உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

     شہباز شریف کے بیان پر ہندوستان کا جواب- پہلے اپنے گریبان میں جھانکے پاکستان

    وزارت خارجہ کے سرکاری ترجمان ارندم باغچی نے کہا، ’ہم نے شہباز شریف کا بیان دیکھا ہے، جس ملک میں اقلیتوں کے ساتھ ظلم ہو رہا ہو، اسے ایسے بے وقوفانہ بیان نہیں دینا چاہئے۔ پاکستان میں اقلیتوں کے حقوق کو مسلسل خلاف ورزی ہو رہی ہے۔ اسے کسی اور ملک میں اقلیتوں کے ساتھ ہو رہے برتاو پر تبصرہ کرنے کا اختیار نہیں ہے‘۔

    وزارت خارجہ کے سرکاری ترجمان ارندم باغچی نے کہا، ’ہم نے شہباز شریف کا بیان دیکھا ہے، جس ملک میں اقلیتوں کے ساتھ ظلم ہو رہا ہو، اسے ایسے بے وقوفانہ بیان نہیں دینا چاہئے۔ پاکستان میں اقلیتوں کے حقوق کو مسلسل خلاف ورزی ہو رہی ہے۔ اسے کسی اور ملک میں اقلیتوں کے ساتھ ہو رہے برتاو پر تبصرہ کرنے کا اختیار نہیں ہے‘۔

    وزارت خارجہ کے سرکاری ترجمان ارندم باغچی نے کہا، ’ہم نے شہباز شریف کا بیان دیکھا ہے، جس ملک میں اقلیتوں کے ساتھ ظلم ہو رہا ہو، اسے ایسے بے وقوفانہ بیان نہیں دینا چاہئے۔ پاکستان میں اقلیتوں کے حقوق کو مسلسل خلاف ورزی ہو رہی ہے۔ اسے کسی اور ملک میں اقلیتوں کے ساتھ ہو رہے برتاو پر تبصرہ کرنے کا اختیار نہیں ہے‘۔

    • Share this:
      نئی دہلی/اسلام آباد: پیغمبرمحمد صلی اللہ علیہ پر بی جے پی لیڈر نوپور شرما (Nupur Sharma) کا تبصرہ کو لے کر تنازعہ جاری ہے۔ اس معاملے میں پاکستان کے وزیر اعظم شہباز شریف (Shehbaz Sharif) نے ہندوستان کے خلاف بیان دیا تھا۔ شہباز شریف نے الزام لگایا تھا کہ ہندوستان میں مسلمانوں کو ستایا جا رہا ہے۔ اب ہندوستانی حکومت نے پاکستان کو زبردست جواب دیا ہے۔ ہندوستانی وزارت خارجہ نے کہا ہے کہ پاکستان کو پہلے اپنے گریبان میں جھانکنا چاہئے۔

      وزارت خارجہ کے سرکاری ترجمان ارندم باغچی نے کہا، ’ہم نے شہباز شریف کا بیان دیکھا ہے، جس ملک میں اقلیتوں کے ساتھ ظلم ہو رہا ہو، اسے ایسے بے وقوفانہ بیان نہیں دینا چاہئے۔ پاکستان میں اقلیتوں کے حقوق کو مسلسل خلاف ورزی ہو رہی ہے۔ اسے کسی اور ملک میں اقلیتوں کے ساتھ ہو رہے برتاو پر تبصرہ کرنے کا اختیار نہیں ہے‘۔ ارندم باغچی نے مزید کہا، ’دنیا اس بات کی گواہ ہے کہ پاکستان میں کس طرح اقلیتوں (ہندو، سکھ، عیسائی اور احمدیوں) کے خلاف منظم استحصال ہو رہا ہے۔


      شہباز شریف نے کیا کہا تھا؟

      شہباز شریف نے ٹوئٹ کیا تھا، ’میں ہمارے پیغمبر کے بارے میں ہندوستان کے بی جے پی لیڈران کے ذریعہ تکلیف دینے والے تبصروں کی سخت الفاظ میں مذمت کرتا ہوں۔ مودی کی قیادت میں ہندوستان مذہبی آزادی کو روند رہا ہے اور مسلمانوں کو ستا رہا ہے۔ دنیا کو دھیان دینا چاہئے اور ہندوستان کو سخت پھٹکار لگانی چاہئے۔ معزز پیغمبر کے لئے ہمارا پیار سب سے اعلیٰ ہے۔ سبھی مسلمان اپنے معزز پیغمبر کے پیارومحبت اور احترام کے لئے اپنی زندگی قربان کرسکتے ہیں‘۔

      ارندم باغچی نے کہا، ‘ہندوستانی حکومت سبھی مذاہب کا بہت زیادہ احترام کرتی ہے۔ یہ پاکستان کے بالکل مخالف ہے، جہاں شدت پسندوں کی تعریف کی جاتی ہے اور ان کے احترام میں مجمسے بنائے جاتے ہیں۔ ہم پاکستان سے گزارش کرتے ہیں کہ وہ خطرناک غلط تشہیر کرنے اور ہندوستان میں فرقہ وارانہ ماحول بنانے کی کوشش کرنے کے بجائےاپنے اقلیتی طبقات کی سیکورٹی اور فلاح پر توجہ مرکوز کرے‘۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: