ہوم » نیوز » عالمی منظر

پاکستان میں 26/11 کیس کی سماعت کے دوران اہم گواہ منحرف ، کہا : قصاب زندہ ہے

لاہور: ممبئی حملوں کے کیس میں استغاثہ کو اس وقت شرمندگی کا سامنا کرنا پڑا جب ایک اہم گواہ نے اپنی بات سے انحراف کرتے ہوئے کہا کہ حملے کے بعد زندہ پکڑا گیا اور پھر پھانسی پر لٹکا دیا گیا واحد مسلح شخص اجمل قصاب زندہ ہے۔

  • Agencies
  • Last Updated: Dec 10, 2015 05:27 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
پاکستان میں 26/11 کیس کی سماعت کے دوران اہم گواہ منحرف ، کہا : قصاب زندہ ہے
لاہور: ممبئی حملوں کے کیس میں استغاثہ کو اس وقت شرمندگی کا سامنا کرنا پڑا جب ایک اہم گواہ نے اپنی بات سے انحراف کرتے ہوئے کہا کہ حملے کے بعد زندہ پکڑا گیا اور پھر پھانسی پر لٹکا دیا گیا واحد مسلح شخص اجمل قصاب زندہ ہے۔

لاہور: ممبئی حملوں کے کیس میں استغاثہ کو اس وقت شرمندگی کا سامنا کرنا پڑا جب ایک اہم گواہ نے اپنی بات سے انحراف کرتے ہوئے کہا کہ حملے کے بعد زندہ پکڑا گیا اور پھر پھانسی پر لٹکا دیا گیا واحد مسلح شخص اجمل قصاب زندہ ہے۔


عدالت کے ایک اہلکار نے کہا کہ فریدکوٹ کے پرائمری اسکول کے ہیڈ ماسٹر مدثر لکھوی نے عدالت کو بتایا کہ انہوں نے قصاب کو پڑھایا تھا اور وہ زندہ ہے۔ اجمل قصاب اس اسکول میں تین سال تک پڑھا تھا۔ اڈيالا جیل راولپنڈی میں دہشت گردی مخالف عدالت اسلام آباد کے جج نے بدھ کو اس معاملہ کی سماعت کی۔


خیال رہے کہ گزشتہ روز ہی وزیر خارجہ سشما سوراج اور پاکستانی وزیر اعظم کے خارجہ امور کے صلاح كار سرتاج عزیز کے درمیان میٹنگ میں پاکستان نے ہندوستان کو یقین دہانی کرائی تھی کہ ممبئی حملوں کے کیس کی سماعت کے جلد نمٹارہ کے لئے اقدامات کئے جا رہے ہیں۔


افسر نے کہا کہ ہیڈ ماسٹر نے اجمل قصاب کے زندہ ہونے کا دعوی کرکے استغاثہ کے لئے انتہائی شرمندگی والی صورتحال پیدا کر دی۔ انہیں کچھ متعلقہ ریکارڈ کے ساتھ اس مدت کا ریکارڈ پیش کرنا تھا، جب اجمل قصاب وہاں پڑھا تھا ، لیکن وہ کچھ اور ہی کہتے رہے۔ استغاثہ بھی ان کو صحیح طریقے سے جرح کرنے میں ناکام رہا۔

First published: Dec 10, 2015 05:27 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading