உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    اوڑی پر ہندوستان کے سخت ردعمل کے بعد نواز شریف نے الاپا مسئلہ کشمیر کا راگ ، امریکہ سے کی فریاد

     پاکستانی وزیر اعظم نواز شریف نے پیر کو امریکی وزیر خارجہ جان کیری سے ملاقات کی اور کشمیر کو لے کر ہندوستان اور پاکستان کے درمیان کشیدگی کو ختم کرنے میں امریکہ سے مدد مانگی۔

    پاکستانی وزیر اعظم نواز شریف نے پیر کو امریکی وزیر خارجہ جان کیری سے ملاقات کی اور کشمیر کو لے کر ہندوستان اور پاکستان کے درمیان کشیدگی کو ختم کرنے میں امریکہ سے مدد مانگی۔

    پاکستانی وزیر اعظم نواز شریف نے پیر کو امریکی وزیر خارجہ جان کیری سے ملاقات کی اور کشمیر کو لے کر ہندوستان اور پاکستان کے درمیان کشیدگی کو ختم کرنے میں امریکہ سے مدد مانگی۔

    • Agencies
    • Last Updated :
    • Share this:
      نیویارک : اوڑی حملے میں 18 جوانوں کی شہادت کے بعد پاکستان نے ایک مرتبہ پھر کشمیر کا راگ الاپا ہے۔ پاکستانی وزیر اعظم نواز شریف نے پیر کو امریکی وزیر خارجہ جان کیری سے ملاقات کی اور کشمیر کو لے کر ہندوستان اور پاکستان کے درمیان کشیدگی کو ختم کرنے میں امریکہ سے مدد مانگی۔ نیویارک میں اقوام متحدہ کی کانفرنس میں نیوز ایجنسی اے این آئی کے سوال کو وہ ان سنا کرتے نظر آئے اور پھر ہاتھ اٹھا کر جواب دینے سے ہی انکار کر دیا۔
      نواز کے ہاتھ اٹھاکر انکار کرنے کے بعد ان کے ساتھ چل رہے سیکورٹی اہلکاروں نے صحافی کو روک دیا۔ پاکستانی وزیر اعظم شریف کے خارجہ امور کے مشیر سرتاج عزیز نے بھی کسی سوال کا جواب دینے سے انکار کر دیا۔ وہ اپنی گاڑی میں ہی بیٹھے رہے اور ان کی طرف سے کوئی جواب نہیں آیا۔
      خیال رہے کہ عزیز نے پیر کو کہا تھا کہ اتوار 18 ستمبر کو اوڑی میں ہوئے دہشت گردانہ حملے کے بعد ہندوستانی کی سویلین اور فوجی قیادت کی جانب سے آئے 'تیکھے اور 'غیر مصدقہ بیانات کو سنجیدگی کے ساتھ لیا ہے۔ یہ کشمیر میں حزب المجاہدین کے کمانڈر برہان وانی کی موت کے بعد تیزی سے بگڑتی انسانی اور حقوق انسانی کی صورت حال سے توجہ ہٹانے کی ہندوستان کی کوشش ہے۔ 'پاکستانی میڈیا میں بھی خبریں آئی تھیں کہ ہندوستان ثبوتوں کے بغیر پاکستان پر الزام لگا رہا ہے۔
      ادھر شریف نے مسئلہ کشمیر پر جان کیری سے ملاقات کی ، جس کے بعد پاکستان کی جانب سے بیان بھی جاری کیا گیا۔ بیان میں کہا گیا کہ وزیر اعظم شریف نے کہا کہ کشمیر میں 107 سے زائد افراد مارے جا چکے ہیں، ہزاروں زخمی ہیں اور حکومت کی سطح پر انسانی حقوق کی سخت خلاف ورزی کی جا رہی ہے۔ شریف نے کیری سے کہا کہ انہیں ابھی تک 'صدر بل کلنٹن کا وہ وعدہ یاد ہے کہ امریکہ، پاکستان اور ہندوستان کے درمیان دو طرفہ تنازعات اور مسائل کو حل کرنے میں مدد کرنے کے لئے اپنا کردار نبھائے گا۔
      بیان کے مطابق نواز شریف نے کہا کہ 'میں امریکی انتظامیہ اور وزیر خارجہ کیری سے توقع کرتا ہوں کہ وہ ہندوستان اور پاکستان کے درمیان دو طرفہ مسائل کو حل کرنے کے لئے اپنے عہدے کا استعمال کریں گے۔
      وزیر اعظم کے خارجہ امور کے مشیر سرتاج عزیز، خارجہ سکریٹری اعجاز احمد چودھری، امریکہ میں پاکستان کی سفیر ملیحہ لودھی اور افغان پاک کیس کے خصوصی امریکی نمائندے رچرڈ اولسن بھی اس ملاقات میں موجود تھے۔
      First published: