உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    جاپان میں موڈرنا ویکسین میں شدیدآلودگی کاانکشاف، آپ جان کرہوجائیں گےحیران؟

    موڈرنا ویکسین کی علامتی تصویر۔(shutterstock)۔

    موڈرنا ویکسین کی علامتی تصویر۔(shutterstock)۔

    جاپانی عہدیداروں نے بتایا کہ تقریبا ڈیڑھ لاکھ افراد نے اس مسئلے کے منظر عام پر آنے سے پہلے موڈرنا کی شیشیوں سے شاٹس حاصل کیے تھے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Share this:
      موڈرناانکارپوریٹڈ Moderna Inc اور اس کا جاپانی ساتھی امریکی دوا ساز کمپنی کی کورونا وائرس ویکسین کی 1 ملین سے زائد خوراکیں واپس لے رہے ہیں اس بات کی تصدیق کے بعد کہ گزشتہ ہفتے آلودگی سٹینلیس اسٹیل کے چھوٹے ذرات پائے گئے۔ تاکیدا فارماسیوٹیکل کمپنی Takeda Pharmaceutical Co جاپان میں موڈرنا ویکسین کی فروخت اور تقسیم کا انچارج ہے۔ دونوں کمپنیوں نے کہا کہ ایک ہسپانوی فیکٹری میں تحقیقات کے دوران پتا چلا کہ ویکسین کی شیشیوں کی تیاری کے دوران مذکورہ آلودگی نظر آئی۔

      کمپنیوں نے 26 اگست کو آلودگی کی اطلاعات کے بعد اس میں پیدا ہونے والی 1.63 ملین خوراکیں معطل کرنے کا اعلان کیا۔ جاپانی عہدیداروں نے بتایا کہ تقریبا ڈیڑھ لاکھ افراد نے اس مسئلے کے منظر عام پر آنے سے پہلے موڈرنا کی شیشیوں سے شاٹس حاصل کیے تھے۔ یہ پریشانی ایک ایسے وقت میں آئی ہے جب جاپان جاپانی صحت کی دیکھ بھال کے نظام کو دباؤ میں ڈالنے والے انفیکشن کے درمیان ویکسینیشن کو تیز کرنے پر زور دے رہا ہے۔

      دواسازی اور وزارت صحت کے عہدیداروں کا کہنا ہے کہ وہ نہیں مانتے کہ اعلی درجے کا سٹینلیس سٹیل صحت کے لیے خطرہ ہے۔
      کوویکس اسٹینڈ کیاہے؟

      کوویکس کووڈ ۔19 ویکسین گلوبل رسس کا مخفف ہے ، جو ایک بین الاقوامی طریقہ کار ہے جو پوری دنیا میں ویکسین تک منصفانہ اور ضروری رسائ کو یقینی بنانے کے لئے تشکیل دیا گیا تھا۔ اس کی قیادت مشترکہ طور پر وبا سے متعلق تیاری انوویشنز (سی ای پی آئی) گیوی Gavi اور ڈبلیو ایچ او WHO کے ذریعہ کی گئی ہے۔ اس کا مقصد یہ یقینی بنانا ہے کہ تمام شریک ممالک آمدنی کی سطح سے قطع نظر ان ویکسینوں کی تیاری کے بعد ان تک یکساں رسائی حاصل کریں گے۔" کوویکس کا مقصد 2021 کے آخر تک 2 ارب خوراکیں دستیاب کرنا ہے۔

      علامتی تصویر۔(ِShutterstock)-
      علامتی تصویر۔(ِShutterstock)-


      ڈبلیو ایچ او نے نوٹ کیا ہے کہ "کووایکس سہولت کے ذریعہ دستیاب یا خریدی جانے والی تمام ویکسینوں کو ریگولیٹری منظوری یا ہنگامی استعمال کی اجازت مل جائے گی۔ تاہم اس میں مزید کہا گیا ہے کہ COVAX سہولت کے ذریعے کووڈ 19 کی ویکسین وصول کرنے والے ہر ملک کو مینوفیکچررز ، ڈونرز ، تقسیم کاروں ، اور دیگر اسٹیک ہولڈرز کو ان ویکسین کی تعیناتی اور استعمال سے ہونے والے نقصانات سے ہرجانہ دینا ہوگا۔

      تاہم کوواکس اسکیم کے تحت معاوضے کی گنجائش موجود ہے۔ ڈبلیو ایچ او نے کہا ہے کہ ہنگامی طور پر کووڈ ۔19 ویکسین حاصل کرنے کے بعد ایسے افراد کے لئے جن کو سنگین مضر واقعات کا سامنا کرنا پڑتا ہے ، ان کے لئے بلا معاوضہ کا میکانزم قائم کیا جائے گا۔ یعنی 92 ممالک میں سے کسی میں جو ایڈوانس مارکیٹ کمٹمنٹ (اے ایم سی) گروپ کا حصہ ہیں ، جو غیر متوقع SAE کا شکار ہیں، وہ کسی بھی شخص کی مکمل اور حتمی تصفیے میں اس واقعہ کے لئے بلا معاوضہ ، وصول کریں گے۔ ہندوستان کو ان 92 ممالک میں شامل کیا گیا ہے جو اے ایم سی کے ذریعہ تعاون کرنے کے اہل ہیں۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: