ہوم » نیوز » عالمی منظر

سعودی نجی کمپنیوں میں ہندوستانی اور بنگلہ دیشی ملازمین 40 فیصد کی حد تک ہی کرسکتے ہیں ملازمت!

ذرائع نے واضح کیا ہے کہ ہندوستانی مزدوروں کی ایک فرم میں کام کرنے کی زیادہ سے زیادہ حد کل ملازمین کا 40 فیصد ہے۔ بنگلہ دیشی ملازمین کی فیصد بھی یہی ہے جبکہ یمنی کارکنوں کی زیادہ سے زیادہ حد 25 فیصد رکھی گئی ہے۔

  • Share this:
سعودی نجی کمپنیوں میں ہندوستانی اور بنگلہ دیشی ملازمین 40 فیصد کی حد تک ہی کرسکتے ہیں ملازمت!
سعودی عرب کے پرچم کی فائل فوٹو: فوٹو رائٹرز

ریاض: وزارت انسانی وسائل اور سماجی ترقی کے کیووا آن لائن پورٹل (Qiwa online portal) نے کچھ ممالک کے ملازمین کے فیصد کی تصدیق کردی ہے جو نجی شعبے کے اداروں میں کام کرنے کے حقدار ہیں، اوکاز / سعودی گزٹ نے اس خبر کی تصدیق کی ہے۔ ذرائع نے واضح کیا ہے کہ ہندوستانی مزدوروں کی ایک فرم میں کام کرنے کی زیادہ سے زیادہ حد کل ملازمین کا 40 فیصد ہے۔ بنگلہ دیشی ملازمین کی فیصد بھی یہی ہے جبکہ یمنی کارکنوں کی زیادہ سے زیادہ حد 25 فیصد رکھی گئی ہے۔


پورٹل نے فیصد نظام کے بارے میں کچھ اداروں کو ای میلز کے ذریعہ مطلع کیا ہے، جس کی ایک کاپی اوکاز / سعودی گزٹ نے حاصل کی ہے۔ ای میل میں اس نے ان اداروں کو آگاہ کیا ہے کہ ہندوستانی قومیت کے ملازمین کی شرح 40 فیصد سے زیادہ نہیں ہوسکتی ہے اور یہی فیصد بنگلہ دیشی کارکنوں پر بھی لاگو ہے۔ جہاں تک یمنی اور ایتھوپیا کے شہریوں کی بات ہے تو ان کی حد بالترتیب 25 فیصد اور ایک فیصد ہے۔


ان اداروں کے حوالے سے جہاں ملازمین کی تعداد مخصوص فیصد سے زیادہ ہے، کیوا نے واضح کیا کہ ان اداروں کو ملازمین کے لئے کام اور رہائشی اجازت نامہ جاری کرنے اور تجدید کرنے کی اجازت ہوگی ، لیکن پابندیاں وہاں نئے ویزے جاری کرنے یا خدمات کی منتقلی کے لئے ہوں گی۔ ان اداروں میں ایک ہی قومیت کے اضافی کارکنان کو زیادہ جگہ نہی دی جائے گی۔


اس سے قبل اداروں کے مالکان ویزا جاری کرنے یا ان اداروں میں منتقلی کی خدمات سے قاصر تھے جہاں ملازمین کی تعداد سسٹم میں ہر قومیت کے لئے مخصوص فیصد سے زیادہ ہے۔ اداروں کے مالکان کو مندرجہ ذیل پیغام موصول ہوا جب انہوں نے ملازمین کی خدمات حاصل کرنے یا ملازمین کی خدمات کی منتقلی کے لئے درخواست کی۔ اس میں کہاگیا ہے کہ آپ نے اس قومیت کے لئے ملازمین کی تعداد کی اجازت کی حد سے تجاوز کر لیا ہے۔ اگر آپ کے پاس مذکورہ قومیت کے ملازمین کی ضرورت ہو توآپ کسی بھی قومیت کے لیے ایک ویزا کی درخواست دے سکتے ہیں

وزارت نے پہلے اس بات کی تصدیق کی تھی کہ نظام کے مطابق ان کی اہلیت پر مبنی ہر اسٹیبلشمنٹ کے لئے اگر آپ کے پاس مذکورہ قومیت کے ملازمین کی ضرورت ہو تو ان کی قومیتوں کی مخصوص فیصد موجود ہیں۔ یہ قابل ذکر ہے کہ کیووا پلیٹ فارم لیبر سیکٹر کو فراہم کی جانے والی الیکٹرانک خدمات کو بڑھانے کے لئے وزارت کی خدمات اور حل فراہم کرتا ہے۔

اس کا مقصد کئی کوششوں کو یکجا کرنا اور افرادی قوت کی خدمات کو ایک پلیٹ فارم کے تحت مستحکم کرنا اور الیکٹرانک طور پر نجی شعبے کو فراہم کی جانے والی سرکاری خدمات کو ترقی دینا ہے۔
Published by: Mohammad Rahman Pasha
First published: Jul 09, 2021 07:24 PM IST