ہوم » نیوز » عالمی منظر

ترکی کے پاس سمندر میں کشتی ڈوبنے سے 22 پناہ گزیں ہلاک

انقرہ۔ یونان کے جزیرہ کوس پہنچنے کی کوشش میں 22 تارکین وطن ترکی کے ساحل کے نزدیک بحیرہ ایجین میں کشتی پلٹ جانے سے ڈوب گئے جبکہ 200 افراد کو بچالیا گیا ہے۔

  • UNI
  • Last Updated: Sep 16, 2015 07:44 AM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
ترکی کے پاس سمندر میں کشتی ڈوبنے سے 22 پناہ گزیں ہلاک
انقرہ۔ یونان کے جزیرہ کوس پہنچنے کی کوشش میں 22 تارکین وطن ترکی کے ساحل کے نزدیک بحیرہ ایجین میں کشتی پلٹ جانے سے ڈوب گئے جبکہ 200 افراد کو بچالیا گیا ہے۔

انقرہ۔ یونان کے جزیرہ کوس پہنچنے کی کوشش میں 22 تارکین وطن ترکی کے ساحل کے نزدیک بحیرہ ایجین میں کشتی پلٹ جانے سے ڈوب گئے جبکہ 200 افراد کو بچالیا گیا ہے۔

یہ کشتی اس مقام سے قریب ہی غرق آب ہوئی ہے جہاں دو ہفتہ قبل شامی بچہ ایلان کردی کی لاش برآمد ہوئی تھی اور جس کی تصویر دیکھ کر دنیا غم میں ڈوب گئی تھی۔


ٹیلی ویژن فوٹیج میں دکھایاگیا ہے کہ ترکی کے ساحلی محافظ کا ایک جہاز بچائے گئے لوگوں کو ساحل پر لارہا ہے۔ایک خبررساں ایجنسی کے مطابق یہ گروپ 20 میٹر لمبی کشتی میں کوس جارہا تھا۔ ترکی میں 20 لاکھ سے زیادہ پناہ گزیں ہیں اور ہزاروں لوگوں نے اس کے ساحل سے یوروپ جانےکے لئے کشتیاں کی ہیں۔


اتوار کو یونان کے فرما کونیسی جزیرہ کے قریب لکڑی کی ایک اور کشتی ڈوب گئی تھی جس میں 15 بچوں سمیت 34 افراد ہلاک ہوگئے تھے۔دوسری عالمی جنگ کے بعد سے یوروپ کے سب سے بدترین پناہ گزینوں کے بحران کے درمیان پناہ گزینوں سے متعلق اقوام متحدہ کی ایجنسی کو توقع ہے کہ اس سال کم از کم آٹھ لاکھ 50 ہزار افراد یوروپ کا رخ کریں گے جن میں شامی خانہ جنگی سے جان بچاکر بھاگنے والوں کی تعداد زیادہ ہوگی۔

First published: Sep 16, 2015 07:43 AM IST