سید اکبرالدین نے پاکستانی صحافیوں کی طرف بڑھایا دوستی کا ہاتھ، پاکستان کے جواب کا انتظار: دیکھیں ویڈیو

چین اورپاکستان کےتبصرہ کے بعد سید اکبرالدین کشمیراوردفعہ 370 پرہندوستان کےحالات پربیان دینےکےلئے سلامتی کونسل کےاسٹیک آوٹ پرآئے۔

Aug 17, 2019 05:59 PM IST | Updated on: Aug 17, 2019 06:09 PM IST
سید اکبرالدین نے پاکستانی صحافیوں کی طرف بڑھایا دوستی کا ہاتھ، پاکستان کے جواب کا انتظار: دیکھیں ویڈیو

سید اکبرالدین نے پاکستانی صحافیوں کی طرف بڑھایا دوستی کا ہاتھ۔

کشمیرمسئلے پراقوام متحدہ سلامتی کونسل کی بند کمرے میں ہوئی میٹنگ کے بعد اقوام متحدہ میں ہندوستان کےمستقل نمائندہ سید اکبرالدین نےمیڈیا کوخطاب کیا اورعلامتی ہم آہنگی کی مثال پیش کرتے ہوئے پاکستانی صحافیوں سے ہاتھ ملا کران کی طرف 'دوستی کا ہاتھ' بڑھایا۔ سلامتی کونسل کےمستقل رکن چین کی گزارش پرجمعہ کوہوئی یہ غیررسمی میٹنگ تقریباً ایک گھنٹےتک چلی، جس کے بعد اقوام متحدہ میں چین کےسفیرجھانگ جون اورپاکستان کی سفیر ملیحہ لودھی نےسلامتی کونسل کےاسٹیک آوٹ میں ایک ایک کرکے میڈیا کوخطاب کیا۔ دونوں نامہ نگاروں کےایک بھی سوال کا جواب دیئے بغیروہاں سے نکل گئے۔

چین اورپاکستان کےتبصرہ کے بعد اکبرالدین کشمیراوردفعہ 370 پرہندوستان کی حالت پر بیان دینے کےلئے سلامتی کونسل کےاسٹیک آوٹ پرآئے۔ چینی اورپاکستانی سفیروں سے علیحدہ وہ اپنے تبصرہ کے بعد وہیں موجود رہے اوراقوام متحدہ کے نامہ نگاروں کی کانفرنس سےکہا کہ وہ ان کے سوال لیں گے۔ اکبرالدین نےکہا 'اگرآپ میں سےکوئی بھی سوال پوچھنا چاہتا ہے تومیں تیارہوں۔ میں اس کا جواب دوں گا'۔

Loading...

انہوں نےکہا کہ وہ پانچ سوالوں کے جوابات دیں گے، 'یہاں آنے والے میرے پیشرووں سے پانچ گنا زیادہ'۔ انہوں نے پہلے تین سوال پاکستانی صحافیوں کی طرف سےلئے۔ جب ایک پاکستانی صحافی نےپوچھا کہ کیا ہندوستان، پاکستان سےبات کرنے پرمتفق ہے تواکبرالدین نے کہا 'کچھ عام سفارتی طریقے ہوتے ہیں، جب ملک ایک دوسرے سے رابطہ کرتے ہیں، یہی طریقہ ہے، لیکن عام طورپرملک کی ترقی اوراپنے اہداف کوحاصل کرنےکےلئے دہشت گردی کےاستعمال کا راستہ نہیں اپناتے۔ جب تک دہشت گردی رہے گی، کوئی بھی جمہوری ملک مذاکرات قبول نہیں کرے گا۔ دہشت گردی روکئے، بات چیت شروع کیجئے'۔

ایک سینئرپاکستانی صحافی نے پوچھا کہ آپ پاکستان سےکب بات چیت شروع کریں گے؟ اس پرہندوستانی سفیرنےاسٹیج سےاترتے ہوئےکہا 'اس کی شروعات میں آپ کے پاس آکراورآپ تینوں سے ہاتھ ملاکرکرتا ہوں'۔ اکبرالدین پھرمیڈیا گروپ میں موجود دیگردوپاکستانی صحافیوں کے پاس گئےاورمسکراتےہوئےان سے ہاتھ ملایا۔ اقوام متحدہ سلامتی کونسل اسٹیک آوٹ میں موجود سبھی لوگوں نےان کے اس جذبے کی تعریف کی۔ انہوں نےکہا 'میں آپ کوبتاتا ہوں کہ ہم پہلے ہی یہ کہہ کرکہ ہم شملہ معاہدے کولےکرپابند عہد ہیں، آپ کی طرف دوستی کا ہاتھ بڑھاچکے ہیں، چلئے پاکستان کی طرف سے جواب آنےکا انتظارکرتے ہیں'۔

Loading...