ہوم » نیوز » عالمی منظر

پاکستانی وزیر کا اعتراف، احتیاطاً حراست میں لیا گیا مسعود اظہر

لاہور۔ پاکستان کے صوبہ پنجاب کے وزیر قانون رانا ثنااللہ نے تصدیق کی ہے کہ کالعدم تنظیم جیش محمد کے سربراہ مسعود اظہر کو اس کے ساتھیوں کے ساتھ احتیاطا حراست میں لیا گیا ہے۔

  • IBN Khabar
  • Last Updated: Jan 15, 2016 09:18 AM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
پاکستانی وزیر کا اعتراف، احتیاطاً حراست میں لیا گیا مسعود اظہر
لاہور۔ پاکستان کے صوبہ پنجاب کے وزیر قانون رانا ثنااللہ نے تصدیق کی ہے کہ کالعدم تنظیم جیش محمد کے سربراہ مسعود اظہر کو اس کے ساتھیوں کے ساتھ احتیاطا حراست میں لیا گیا ہے۔

لاہور۔ پاکستان کے صوبہ پنجاب کے وزیر قانون رانا ثنااللہ نے تصدیق کی ہے کہ کالعدم تنظیم جیش محمد کے سربراہ مسعود اظہر کو اس کے ساتھیوں کے ساتھ احتیاطا حراست میں لیا گیا ہے۔ ساتھ ہی انہوں نے واضح کیا کہ اسے گرفتار نہیں کیا گیا ہے۔ ثنااللہ نے ڈان نیوز کو بتایا کہ مسعود اظہر کو پنجاب پولیس کے انسداد دہشت گردی محکمہ نے احتیاطا حراست میں لیا ہے۔


غور طلب ہے کہ اس سے پہلے حکومت نے ان خبروں کی نہ تو تصدیق کی اور نہ ہی انکار کیا کہ اظہر کو احتیاطا حراست میں لیا گیا ہے۔ ثنااللہ نے کہا کہ ہم نے مولانا اظہر اور اس کے ساتھیوں کو پٹھان کوٹ واقعہ کے سلسلے میں احتیاط کے طور پر حراست میں لیا ہے۔ بہر حال اگر پٹھان کوٹ حملے میں اس کا ملوث ہونا ثابت ہوتا ہے تو ہم اسے گرفتار کر لیں گے۔


ثنااللہ نے کہا کہ نیشنل ایکشن پروگرام کے تحت جی ای ایم سمیت ممنوعہ تنظیموں کے خلاف مہم جاری رہے گی۔ ہندستان نے دو جنوری کو پٹھان کوٹ میں ہوئے حملے کے لئے اظہر کی شناخت سازش کار کے طور پر کی ہے۔ اس نے اس کے بھائی رؤف اور پانچ دوسرے پر حملے میں کردار ادا کرنے کے الزام لگائے ہیں جس میں سات ہندستانی فوجی شہید ہو گئے تھے اور تمام چھ دہشت گرد ہلاک ہو گئے تھے۔ خبروں کے مطابق سیکورٹی ایجنسیوں نے صوبے کے مختلف حصوں سے جے ای ایم کے 31 دہشت گردوں کو گرفتار کیا ہے۔

First published: Jan 15, 2016 09:18 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading