرنیشنل کورٹ آف جسٹس پہنچا تھا ، جہاں پر اس کے حق میں فیصلہ آیا تھا ۔


دراصل پاکستان کی قومی اسمبلی نے انٹرنیشنل کورٹ آف جسٹس۔ری ویو اینڈ کنسیڈریشن۔ آرڈیننس دوہزار بیس کو منظور کر لیا ہے۔ اس بل کے مطابق کلبھوشن جادھو اعلی عدالتوں میں موت کی سزاکےخلاف عرضی داخل کرسکیں گے۔ تفصیلات کے مطابق جمعرات کے روز پاکستان کے وزیر قانون فروغ نسیم نے اس بل کو قومی اسمبلی میں پیش کیا تھا۔ اب یہ بل سینیٹ میں جائے گا اور اگر وہاں سے منظوری مل جاتی ہے تو یہ صدر کی دستخط کے بعد قانون بن جائے گا۔چار برس قبل ملٹری کورٹ نے جاسوسی کے الزام میں کلبھوشن جادھو کو سزا سنائی تھی۔


ہندستان نے پڑوسی کے اس فیصلے کا استقبال کیا
پاکستان pakistan کی جانب سے کلبھوشن جادھو کو ملک کے کسی بھی ہائی کورٹ میں اپیل کرنے کی اجازت دے دی گئی ہے۔ ہندستان India نے پڑوسی کے اس فیصلے کا استقبال کیا ہے۔ حالانکہ ہندستان نے یہ بھی کہا ہے کہ اگر جادھو کو ہندستانی وکیل مہیا نہیں کرایا جاتا ہے تو اس قانون کا کوئی بھی مطلب نہیں ہے۔ پاکستان کی فوجی کورٹ نے جادھو کو موت کی سزا سنائی تھی۔ اس کے بعد ہندستان نے انٹرنیشنل کورٹ آف جسٹس کا رخ کیا تھا۔
Published by: Sana Naeem
First published: Jun 12, 2021 09:38 AM IST