உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    وزیر دفاع راجناتھ سنگھ نےکہا- چین کےخلاف ہندوستانی فوج کی بہادری جان لیں گے تو سینا فخر سے چوڑا ہوجائے گا

    وزیر دفاع راجناتھ سنگھ 20 مئی کو مختلف پروگراموں میں شامل ہونے کے لئے پنے پہنچے تھے۔ یہاں انہوں نے بی جے پی کے ایک پروگرام میں کارکنان کو خطاب کیا۔ وزیر دفاع نے کہا، ’سرحد پر ہندوستان چین کے درمیان کشیدگی کے موضوع پر زیادہ کچھ نہیں کہوں گا۔ لیکن ہماری فوج نے جس طرح کی ہمت دکھائی تھی اور کرشمائی کام کیا تھا، میں صرف اتنا کہوں گا کہ اگر پوری جانکاری عوامی کردی جائے، تو ہر ہندوستانی کا سینا فخر سے چوڑا ہوجائے گا۔

    وزیر دفاع راجناتھ سنگھ 20 مئی کو مختلف پروگراموں میں شامل ہونے کے لئے پنے پہنچے تھے۔ یہاں انہوں نے بی جے پی کے ایک پروگرام میں کارکنان کو خطاب کیا۔ وزیر دفاع نے کہا، ’سرحد پر ہندوستان چین کے درمیان کشیدگی کے موضوع پر زیادہ کچھ نہیں کہوں گا۔ لیکن ہماری فوج نے جس طرح کی ہمت دکھائی تھی اور کرشمائی کام کیا تھا، میں صرف اتنا کہوں گا کہ اگر پوری جانکاری عوامی کردی جائے، تو ہر ہندوستانی کا سینا فخر سے چوڑا ہوجائے گا۔

    وزیر دفاع راجناتھ سنگھ 20 مئی کو مختلف پروگراموں میں شامل ہونے کے لئے پنے پہنچے تھے۔ یہاں انہوں نے بی جے پی کے ایک پروگرام میں کارکنان کو خطاب کیا۔ وزیر دفاع نے کہا، ’سرحد پر ہندوستان چین کے درمیان کشیدگی کے موضوع پر زیادہ کچھ نہیں کہوں گا۔ لیکن ہماری فوج نے جس طرح کی ہمت دکھائی تھی اور کرشمائی کام کیا تھا، میں صرف اتنا کہوں گا کہ اگر پوری جانکاری عوامی کردی جائے، تو ہر ہندوستانی کا سینا فخر سے چوڑا ہوجائے گا۔

    • Share this:
      پنے: وزیر دفاع راجناتھ سنگھ 20 مئی کو مختلف پروگراموں میں شامل ہونے کے لئے پنے پہنچے تھے۔ یہاں انہوں نے بی جے پی کے ایک پروگرام میں کارکنان کو خطاب کیا۔ انہوں نے اپنے خطاب میں چین کے ساتھ سرحدی تنازعہ پر بھی کچھ باتیں کہیں۔ وزیر دفاع نے کہا، ’سرحد پر ہندوستان چین کے درمیان کشیدگی کے موضوع پر زیادہ کچھ نہیں کہوں گا۔ لیکن ہماری فوج نے جس طرح کی ہمت دکھائی تھی اور کرشمائی کام کیا تھا، میں صرف اتنا کہوں گا کہ اگر پوری جانکاری عوامی کردی جائے، تو ہر ہندوستانی کا سینا فخر سے چوڑا ہوجائے گا۔

      راجناتھ سنگھ نے کہا کہ ہندوستان اب کمزور ملک نہیں رہا ہے۔ اگر ہندوستان کو کسی نے چھیڑنے کی کوشش کی، تو یہ چھوڑے گا نہیں۔ انہوں نے کہا، ’دنیا کی کوئی طاقت ہندوستان کی طرف سے آنکھ اٹھاکر نہیں دیکھ سکتی ہے۔ کیونکہ اب ہم کمزور نہیں رہے، بلکہ دنیا کا طاقتور ملک بن چکے ہیں۔ ہم کسی کو چھیڑیں گے نہیں، لیکن کوئی ہمیں چھیڑے گا تو ہم چھوڑیں گے بھی نہیں‘۔ وزیر دفاع نے کہا کہ گزشتہ 8 سالوں میں بین الاقوامی سطح پر ہندوستان کا رتبہ بڑھا ہے۔ ملک فوجی آلات کے لئے دوسرے ممالک پر اپنے انحصار کو ختم کرنے کی بھی کوشش کر رہا ہے۔



      وزیر دفاع نے کہا، ’ہندوستان کے قد، ملک کے وقار میں گزشتہ 8 برسوں میں بہت اضافہ ہوا ہے۔ اس سے پہلے، جب بھی ہندوستان بین الاقوامی اسٹیج پر بولتا تھا، کوئی بھی اسے سنجیدگی سے نہیں لیتا تھا، لیکن آج جب ہندوستان کسی بھی عالمی اسٹیج پر بولتا ہے، تو پوری دنیا سنتی ہے۔ ہتھیار اور دفاعی سازوسامان صرف باہر سے منگائے جاتے تھے۔ ہندوستان میں کچھ بھی نہیں بنتا تھا۔ ٹینک، راکٹ، میزائل اور گولہ بارود سبھی امپورٹ کئے جاتے تھے۔ میں نے 309 چیزوں کی فہرست بنائی ہے۔ یہ چیزیں ایک متعینہ مدت کے بعد باہر سے نہیں خریدی جائیں گی۔ اس کا عمل شروع ہوچکا ہے۔ ہمارا ملک سب سے بڑا امپورٹ کرنے والا مانا جاتا تھا، اب دفاعی میدان میں ایکسپورٹ کرنے والے ٹاپ 25 ممالک میں شامل ہے۔

      وزیر دفاع راجناتھ سنگھ نے کہا، ’ہندوستان کے قد اور ملک کے وقار میں گزشتہ 8 برسوں میں بہت اضافہ ہوا ہے۔
      وزیر دفاع راجناتھ سنگھ نے کہا، ’ہندوستان کے قد اور ملک کے وقار میں گزشتہ 8 برسوں میں بہت اضافہ ہوا ہے۔


      بی جے پی کارکنان سے راجناتھ سنگھ نے کہا، ’آپ کو یہ کبھی نہیں بھولنا چاہئے کہ آپ کس پارٹی کے رکن ہیں۔ بی جے پی صرف ملک ہی نہیں دنیا کی سب سے بڑی پارٹی ہے۔ انہوں نے کہا کہ جس نظریے کو لے کر ہم نے اپنا سفر شروع کیا، اس سے پتہ چلتا ہے کہ ہم صرف حکومت بنانے کے لئے نہیں، بلکہ ملک بنانے کے لئے سیاست کرتے ہیں‘۔

      بی جے پی کے سینئر لیڈر نے کہا کہ کانگریس نے لمبے وقت تک ملک پر اقتدار کیا، دوسروں نے بھی کیا… آزادی کے سالوں بعد بھی لوگوں کو بنیادی پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑا۔ یہ مت کہو کہ ہم نے سب کچھ حل کرلیا ہے، لیکن وزیر اعظم مودی کا کام اب گراونڈ اور زمین پر دکھائی دے رہا ہے۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: