உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    پاکستان: دو گروپوں کے درمیان فائرنگ میں 10 لوگوں کی موت، راکٹ لانچر تک ہوئے استعمال

    پاکستان: دو گروپوں کے درمیان فائرنگ میں 10 لوگوں کی موت، راکٹ لانچر تک ہوئے استعمال

    پاکستان: دو گروپوں کے درمیان فائرنگ میں 10 لوگوں کی موت، راکٹ لانچر تک ہوئے استعمال

    پاکستان (Pakistan) کے قبائلی علاقے میں جنگل کی زمین پر قبضے کو لے کر دو حریف گروپوں میں لڑائی ہوگئی۔ ان لوگوں نے اس دوران گولہ باری بھی کی، جس میں کم از کم 10 لوگوں کی موت ہوگئی ہے، جبکہ 15 زخمی ہوئے ہیں۔

    • Share this:
      پشاور: پاکستان (Pakistan) کے قبائلی علاقے میں جنگل کی زمین پر قبضے کو لے کر دو حریف گروپوں میں لڑائی ہوگئی۔ ان لوگوں نے اس دوران گولہ باری بھی کی، جس میں کم از کم 10 لوگوں کی موت ہوگئی ہے، جبکہ 15 زخمی ہوئے ہیں۔ افسران نے اتوار کو یہ اطلاع دی ہے۔ یہ حادثہ ملک کے شمال مغربی حصے میں پیش آیا۔ افسر نے بتایا کہ جھڑپ ہفتہ کو دوپہر بعد تب شروع ہوا، جب صوبے کی راجدھانی پشاور سے 251 کلو میٹر دور خرم ضلع کے تیری میگل گاوں کے رہنے والے گیدو قبیلے کے لوگوں نے گاوں میں جلوان کی لکڑی جمع کر رہے قبیلے کے اراکین پر گولیاں چلا دیں۔

      افسران نے بتایا کہ خرم ضلع (Kurram district) کے اوپر سب ڈویژن میں جنگل پر مالکانہ حق سے متعلق دونوں قبیلوں کے درمیان گزشتہ کچھ ماہ سے کشیدگی چل رہی تھی (Clashes in Pakistan Tribal Area)۔ ایک پولیس افسر نے بتایا، ’چار لوگوں کی موت ہفتہ کے روز ہوئی، جبکہ 6 دیگر لوگوں کی موت آج (اتوار) تب ہوئی، جب پیوار قبیلے کے لوگوں نے جوابی حملہ کیا۔ بندوق برداروں نے کھائی میں چھپ کر حملہ کیا۔ اس دوران بھاری ہتھیار اور یہاں تک راکیٹ لانچر کا استعمال فریقین کے ذریعہ کیا گیا۔

      شمال مغربی پاکستان واقع خرم ضلع پڑوسی افغانستان سے متصل ہے، جہاں پر جرم میں بندوقوں کا استعمال اور دہشت گردانہ حملے اکثر ہوتے رہتے ہیں۔ افسر نے بتایا کہ قبیلوں کے بزرگ اور سرکاری افسر گیدو اور پیوار قبیلے میں سمجھوتہ کرانے کی کوشش کررہے ہیں۔ پولیس اور نیم فوجی دستوں کو علاقے میں بھیجا گیا ہے۔ خبر لکھے جانے تک دونوں قبیلوں میں جدوجہد چل رہا تھا۔ پولیس ذرائع نے بتایا کہ مہلوکین کی تعداد بڑھنے کا خدشہ ہے۔

      بیوی اور بیٹیوں کا قتل کردیا

      پاکستان میں جرائم تیزی سے بڑھ رہے ہیں۔ گزشتہ ہفتے ایک 50 سال کے شخص نے چوری کے معاملے میں اپنی بیوی اور دو بیٹیوں کا گولی مار کر قتل کردیا ہے۔ یہ حادثہ ملک کے خیبر پختونخوا صوبہ کے صوابی ضلع میں کالو خان تھانہ علاقے کا تھا۔ ملزمین کی پہچان جن بہادر کے طور پر ہوئی تھی۔ اسے خدشہ تھا کہ اس کی بیوی اور بیٹیوں نے ماردان میڈیکل احاطے سے ایک نوزائیداہ بچے کی چوری کی ہے۔ (ایجنسی اِن پُٹ کے ساتھ)
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: