உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ہندوستان کے دباو کے آگے جھکا طالبان! افغانستان کے گرودوارے پر واپس لگایا نشان صاحب

    ہندوستان کے دباو کے آگے جھکا طالبان! افغانستان کے گرودوارے پر واپس لگایا نشان صاحب

    ہندوستان کے دباو کے آگے جھکا طالبان! افغانستان کے گرودوارے پر واپس لگایا نشان صاحب

    افغانستان (Afghanistan) سے 20 سال بعد امریکی فوج (US Army) واپس لوٹنے کی خبر کے ساتھ ہی ایک بار پھر طالبان (Taliban) وہاں پیر پھیلا رہا ہے۔ افغانستان کے کئی علاقوں پر ایک بار پھر طالبان قابض ہوگیا ہے۔ خبر ہے کہ افغانستان کے پختیا صوبہ میں چکمنی کے تاریخی تھلا صاحب گرودوارے سے نشان صاحب کو طالبان نے زبردستی ہٹا دیا تھا۔ حالانکہ ہندوستان کے دباو کے بعد اسے پھر سے لگا دیا گیا ہے۔

    • Share this:
      نئی دہلی: افغانستان (Afghanistan) سے 20 سال بعد امریکی فوج (US Army) واپس لوٹنے کی خبر کے ساتھ ہی ایک بار پھر طالبان (Taliban) وہاں پیر پھیلا رہا ہے۔ افغانستان کے کئی علاقوں پر ایک بار پھر طالبان قابض ہوگیا ہے۔ خبر ہے کہ افغانستان کے پختیا صوبہ میں چکمنی کے تاریخی تھلا صاحب گرودوارے سے نشان صاحب کو طالبان نے زبردستی ہٹا دیا تھا۔ حالانکہ ہندوستان کے دباو کے بعد اسے پھر سے لگا دیا گیا ہے۔

      گرودوارہ سے نشان صاحب ہٹانے کے معاملے پر ہندوستان نے سخت مذمت کی تھی۔ ذرائع کے مطابق، ہندوستان نے اس عمل کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ افغانستان مستقبل میں ایسا قدم نہ اٹھائے۔ جمعہ کی شب موصول ہوئی خبروں کے مطابق، طالبان اپنی حرکت پردوبارہ غور کر رہا تھا۔ اس درمیان طالبان کے ترجمان سہیل شاہین نے نیوز 18 سے کہا، سکھ طبقے کے لوگوں کو کبھی اپنے رسم ورواج پرعمل کرنے سے نہیں روکا گیا ہے اور نشان صاحب کو واپس لگایا جائے گا۔

      ندان سنگھ نے دی تھی نشان صاحب ہٹانے کی خبر

      نشان صاحب ہٹانے کے معاملے کو لے کر ندان سنگھ بہت مایوس تھے۔ ندان سنگھ کا اس گرودوارے سے بہت پرانا رشتہ ہے۔ چکمنی کے اسی گرودوارے سے ندان سنگھ کو طالبان نے گزشتہ سال جون میں اغوا کیا تھا اور ایک ماہ تک ان پر ظلم کئے تھے۔ ان کی رہائی کے بعد ندان سنگھ واپس اسی تھلا صاحب گرودوارے میں پیشانی ٹیکنے پہنچے تھے اور 18 جولائی 2020 کو انہوں نے نشان صاحب کو اپنے ہاتھوں سے لگایا تھا۔ ندان سنگھ افغان شہری ہیں اور رہائی کے بعد اب دہلی میں رہ رہے ہیں۔

      ندان سنگھ نے نیوز 18 سے کہا کہ انہیں 15 دن پہلے پتہ چلا کہ طالبان نے تھلا صاحب گرودوارے سے نشان صاحب کو زبردستی ہٹا دیا ہے۔ ندان سنگھ نے کہا کہ 2001 سے پہلے بھی جب افغانستان میں طالبان کا دبدبہ تھا، تب بھی کبھی نشان صاحب کو ہٹایا نہیں گیا۔ ایسا اس تاریخی گرودوارے کے ساتھ پہلی بار ہوا کہ طالبان نے زبردستی نشان صاحب کو ہٹایا۔ حالانکہ انہوں نے کہا کہ علاقے کے مسلم طبقے کے لوگ بھی گرودوارے کا احترام کرتے تھے اور نشان صاحب کو لگانے میں تعاون بھی کرتے تھے، لیکن طالبان سے یہ امید نہیں کی جاسکتی۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: