உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    سنکی اور قاتل ہیں سعودی عرب ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان، سابق خفیہ چیف کا دعویٰ

    محمد بن سلمان (MbS)

    محمد بن سلمان (MbS)

    انہوں نے یہ بات امریکی صدر جو بائیڈن کے سعودی عرب دورہ سے چند روز قبل سی بی ایس نیوز کو دیے گئے انٹرویو میں کہیں۔ "وہ ہمدردی کے بغیر ایک نفسیاتی مریض ہے۔ جذبات محسوس نہیں کرتا۔ اس نے اپنے تجربے سے کبھی سبق نہیں سیکھا۔

    • Share this:
      سعودی عرب کے ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کو ملک کے سابق انٹیلی جنس چیف سعد الجباری نے سائیکو قرار دیا ہے۔ ایک انٹرویو میں سعد الجباری نے کہا کہ 'ہم نے اس قاتل کے مظالم اور جرائم کو دیکھا ہے۔' سعد الجباری جو سعودی عرب کے محکمہ انٹیلی جنس میں نمبرپر رہ چکے ہیں، نے کہا کہ محمد بن سلمان آنے والے دنوں میں امریکہ اور دیگر ممالک کے لیے ایک بڑا چیلنج بن سکتے ہیں۔ انہوں نے دعویٰ کیا کہ ولی عہد ایک قاتل ہے۔

      انہوں نے یہ بات امریکی صدر جو بائیڈن کے سعودی عرب دورہ سے چند روز قبل سی بی ایس نیوز کو دیے گئے انٹرویو میں کہیں۔ "وہ ہمدردی کے بغیر ایک نفسیاتی مریض ہے۔ جذبات محسوس نہیں کرتا۔ اس نے اپنے تجربے سے کبھی سبق نہیں سیکھا۔

      محمد بن سلمان کے گینگ کا نام 'ٹائیگر اسکواڈ'
      سعد نے دعویٰ کیا کہ محمد بن سلمان کے پاس خطرناک لوگوں کا ایک گروپ ہے جسے 'ٹائیگر اسکواڈ' کہا جاتا ہے۔ اغوا اور قتل اسی کے ذریعے ہوتے ہیں۔ انہوں نے اتوار کو نشر ہونے والے انٹرویو میں کہا، 'میں یہاں ایک پاگل، قاتل کے خلاف آواز اٹھانے آیا ہوں، جو وسطی ایشیا میں ایک بڑا چیلنج بن گیا ہے۔ وہ امریکیوں اور پوری دنیا کے لیے خطرہ بن سکتا ہے۔

      Gujarat:بھاری بارش کےسبب سیلاب جیسے حالات، اب تک 69کی موت، تصویروں میں دیکھئے تباہی کامنظر


      آپ کو بتاتے چلیں کہ الجباری طویل عرصے تک محمد بن نائف کے مشیر تھے۔ وہ جون 2017 تک سعودی ولی عہد رہے اور اس کے بعد محمد بن سلمان ولی عہد بن گئے۔

      Elon Musk نے ٹوئٹر کی دھمکی کا اڑایا مذاق، کہا- مجھے عدالت لے جاکر خود پھنس جائے گی کمپنی

       

      جان کو خطرہ بتاکر شفٹ ہو گئے کناڈا
      الجباری کو اپنی جان کو خطرہ محسوس ہوا تو وہ کناڈا چلا گیا۔ الجباری نے واشنگٹن ڈی سی کی ایک عدالت کو بتایا کہ محمد بن سلمان نے اسے قتل کرنے کے لیے ٹورنٹو بھیجا تھا۔ اس سے دو ہفتے قبل سعودی صحافی جمال خاشقجی کو استنبول میں قتل کر دیا گیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ ہو سکتا ہے مجھے کسی دن قتل کر دیا جائے، کیونکہ میرے پاس شاہی خاندان اور حکومت کے بارے میں اہم معلومات ہیں۔ جب تک وہ مجھے مرا ہوا نہیں دیکھے گا، اسے چین نہیں ملے گا۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: