உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    فیفا ورلڈ کپ قطر 2022 کی آمدنی، ٹکٹ کی قیمت اور لاگت سے متعلق یہ ہیں تفصیلات، اب تک 30 لاکھ ٹکٹ بک

    فیفا ورلڈ کپ 20 نومبر سے 18 دسمبر تک ہوگا۔ (تصویر ٹوئٹر: FIFA World Cup)

    فیفا ورلڈ کپ 20 نومبر سے 18 دسمبر تک ہوگا۔ (تصویر ٹوئٹر: FIFA World Cup)

    امریکی اسپورٹس فنانس کنسلٹنسی فرنٹ آفس اسپورٹس کے مطابق باقی تقریباً 210 بلین ڈالر ہوائی اڈوں، نئی سڑکوں، ہوٹلوں کے ساتھ جدید مراکز اور جدید ترین زیر زمین نقل و حمل کے اخراجات سے وابستہ ہیں۔ صرف دوحہ میں ہی 'دی پرل' کے نام سے مشہور ایک رہائشی کمپلیکس پر 15 بلین ڈالر سے زیادہ خرچ کیے گئے

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Qatar
    • Share this:
      عالمی سطح پر سب سے زیادہ انتظار کیے جانے والے فٹ بال ٹورنامنٹ فیفا ورلڈ کپ قطر 2022 کا انتظار بالآخر ختم ہوا جاتا ہے۔ پہلا میچ اتوار کو ایکواڈور اور میزبان قطر کے درمیان کھیلا جائے گا۔ یہ مشہور ٹورنامنٹ اب تک کا سب سے مہنگا ہے کیونکہ مشرق وسطیٰ کے ملک قطر نے اس کی تیاریوں پر 220 بلین ڈالر خرچ کیے ہیں۔ یہاں آپ کو کل لاگت، متوقع آمدنی اور ملک کی معیشت کے لیے ٹورنامنٹ کی اہمیت کے بارے میں جاننے کی ضرورت ہے:

      32 ممالک کی شرکت کے ساتھ فٹبال کا سب سے بڑا ٹورنامنٹ 20 نومبر سے 18 دسمبر کے درمیان کھیلا جائے گا۔ پہلا میچ 20 نومبر کو میزبان قطر اور ایکواڈور کے درمیان الخور کے البیت اسٹیڈیم (Al Bayt Stadium) میں شروع ہوگا جب کہ فائنل میچ 18 دسمبر کو ہوگا۔ جو کہ لوسیل کے لوسیل اسٹیڈیم (Lusail Stadium) میں منعقد ہوگا۔

      فیفا ورلڈ کپ قطر 2022 کی تیاریوں پر قطر کا کل خرچ

      2010 میں قطر کے میزبان کے طور پر اعلان کے بعد سے مشرق وسطیٰ کے اس ملک نے 20 نومبر سے 18 دسمبر کے درمیان ٹورنامنٹ کے انعقاد کے لیے اپنے بنیادی ڈھانچے کو تیار کرنے کے علاوہ فٹ بال اسٹیڈیم کی ترقی پر بہت زیادہ خرچ کیا ہے۔ قطر نے 6.5 بلین ڈالر سے 10 بلین ڈالر کی کل لاگت سے چھ نئے اسٹیڈیم بنائے ہیں اور دو موجودہ اسٹیڈیموں کی تزئین و آرائش کی ہے، جو ابتدائی بولی میں مجوزہ 4 بلین ڈالر سے نمایاں اضافہ ہے۔


      امریکی اسپورٹس فنانس کنسلٹنسی فرنٹ آفس اسپورٹس کے مطابق باقی تقریباً 210 بلین ڈالر ہوائی اڈوں، نئی سڑکوں، ہوٹلوں کے ساتھ جدید مراکز اور جدید ترین زیر زمین نقل و حمل کے اخراجات سے وابستہ ہیں۔ صرف دوحہ میں ہی 'دی پرل' کے نام سے مشہور ایک رہائشی کمپلیکس پر 15 بلین ڈالر سے زیادہ خرچ کیے گئے اور دوحہ میٹرو پر 36 بلین ڈالر خرچ کیے گئے۔


      روس کی خبر رساں ایجنسی تاس کے مطابق قطر کے وزرائے خزانہ نے انفراسٹرکچر پراجیکٹ کے دوران سال تک ہر ہفتے 500 ملین ڈالر خرچ کرنے کا اعتراف کیا۔ قطر کی 220 بلین ڈالر کی لاگت 2018 میں فیفا ورلڈ کپ کے انعقاد کے لیے روس کی جانب سے 11.6 بلین ڈالر، 2014 میں برازیل کی جانب سے 15 بلین ڈالر، 2010 میں جنوبی افریقہ کی جانب سے 3.6 بلین ڈالر کے مقابلے میں بہت زیادہ ہے۔ اس سے قبل جرمنی نے 2006 میں 4.3 بلین ڈالر خرچ کیے تھے۔ جاپان نے 2002 میں 7 بلین ڈالر، فرانس نے 1998 میں 2.3 بلین ڈالر اور 1994 میں امریکی ڈالر 500 ملین خرچ کیے تھے۔

      فیفا ورلڈ کپ قطر 2022 میں ٹکٹ کی قیمتیں اور آمدنی

      یہ بھی پڑھیں: 


      فیفا نے کہا ہے کہ 20 نومبر سے 18 دسمبر تک ہونے والے ورلڈ کپ سے قبل قطر کے آٹھ سٹیڈیمز میں تقریباً 30 لاکھ ٹکٹ فروخت ہو چکے ہیں۔ اس ٹورنامنٹ سے FIFA کے لیے ریکارڈ آمدنی کی توقع ہے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: