ہوم » نیوز » عالمی منظر

رحم کی اپیل نہ کرنے والے جماعت اسلامی کے لیڈر کو پھانسی کی تیاری

بنگلہ دیش میں جماعت اسلامی کے لیڈر میر قاسم علی نے گزشتہ روز جنگی جرائم کے معاملے میں اپنی سزائے موت کو معاف کرنے کیلئے صدر جمہوریہ کے پاس رحم کی اپیل کرنے سے انکار کردیا ہے اور حکام کے مطابق ایسی صورت میں انہیں کسی بھی وقت پھانسی دی جاسکتی ہے۔

  • UNI
  • Last Updated: Sep 03, 2016 06:32 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
رحم کی اپیل نہ کرنے والے جماعت اسلامی کے لیڈر کو پھانسی کی تیاری
بنگلہ دیش میں جماعت اسلامی کے لیڈر میر قاسم علی نے گزشتہ روز جنگی جرائم کے معاملے میں اپنی سزائے موت کو معاف کرنے کیلئے صدر جمہوریہ کے پاس رحم کی اپیل کرنے سے انکار کردیا ہے اور حکام کے مطابق ایسی صورت میں انہیں کسی بھی وقت پھانسی دی جاسکتی ہے۔

ڈھاکہ۔ بنگلہ دیش میں جماعت اسلامی کے لیڈر میر قاسم علی نے گزشتہ روز جنگی جرائم کے معاملے میں اپنی سزائے موت کو معاف کرنے کیلئے صدر جمہوریہ کے پاس رحم کی اپیل کرنے سے انکار کردیا ہے اور حکام کے مطابق ایسی صورت میں انہیں کسی بھی وقت پھانسی دی جاسکتی ہے۔ واضح رہے کہ جماعت اسلامی کے لیڈر میر قاسم علی کو 1971 کی جنگ آزادی کے دوران جنگی جرائم کیلئے سزائے موت سنائی گئی تھی اور ملک کی عدالت عظمی نے اس سزا کے خلاف ان کی عرضی خارج کردی ہے۔


ان کی آخری عرضی گزشتہ منگل کو خارج ہونے کے بعد بھی میر قاسم علی کے پاس صدر جمہوریہ کے پاس رحم کی اپیل کرنے کا موقع تھا لیکن انہوں نے ایسا کرنے سے انکار کردیا ہے۔ جس کے بعد جماعت اسلامی کے لیڈر کو اب کسی بھی وقت پھانسی دی جاسکتی ہے اور اس کی تیاری کیلئے راجدھانی ڈھاکہ سے 40 کلومیٹر کے فاصلے پر واقع جیل میں حفاظتی انتظامات سخت کردیئے گئے ہیں۔


خیال رہے کہ بنگلہ دیش میں 2013 سے اب تک اپوزیشن کے 5 لیڈروں کو پھانسی دی جا چکی ہے۔

First published: Sep 03, 2016 06:32 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading