உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    بڑا حادثہ:مغربی صحارا میں تارکین وطن کی کشتی پلٹی، 42 افراد کی موت ہونے کا اندیشہ

    ڈاکھلہ میں موجود مراکش کے حکام نے ابھی تک اس حوالے سے کوئی تبصرہ نہیں کیا ہے۔ تاہم مقامی میڈیا کے مطابق جمعرات کو ساحلی سمندر سے 12 لاشیں برآمد کی گئیں جبکہ 10 افراد کو ماہی گیروں نے بچالیا۔

    ڈاکھلہ میں موجود مراکش کے حکام نے ابھی تک اس حوالے سے کوئی تبصرہ نہیں کیا ہے۔ تاہم مقامی میڈیا کے مطابق جمعرات کو ساحلی سمندر سے 12 لاشیں برآمد کی گئیں جبکہ 10 افراد کو ماہی گیروں نے بچالیا۔

    ڈاکھلہ میں موجود مراکش کے حکام نے ابھی تک اس حوالے سے کوئی تبصرہ نہیں کیا ہے۔ تاہم مقامی میڈیا کے مطابق جمعرات کو ساحلی سمندر سے 12 لاشیں برآمد کی گئیں جبکہ 10 افراد کو ماہی گیروں نے بچالیا۔

    • Share this:
      بارسلونا۔ مغربی صحارا (Western Sahara) کے ساحلی شہر ڈاکھلہ سے روانہ ہوئی تارکین وطن سے بھری ایک کشتی (Boat) سمندر میں ڈوب گئی جس میں 30 خواتین اور آٹھ بچوں سمیت 42 تارکین وطن ہلاک ہوگئے۔ اسپین کےrights activists نے یہ معلومات دی۔ غیر سرکاری تنظیم واکنگ بارڈر کی بانی ہیلینا میلینو نے جمعرات کی دیر رات کو ٹویٹ کرکے بتایا کہ انہوں نے اس حادثے میں بچ جانے والے 10 افراد میں سے ایک سے بات کی ، جس نے بتایا کہ تارکین وطن کا ایک گروپ اسپین کے کینیری جذیروں تک پہنچنے کی کوشش کر رہا تھا۔

      ڈاکھلہ میں موجود مراکش کے حکام نے ابھی تک اس حوالے سے کوئی تبصرہ نہیں کیا ہے۔ تاہم مقامی میڈیا کے مطابق جمعرات کو ساحلی سمندر سے 12 لاشیں برآمد کی گئیں جبکہ 10 افراد کو ماہی گیروں نے بچالیا۔

      یہ بات قابل ذکر ہے کہ مراکش Morocco نے 1975 میں مغربی صحارا کے علاقے پر قبضہ کر لیا تھا اور اس وقت سے وہ اس متنازعہ علاقے پر اپنا دعویٰ کر رہا ہے۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: