உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    افغانستان بحران پر اجیت ڈوبھال کی قیادت میں این ایس اے کی میٹنگ آج، چین اور پاکستان نہیں ہوں گے شامل

    افغانستان بحران پر اجیت ڈوبھال کی قیادت میں این ایس اے کی میٹنگ آج، چین اور پاکستان نہیں ہوں گے شامل

    افغانستان بحران پر اجیت ڈوبھال کی قیادت میں این ایس اے کی میٹنگ آج، چین اور پاکستان نہیں ہوں گے شامل

    NSA Meeting On Afghanistan: ذرائع نے کہا کہ مذاکرات میں شامل ہو رہے ممالک میں سے کسی نے بھی طالبان کو منظوری دنہیں دی ہے اور افغانستان کی صورتحال پر ان سبھی کی تشویش ایک جیسی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ افغانستان پر پاکستان کی کارروائیوں اور ارادوں کے درمیان فرق ہے۔

    • Share this:
      نئی دہلی: ہندوستان بدھ کے روز افغانستان (India On Afghanistan) پر سیکورٹی غوروخوض کے لئے روس، ایران اور پانچ وسطی ایشیائی ممالک کے اعلیٰ سیکورٹی افسران کی میزبانی کرے گا۔ سبھی افسران افغانستان بحران کے بعد دہشت گردی، شدت پسندی اور نشیلی اشیا کے بڑھتے خطرات سے نمٹنے میں عملی مدد کے لئے مشترکہ حل تلاش کریں گے۔ ذرائع نے کہا کہ چین کو ’افغانستان پر دہلی علاقائی سلامتی مذاکرات‘ کے لئے مدعو کیا گیا تھا، لیکن اس نے ہندوستان کو پہلے ہی مطلع کردیا ہے کہ وہ پروگرام کے شیڈول سے متعلقہ کچھ موضوعات کے سبب میٹنگ میں شامل نہیں ہو پائے گا۔ پاکستان نے بھی میٹنگ میں شامل نہ ہونے کا فیصلہ کیا ہے۔ قومی سلامتی کے مشیر اجیت ڈوبھال کی صدارت میں ہونے والے مذاکرات میں قزاقستان، کرغستان، تاجکستان، ترکمانستان اور ازبکستان کے اعلیٰ سلامتی افسر بھی شامل ہوں گے۔

      ذرائع نے کہا کہ میٹنگ میں شامل ہو رہے 8 ممالک کے درمیان افغانستان پر طالبان کے قبضے کے بعد کی سیکورٹی پیچیدگیوں پر غوروخوض اور بات چیت اہم چیلنجز سے نمٹنے کے لئے عملی اقدامات پر تعاون کرنے سے متعلق توجہ مرکوز رہے گی۔ انہوں نے کہا کہ افغانستان سے لوگوں کی سرحد پار آمدورفت کے ساتھ ساتھ وہاں امریکی اہلکاروں کے ذریعہ چھوڑے گئے فوجی آلات اور ہتھیاروں سے پیدا ہوئے خطرے پر بھی سیکورٹی افسران کے ذریعہ تبادلہ خیال کئے جانے کی امید ہے۔

      وزارت خارجہ نے کیا کہا؟

      وزارت خارجہ نے کہا کہ مذاکرات میں ایران، قزاقستان، قرغستان، روس، تاجکستان، ترکمانستان اور ازبکستان کی توسیع شدہ شراکت داری نظر آئے گی اور ان ممالک کے نمائندگی ان کے متعلقہ قومی سلامتی کے مشیر یا سلامتی کونسل کے سکریٹریز کریں گے۔ اس نے ایک بیان میں کہا، ’اعلیٰ سطحی مذاکرات میں علاقے میں افغانستان میں حال کی صورتحال سے پیدا ہوئی سیکورٹی صورتحال کا جائزہ لیا جائے گا۔ اس میں متعلقہ سیکورٹی چیلنجز سے نمٹنے کے اقدامات پر غوروخوض کیا جائے گا اور امن وامان، سیکورٹی اور استحکام کو فروغ دینے میں افغانستان کے لوگوں کی حمایت کی جائے گی۔

      18 سال کی عمر میں نوجوان نے کی تھی 71 سال کی خاتون سے شادی، 6 سال پورے ہونے پر منایا جشن!


      وزارت خارجہ نے کہا کہ ہندوستان کے روایتی طور پر افغانستان کے لوگوں کے ساتھ گہرے اور دوستانہ تعلقات رہے ہیں اور نئی دہلی کو افغانستان کے سامنے پیدا ہوئے سیکورٹی اور انسانی چیلنجز کا حل نکالنے کے لئے ایک متفقہ بین الاقوامی ردعمل کی ضرورت ہے۔ یہ میٹنگ اس سمت میں ایک قدم ہے۔

      یہ بھی پڑھیں۔

      پاکستان کے خلاف 1971-1965 جنگ لڑنے والے جانباز فوجی کا قتل، بیٹے نے کیا رشتوں کا خون

      کسی بھی ملک نے طالبان کو منظوری نہیں دی

      ذرائع نے کہا کہ مذاکرات میں شامل ہو رہے ممالک میں سے کسی نے بھی طالبان کو منظوری دنہیں دی ہے اور افغانستان کی صورتحال پر ان سبھی کی تشویش ایک جیسی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ افغانستان پر پاکستان کی کارروائیوں اور ارادوں کے درمیان اعتماد کے اعتبار سے فرق ہے۔ مذاکرات میں چین کے موجود نہ رہنے کے بارے میں ذرائع نے کہا کہ بیجنگ پروگرام کی پیچیدگیوں کی وجہ سے میٹنگ میں شرکت نہیں کر رہا ہے، لیکن اس نے افغانستان کے معاملے پر دو طرفہ اور کثیر جہتی چینلز کے ذریعے ہندوستان کے ساتھ رابطے میں رہنے کی بات کی ہے۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: