ہوم » نیوز » عالمی منظر

فلپائن فوجی طیارہ میں کریش کے بعد لگی بھیانک آگ، مہلوکین کی تعداد 29 پہنچی، 92 لوگ تھے سوار

فلپائن کے وزیر دفاع ڈیلفین لورینزانا نے بتایا کہ امدادی کام جاری ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ جہاز میں 92 افراد سوار تھے جن میں تین ڈرائیور اور عملے کے پانچ ممبر شامل تھے۔ طیارے میں سوار باقی افراد فوجی اہلکار تھے۔

  • Share this:
فلپائن فوجی طیارہ میں کریش کے بعد لگی بھیانک آگ، مہلوکین کی تعداد 29 پہنچی، 92 لوگ تھے سوار
فلپائن کے وزیر دفاع ڈیلفین لورینزانا نے بتایا کہ امدادی کام جاری ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ جہاز میں 92 افراد سوار تھے جن میں تین ڈرائیور اور عملے کے پانچ ممبر شامل تھے۔ طیارے میں سوار باقی افراد فوجی اہلکار تھے۔

کوٹابیٹو۔ فلپائن (Philippines)  کے جنوبی صوبے میں فوجی دستوں پر مشتمل ایئرفورس سی -130 طیارہ حادثے کا شکار  (Plane Crash) ہونے کے  سبب اب تک 29 افراد ہلاک ہوگئے ہیں۔ 40 افراد کو بچا لیا گیا ہے۔ فلپائن کے وزیر دفاع ڈیلفین لورینزانا نے بتایا کہ امدادی کام جاری ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ جہاز میں 92 افراد سوار تھے جن میں تین ڈرائیور اور عملے کے پانچ ممبر شامل تھے۔ طیارے میں سوار باقی افراد فوجی اہلکار تھے۔


لاک ہیڈ سی -130 ہرکیولس امریکی فضائیہ کے دو سابق طیاروں میں سے ایک تھا جو رواں سال فوجی امداد کے طور پر فلپائن کے حوالے کیا گیا تھا۔ چیف آف اسٹاف جنرل سیرییلو سوبیجنا نے بتایا کہ طیارہ اتوار کی سہ پہر کو صوبہ سولو کے پہاڑی قصبے پٹیکول کے گاؤں بانگکل میں لینڈنگ سے قبل اتوار کی سہ پہر گر کر تباہ ہوا۔ سوبیجنا نے بتایا کہ طیارہ جنوبی شہر کاگیان ڈی اوورو سے فوجی دستے کو لے کر جارہا تھا۔ مسلم اکثریتی صوبے سولو میں حکومتی فورسز کئی دہائیوں سے ابو سیاف دہشت گردوں کے خلاف لڑ رہے ہیں۔ طیارے کے حادثے کی وجہ فوری طور پر واضح نہیں ہوسکی۔




انہوں نے بتایا کہ طیارے میں سوار کم از کم 40 افراد کو اسپتال لے جایا گیا اور باقیوں کو بچانے کی فوجی دستے کوشش کر رہے ہیں۔ وسطی فلپائن میں بارش ہو رہی ہے ، لیکن فوری طور پر یہ واضح نہیں ہوسکا کہ سولو علاقے میں موسم بھی متاثر ہوا ہے یا نہیں۔ سولو کا مرکزی شہر جولو کا ہوائی اڈہ پہاڑی علاقے سے کچھ کلومیٹر دور واقع ہے۔ اس علاقے میں فوجی دستے ابوسیاف کے خلاف لڑ رہے ہیں۔ کچھ دہشت گردوں نے خود کو دولت اسلامیہ سے وابستہ کیا ہے۔
Published by: Sana Naeem
First published: Jul 05, 2021 09:08 AM IST