உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    شام کے اسپتالوں اور اسکولوں پر ہوئے حملے میں 50 افراد ہلاک

    دمشق۔ شمالی شام کے پانچ اسپتالوں اور دو اسکولوں پر میزائل حملوں میں ہلاک ہونے والوں کی تعداد بڑھ کر 50 ہو گئی ہے جبکہ متدد زخمی ہوئے ہیں۔

    دمشق۔ شمالی شام کے پانچ اسپتالوں اور دو اسکولوں پر میزائل حملوں میں ہلاک ہونے والوں کی تعداد بڑھ کر 50 ہو گئی ہے جبکہ متدد زخمی ہوئے ہیں۔

    دمشق۔ شمالی شام کے پانچ اسپتالوں اور دو اسکولوں پر میزائل حملوں میں ہلاک ہونے والوں کی تعداد بڑھ کر 50 ہو گئی ہے جبکہ متدد زخمی ہوئے ہیں۔

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:

      دمشق۔ شمالی شام کے پانچ اسپتالوں اور دو اسکولوں پر میزائل حملوں میں ہلاک ہونے والوں کی تعداد بڑھ کر 50 ہو گئی ہے جبکہ متدد زخمی ہوئے ہیں۔ اقوام متحدہ کے مطابق، حلب اور ادلب صوبے میں تقریبا پانچ اسپتالوں اور دو اسکولوں پر ہوئے ان میزائل حملوں میں 50 افراد کے مارے جانے کی خبر ہے۔ اقوام متحدہ نے اس حملے کو بین الاقوامی قانون کی خلاف ورزی قرار دیا ہے۔ اس نے کہا کہ ہلاک شدگان میں خواتین اور بچے بھی شامل ہیں۔


      اقوام متحدہ نے کہا کہ حملے حلب کے اعجاز قصبے اور ارلو کے معرہ النعمان پر کئے گئے۔
      اعجاز قصبے پر ہوئے حملے میں 14 لوگوں کی موت ہو گئی۔ حملوں میں اسپتالوں کی عمارتیں بھی تباہ ہو گئیں۔ کارکنوں نے ایک ويڈيو بھی جاری کیا ہے جس میں اسپتال پر ہوئے حملے کو دکھایا گیا ہے۔ اس حملے میں کم سے دو بچوں کی موت ہو گئی اور کئی زخمی ہو گئے۔ ڈاکٹر ودھاؤٹ بارڈر کے ذریعہ چلائے جارہے ادلب صوبے کے معرہ انعمان کے اسپتال پر بھی روس نے اپنے میزائل داغے۔ اس حملے میں مریض سمیت سات لوگو ں کی موت ہو گئی۔


      سیرین آبزرویٹري فار ہیومن رائٹس نے کہا کہ ایم ایس ایف کے اسپتال میں اب بھی پانچ لیڈی نرس، ایک ڈاکٹر اور ایک مرد کے دبے ہونے کا خدشہ ہے۔اسپتالوں کو منظم چلانے والے ایم ایس ایف گروپ کا کہنا ہے کہ حملے سے 40 ہزار لوگ طبی سہولیات سے محروم ہو گئے ہیں جبکہ شام میں کام کرنے والی کئی سماجی تنظیموں اور کارکنوں نے ان حملوں کے لئے روس کو مورد الزام ٹھہرایا ہے۔

      First published: