உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    مریخ پر انسان بھیجنے کی طرف بڑھا ایک اور قدم ، سرخ سیارہ کی ساخت کو سمجھنے کیلئے ناسا نے بھیجا انسائیٹ

    فوٹو کریڈٹ : ناسا

    فوٹو کریڈٹ : ناسا

    امریکی خلائی ایجنسی ناسا نے سرخ سیارے کی ساخت کو 'گہرائی سے سمجھنے کے لئے اپنے اہم مشن کے تحت آج ایک اور کامیاب قدم بڑھاتے ہوئے دو منی سٹیلائٹ کے ساتھ ' انسائٹ خلائی گاڑی کو لانچ کیا

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:
      سان فرانسسکو: امریکی خلائی ایجنسی ناسا نے سرخ سیارے کی ساخت کو 'گہرائی سے سمجھنے کے لئے اپنے اہم مشن کے تحت آج ایک اور کامیاب قدم بڑھاتے ہوئے دو منی سٹیلائٹ کے ساتھ ' انسائٹ خلائی گاڑی کو لانچ کیا، جو اس سال نومبر میں مریخ کی سطح پر اترے گی۔ ناسا کے نئے ایڈمنسٹریٹر جم برڈینسٹائن نے سائنسدانوں کی ٹیم کو مبارکباد دیتے ہوئے کہا کہ آج کا دن مریخ کے مطالعہ کے لئے بہت بڑا ہے، کیونکہ اس جہاز کے لانچ سے سرخ سیارے کے بارے میں نئی اور درست معلومات حاصل ہوں گی"۔
      مقامی وقت کے مطابق صبح چار بج کر پانچ منٹ پر 'اٹلس -پانچ راکٹ کے ذریعے اس جہاز کوکیلی فورنیا کے وینڈنبرگ ایئر فورس اسٹیشن سے کامیابی سے لانچ کیا گیا۔ یہ جہاز مریخ کے درجہ حرارت کا پتہ لگانے کے لئے اس کی سطح پر تقریبا 16 فٹ تک کھدائی کرے گا۔
      انسائیٹ میں حساس سیسموميٹر لگا ہے جو یہ پتہ لگانے کی کوشش کرے گا کہ مریخ پر زلزلے کی کیا صورتحال ہے۔ اس مہم کی خاصیت یہ ہے کہ اس میں ایک روبوٹکس جيولجسٹ (روبوٹ ماہر ارضیات) بھی بھیجا گیا ہے اور یہی مریخ کی سطح پر گہری کھدائی کرکے سطح پر ہونے والے جھٹکوں کو نانپے گا۔ یہ جہاز خاص طور مریخ کی اندرونی ساخت کا گہرائی سے مطالعہ کرے گا۔ ناسا کے مطابق سرخ سیارے کے گہرے مطالعہ سے یہ پتہ لگ سکے گا کہ اس کے بیرونی تہوں اور اندرونی حصے کس طرح زمین سے مختلف ہیں۔ یورپی ممالک کا بھی اس مہم میں مکمل تعاون ہے۔
      First published: