کھٹائی میں ہند-پاک این ایس اے مذاکرات، حریت سے بات کرنے پر بضد ہے پاکستان

نئی دہلی۔ ہندستان اور پاکستان کے درمیان این ایس اے سطح کی بات چیت منسوخ ہونے کا خطرہ منڈلا رہا ہے۔

Aug 22, 2015 11:45 AM IST | Updated on: Aug 22, 2015 11:45 AM IST
کھٹائی میں ہند-پاک این ایس اے مذاکرات، حریت سے بات کرنے پر بضد ہے پاکستان

نئی دہلی۔ ہندستان اور پاکستان کے درمیان این ایس اے سطح کی بات چیت منسوخ ہونے کا خطرہ منڈلا رہا ہے۔ حریت رہنماؤں سے ملاقات پر بضد پاکستان کو منہ توڑ جواب دیتے ہوئے ہندستان نے کہا ہے کہ حریت سے پاک کی ملاقات اسے منظور نہیں ہے اور ایسی شرائط پر بات آگے نہیں بڑھ سکتی۔

پاکستان کے قومی سلامتی کے مشیر سرتاج عزیز آج دوپہر ڈیڑھ بجے پریس کانفرنس کر اس کا اعلان کر سکتے ہیں کہ ان کا اگلا قدم کیا ہوگا۔ غور طلب ہے کہ پاکستان بات چیت سے پہلے حریت رہنماؤں سے ملاقات اور کشمیر کو بات چیت میں شامل کرنے کے معاملے پر اڑا ہوا ہے۔ جبکہ ہندوستان نے دو ٹوک کہہ دیا ہے کہ اوفا کے ایجنڈے میں صرف دہشت گردی کا مسئلہ تھا اور وہی رہے گا۔

Loading...

وزارت خارجہ نے تو یہاں تک الزام لگایا کہ دونوں وزرائے اعظم کے درمیان جو طے ہوا تھا پاکستان اب اس کے بالکل برعکس ایجنڈے پر جا رہا ہے۔ وہیں مرکزی وزیر وینکیا نائیڈو نے کہا کہ ہندستان تعلقات کو معمول پر لانے کی کوشش کر رہا ہے تو پاکستان اس  کو بگاڑنے کی کوشش میں لگا ہے۔

بی جے پی لیڈرسدھارتھ ناتھ سنگھ نے کہا کہ جب اوفا میں یہ طے ہو گیا تھا کہ بات چیت دہشت گردی پر ہی ہوگی تو اب پاکستان اس سے کیوں پلٹ رہا ہے۔ این ایس اے کے مذاکرات میں کل اسی پر بات ہو اور دوسری بات کانگریس پاکستان کی زبان بولنا بند کرے کہ ہمیں دہشت گردی کے لئے نرم رویہ اپنانا چاہئے تھا۔

وہیں پاکستان سے بات چیت کو لے کر کانگریس نے حکومت کی منشا پر سوال اٹھائے ہیں۔ پارٹی لیڈر منیش تیواری نے کہا کہ کیا حکومت پر کوئی بین الاقوامی دباؤ ہے۔ پاکستان کی امن کی خلاف ورزی کے باوجود وزیر اعظم جی بات کیوں کرنا چاہتے ہیں، کیا ان پر کوئی بین الاقوامی دباؤ ہے؟

Loading...