ہوم » نیوز » عالمی منظر

خاتون ہم جنس پرست جوڑا بنا والدین، دونوں کے حمل میں رہا بچہ

اب تکنیک کی ترقی کے ساتھ ڈاکٹروں نے اس میں کچھ نئی تبدیلی کی ہے۔ اس کے تحت ایک ایسی تکنیک آئی ہے جس میں انڈے کو پہلی پارٹنر کے حمل میں فرٹیلائز کیا جاسکتا ہے بعد میں دوسرا ساتھی جنین کو اپنے رحم میں پال سکتا ہے۔

  • Share this:
خاتون ہم جنس پرست جوڑا بنا والدین، دونوں کے حمل میں رہا بچہ
علامتی تصویر

برطانیہ میں ایک خاتون ہم جنس پرست کپل نے پہلی مرتبہ دونوں کے حمل میں پل رہے بچے کو جنم دیکر 'زچگی  خوشی'  (بچہ پیدا کرنے کا سکھ) شیئر کیا ہے۔ دنیا میں ایسا کرنے والا وہ پہلا ہم جنس پرست جوڑا بن گیا ہے۔ اس ہم جنس پرست جوڑے کا نام جاسمن فرانسز اسمتھ اور ان کی بیوی کا نام ڈونا ہے۔

انہوں نے 30 ستمبر کو بچے کو جنم دیا۔ چونکہ بچے کو جنم ڈونا نے دیا ہے۔ اس لئے انڈوں کو فرٹیلائیزیشن کیلئے ڈونا کے حمل میں رکھا گیا تھا۔

مشترکہ زچگی کا تصور سب سے  پہلے سال 2011 میں لندن کی ایک خاتون کلینک کے آئی وی ایف ایکسپرٹس کے ذریعے پیش کیا گیا تھا۔ اس تکنیک کے تحت بچے کے جنم کیلئے خاتون سے انڈے لئے جائیں گے جس کی دوسری خاتون کے حمل میں فرٹیلائز کیا جائے گا۔ یہی خاتون بچے کو جنم بھی دے گی۔

لیکن  اب  تکنیک  کی  ترقی  کے  ساتھ  ڈاکٹروں  نے  اس  میں  کچھ   نئی تبدیلی کی ہے۔ اس کے تحت ایک ایسی تکنیک آئی ہے جس میں انڈے کو پہلی پارٹنر کے حمل میں فرٹیلائز کیا جا سکتا ہے۔ بعد میں دوسرا ساتھی جنین  کو اپنے رحم میں پال سکتا ہے۔


लेस्बियन कपल बने पेरेंट्स, दोनों के पेट में पला बच्चा
ٹیلی گراف میں چھپی ایک رپورٹ کے مطابق آئی وی ایف کےذریعے تقریبا سو سے بھی زیادہ سیم سیکس کپل بچہ پیدا کرنے کا سکھ حاصل کر چکے ہیں۔ لیکن یہ پہلی مرتبہ ہے جب دونوں ماؤں نے ایک ساتھ بچے کو اپنےحمل میں رکھا ہے۔ اس سلسلے میں جوڑے نےکہا کہ اس پورے عمل کے دوران انہیں برابری کا احساس ہوا۔

 
First published: Dec 05, 2019 12:11 PM IST