உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Imran Khan: عمران خان کے خلاف تحریک عدم اعتماد کا غلغلہ، وزیر اعظم پاکستان کا انتباہ

    پاکستان میں وزیراعظم کے خلاف ماحول گرم ہے۔

    پاکستان میں وزیراعظم کے خلاف ماحول گرم ہے۔

    پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) کی جانب سے 25 مارچ کو منصوبہ بندی کی گئی اپوزیشن مارچ اور 27 مارچ کو حکومتی طاقت کا مظاہرہ پاکستان کی معیشت اور استحکام کے لیے تصادم کا باعث بن سکتا ہے۔ پی ڈی ایم کے صدر مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ ہم آپ کو اسی سکے میں واپس کریں گے۔

    • Share this:
      پاکستان تحریک انصاف (Pakistan Tehreek-e-Insaf ) پارٹی پر جمہوری اقدار کو خطرے میں ڈالنے اور پارلیمنٹ میں لڑنے کے لیے اسلام آباد کی سڑکوں پر نکلنے کا الزام عائد کیا گیا ہے۔ اس ماہ کے آخر میں تحریک عدم اعتماد کا سامنا کرنے والی عمران خان کی حکومت نے پہلے متنبہ کیا تھا کہ پی ٹی آئی پارٹی کے کارکن ووٹنگ سے پہلے سڑکوں پر آئیں گے۔

      وزیراعظم عمران خان (Imran Khan) نے اعلان کیا تھا کہ ان کے خلاف تحریک عدم اعتماد پر ووٹ ڈالنے سے پہلے قانون سازوں کو پی ٹی آئی کے دس لاکھ کارکنوں سے گزرنا پڑے گا۔ خان کے اپنے سیاسی اتحادیوں کی طرف سے اٹھائے جانے والے خدشات کے درمیان یہ بات سامنے آئی ہے۔

      خبر رساں ایجنسی ڈان کی خبر کے مطابق بلوچستان عوامی پارٹی (بی اے پی) اور گرینڈ ڈیموکریٹک الائنس (جی ڈی اے) کے رہنماؤں نے خان کو 'تصادم کی سیاست' کے خلاف خبردار کیا ہے۔ بی اے پی کے رہنما خالد مگسی نے ڈان کو بتایا کہ انہوں نے عمران خان کو متنبہ کیا کہ نام نہاد عوامی جلسہ ’ملک میں خونی سیاست اور افراتفری‘ ہے۔

      مزید پڑھیں: Social Media: جمہوریت کوہیک کرنےسوشل میڈیاکاہورہاہےغلط استعمال، کانگریس صدرسونیا گاندھی کی ’گرجدار‘ تقریر

      یہ ووٹنگ اسلامی تعاون تنظیم (OIC) کے وزرائے خارجہ کے 21 مارچ سے 23 مارچ کے درمیان اسلام آباد میں ہونے والی سربراہی کانفرنس کے اختتام کے بعد متوقع ہے۔ عمران خان کے وزیر فواد چوہدری نے کہا کہ ملک کی سیاست اور "تین مسخروں آصف علی زرداری، نواز شریف اور مولانا فضل الرحمان کا کھیل ختم کریں۔" عوامی جلسہ 27 مارچ کو متوقع ہے اور تحریک عدم اعتماد کی عارضی تاریخ 28 مارچ ہے۔ ڈان کی ایک رپورٹ کے مطابق اس بات کے خدشات ہیں کہ طاقت کا مظاہرہ طاقت کا مظاہرہ کر سکتا ہے۔ ایک طویل دھرنا احتجاج کیا جائے گا۔

      پاکستان مسلم لیگ قائد (پی ایم ایل-ق) کے صدر چوہدری شجاعت حسین نے عمران خان کی قیادت والی پی ٹی آئی کے اتحادی نے ان سے اور اپوزیشن سے اپنے جارحانہ موقف کو کم کرنے کی درخواست کی۔ حسین نے ڈان کے حوالے سے بتایا کہ "اپوزیشن عام طور پر جلسوں کی سیاست کرتی ہے، لیکن یہ حیرت کی بات ہے کہ حکومت نے بھی ایک ایسے مقابلے میں جلسے کرنا شروع کر دیے ہیں جو اس کا کام نہیں ہے۔

      مزید پڑھیں: Russia Ukraine War:زیلنسکی نے کینیڈین پارلیمنٹ کو بتایا- روس کے حملوں میں اب تک یوکرین کے 97 بچے مارے گئے



      انہوں نے کہا کہ اپوزیشن پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) کی جانب سے 25 مارچ کو منصوبہ بندی کی گئی اپوزیشن مارچ اور 27 مارچ کو حکومتی طاقت کا مظاہرہ پاکستان کی معیشت اور استحکام کے لیے تصادم کا باعث بن سکتا ہے۔ پی ڈی ایم کے صدر مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ ہم آپ کو اسی سکے میں واپس کریں گے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: