உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    پاکستانی کامیڈی کنگ عمر شریف کا انتقال، لبوں پہ قہقہے لانے والا سب کو رلاکر چلا گیا

    Youtube Video

    عمر شریف کے خاندانی ذرائع نے اداکار کی جرمنی کے اسپتال میں انتقال کی تصدیق کر دی ہے۔ کراچی پاکستان (Pakistan) کے سینئر کامیڈین (Comedian) اور ٹیلی ویژن شخصیت عمر شریف (Omar Sharif) شدید بیمار تھے۔

    • Share this:
      کراچی پاکستان (Pakistan) کے سینئر کامیڈین (Comedian) اور ٹیلی ویژن شخصیت عمر شریف (Omar Sharif) کے خاندانی ذرائع نے اداکار کی جرمنی کے اسپتال میں انتقال کی تصدیق کر دی ہے۔ جرمنی میں تعینات پاکستانی سفیر ڈاکٹر محمد فیصل نے اپنی ٹوئٹ میں تصدیق کی کہ عمر شریف خالق حقیقی سے جا ملے، ساتھ ہی انہوں نے اداکار عمر شریف کے اہل خانہ سے گہرے دکھ اور افسوس کا اظہار بھی کیا ہے۔ ڈاکٹر محمد فیصل نے بتایا کہ سفارت خانے کا عملہ عمر شریف کے اہل خانہ کی مدد کے لیے اسپتال میں موجود ہے۔ عمر (66) برصغیر کے ایک معروف فنکار اور پروڈیوسر ہیں۔ کراچی پاکستان (Pakistan) کے سینئر کامیڈین (Comedian) اور ٹیلی ویژن شخصیت عمر شریف (Omar Sharif) شدید بیمار تھے۔
      عمر شریف گزشتہ ڈیڑھ ماہ سے زیادہ بیمار تھے اور وہ کراچی کے آغا خان اسپتال میں زیر علاج تھے۔ ان کے کنبے نے اس وقت بتایا تھا کہ انہوں نے پی ایم او PMO سے درخواست بھی کی تھی کہ وہ عمر شریف کو علاج کے لیے امریکہ لے جانے کے انتظامات کریں۔ ان کی گزشتہ سال بائی پاس سرجری ہوئی تھی اور تب سے ان کی صحت گر رہی تھی۔ ان کی بیوی زرین نے بھی کہا تھا ، "وہ وہیل چیئر تک محدود ہیں اور انہیں امریکہ میں ماہر ڈاکٹروں سے فوری طبی امداد کی ضرورت ہے۔" اگر وہ امریکہ نہیں جا سکے تو پھر ان کے دل کا آپریشن یہاں کرانا ہوگا جو کہ ان کے لیے مہلک ثابت ہو سکتا ہے۔
      عمر شریف کے علاج کے لیے سندھ حکومت نے 14 ستمبر کو 4 کروڑ روپے کے فنڈز جاری کیے تھے، جس کے بعد صوبائی حکومت نے انہیں امریکہ منتقل کرنے کے لیے ایئر ایمبولیینس کے کرائے کی مدد میں 20 ستمبر کو 2 کروڑ 84 لاکھ روپے جاری کیے تھے۔ انہیں 28 ستمبر کو علاج کے لیے ایئر ایمبولینس کے ذریعے کراچی سے امریکہ منتقل کیا گیا تھا، وہیں سفر کے دوران جرمنی اسٹاپ کرنے پر ان کی طبیعت بگڑ گئی تھی، جس وجہ سے انہیں وہیں زیر علاج رکھا گیا تھا۔ گزشتہ دو دن سے عمر شریف انتہائی علیل تھے اور انہیں نمونیہ بھی ہوگیا تھا حالانکہ ڈاکٹروں کو امید تھی کہ ان کی طبیعت سنبھل جائے گی جس کے بعد انہیں مزید علاج کے لیے امریکہ بھیجا جائے گا لیکن ایسا نہیں ہو سکا اور دو اکتوبر کی دو پہر انہیں دنیا کو الوداع کہہ دیا۔



      شہباز گل کا کہنا تھا عمر شریف کو اپنے کام کے باعث کامیڈی کی دنیا میں منفرد مقام حاصل رہا اور انہوں نے اپنی شاندار کام سے نسل در نسل ناظرین کے دِل جیتے، عمر شریف عوام کےدلوں میں ہمیشہ زندہ رہیں گے۔ عمر شریف تھیٹر اور اسٹیج ڈرامے کے بے تاج بادشاہ تھے۔ انہوں نے ٹی وی اور فلموں میں بھی اپنے فن کامظاہرہ کیا، لیکن ان کی مقبولیت کی بڑی وجہ مزاحیہ اسٹیج ڈرامے ہیں۔


      دیکھتے ہی دیکھتے کامیڈی کی دنیا کے بے تاج بادشاہ بن گئے تھے عمر
      کامیڈی کے سپر اسٹار عمر شریف 19 اپریل 1955 کو کراچی کے علاقے لیاقت آباد میں پیدا ہوئے، پاکستان کے اس فنکار نے 14 سال کی عمر سے اسٹیج اداکاری شروع کی اور وہ دیکھتے ہی دیکھتے کامیڈی کی دنیا کے کنگ بن گئے۔ انہوں نے کامیڈی کا جو منفرد ٹرینڈ متعارف کرایا اُس میں عوامی لہجہ، انداز اور روزمرہ کے واقعات کا مزاحیہ تجزیہ شامل رہا۔


      عمر شریف صاحب کی رحلت پر دل انتہائی رنجیدہ ہے اللّٰہ تعالیٰ عمر شریف صاحب کو غریقِ رحمت کرے اور پسماندگان کو صبر جمیل عطا فرمائے۔ انہیں اپنے کام کے باعث کامیڈی کی دنیا میں منفرد مقام حاصل رہا اور اپنی شاندار کام سے نسل در نسل ناظرین کے دِل جیتے۔

      Published by:Sana Naeem
      First published: