உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    شمالی کوریا نے سمندر کی طرف ایک اور میزائل داغا، جنوبی کوریا کی فوج نے کیا کیا رد عمل؟

    اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل نے ہنگامی اجلاس طلب کیا۔

    اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل نے ہنگامی اجلاس طلب کیا۔

    شمالی کوریا کی وزارت خارجہ نے جمعرات کو ایک بیان میں کہا کہ وہ جزیرہ نما کوریا میں فوجی کشیدگی کو بڑھاتے ہوئے جنوبی کوریا-امریکہ کی مشترکہ مشقوں پر کوریا کی عوامی فوج کی شدید مذمت کرتا ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • inter, IndiaNorth KoreaNorth KoreaNorth Korea
    • Share this:
      جنوبی کوریا کی فوج نے کہا کہ شمالی کوریا نے جمعرات کے روز یعنی آج اپنے مشرقی سمندر کی طرف ایک بیلسٹک میزائل داغا۔ یہ لانچ دو ہفتوں سے بھی کم عرصے میں شمالی کوریا کی جانب سے ہتھیاروں کی فائرنگ کا چھٹا دور تھا، جس کی امریکہ اور دیگر ممالک نے مذمت کی ہے۔

      غیر ملکی ماہرین کا کہنا ہے کہ منگل کو فائر کیے گئے میزائل میں درمیانی فاصلے تک مار کرنے والا ہتھیار شامل تھا جو امریکی بحرالکاہل کے علاقے گوام اور اس سے آگے تک پہنچنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔

      جنوبی کوریا کے جوائنٹ چیفس آف اسٹاف نے کہا کہ یہ لانچ جمعرات کی صبح کی گئی تھی لیکن انہوں نے مزید تفصیلات نہیں بتائیں کہ ہتھیار نے کتنی دور تک پرواز کی۔ جمعرات کو یہ تجربہ شمالی کوریا کی جانب سے پانچ سال میں پہلی بار جاپان پر درمیانی فاصلے تک مار کرنے والا میزائل فائر کرنے کے دو دن بعد ہوا ہے۔

      حالیہ دنوں میں شمالی کی جانب سے ہتھیاروں کے تجربات کا سلسلہ اس وقت سامنے آیا جب امریکہ نے جزیرہ نما کوریا کے مشرقی ساحل سے دور پانیوں میں جنوبی کوریا اور جاپان کے ساتھ فوجی مشقیں کیں۔ شمالی کوریا ایسی مشقوں کو حملے کی مشق کے طور پر دیکھتا ہے۔ اس ضمن میں امریکہ، برطانیہ، فرانس، البانیہ، ناروے اور آئرلینڈ نے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کا ہنگامی اجلاس طلب کیا۔

      یہ بھی پڑھیں: 


      شمالی کوریا کی وزارت خارجہ نے جمعرات کو ایک بیان میں کہا کہ وہ جزیرہ نما کوریا میں فوجی کشیدگی کو بڑھاتے ہوئے جنوبی کوریا-امریکہ کی مشترکہ مشقوں پر کوریا کی عوامی فوج کی شدید مذمت کرتا ہے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: