ہندستان کا دعوی: اوفا معاہدے سے پیچھے ہٹا پاکستان، کہا نئی شرائط منظور نہیں

نئی دہلی۔ ہندستان نے پاکستان کو مطلع کر دیا ہے کہ وہ مذاکرات کے تئیں پابند عہد ہے لیکن پڑوسی ملک کی طرف سے لگائی گئی نئی یک طرفہ شرطوں کی بنیاد پر آگے نہیں بڑھا جا سکتا ہے۔

Aug 22, 2015 08:49 AM IST | Updated on: Aug 22, 2015 08:49 AM IST
ہندستان کا دعوی: اوفا معاہدے سے پیچھے ہٹا پاکستان، کہا نئی شرائط منظور نہیں

نئی دہلی۔ ہندستان نے پاکستان کو مطلع کر دیا ہے کہ وہ مذاکرات کے تئیں پابند عہد ہے لیکن پڑوسی ملک کی طرف سے لگائی گئی نئی یک طرفہ شرطوں کی بنیاد پر آگے نہیں بڑھا جا سکتا ہے۔ ہندستان محسوس کرتا ہے کہ پاکستان کبھی بھی قومی سلامتی مشیروں کے درمیان مذاکرات کو لے کر سنجیدہ نہیں رہا اور اوفا چوٹی اجلاس کے نتائج کے باوجود پاکستانی فوجیوں کی طرف سے جموں و کشمیر میں شہریوں کو نشانہ بناتے ہوئے کی جانے والی گولہ باری میں اضافہ ہوا اور ساتھ ہی دو بڑے دہشت گردانہ حملوں کے علاوہ دراندازی کے واقعات میں بھی اضافہ ہوا۔

نئی دہلی میں اندازہ یہ ہے کہ این ایس اے سطح کے مذاکرات میں پاکستان کی صورت حال وزیر اعظم نریندر مودی اور وزیر اعظم نواز شریف کے درمیان دس جولائی کو اوفا میں ہوئی رضامندی کے برعکس ہے کیونکہ اسلام آباد نے اس مفاہمت کی توڑمروڑ کر تشریح کی ہے۔ ہندستان نے پاکستان کو یہ پیغام دے دیا ہے کہ اس کی جانب سے یک طرفہ نئی شرائط مسلط کرنا اور دونوں وزرائے اعظم کے درمیان ہوئی مفاہمت کی توڑمروڑ کر کی گئی وضاحت قابل قبول نہیں ہے۔

Loading...

ہندستان محسوس کرتا ہے کہ اس ملک میں کچھ طاقتیں ایسی ہیں جو نہیں چاہتیں کہ مذاکرات آگے بڑھے۔ اعلی سطحی سیکورٹی مشیروں کے درمیان مذاکرات پر پاکستان نے جو رخ اپنایا ہے اس سے یہاں حکومت کو کوئی حیرانی نہیں ہوئی ہے۔ اب سمجھ آ گیا ہے کہ پاکستان این ایس اے سرتاج عزیز کے اپنے ہندستانی ہم منصب اجیت ڈوبھال سے مذاکرات کے لئے یہاں آنے کا کوئی امکان نہیں ہے۔

ہندستان نے پاکستان کو یہ صاف کر دیا تھا کہ علیحدگی پسندوں اور سرتاج عزیز کے ساتھ ملاقات قابل قبول نہیں ہے۔ پاکستان نے اس پر اپنا سخت رد عمل ظاہر کرتے ہوئے زور دیا کہ وہ علیحدگی پسند رہنماؤں سے ملاقات کی اپنے سابقہ روایت سے پیچھے نہیں ہٹےگا اور ساتھ ہی اس نے اس سلسلے میں ہندوستان کے مشورہ کو مسترد کردیا۔ ہندستان نے اس پر جوابی حملہ کرتے ہوئے پاکستان پر الزام لگایا کہ وہ وزیر اعظم نریندر مودی اور ان کے پاکستانی ہم منصب نواز شریف کے درمیان اوفا میں دہشت گردی پر ٹھوس مذاکرات میں شامل ہونے کو لے کر جو اتفاق رائے ہوا تھا، وہ اس سے بچنے کی کوشش کر رہا ہے۔

Loading...