عمران خان نےایل اوسی کا دورہ کرکےکہا- آرٹیکل 370 ہٹنےسے صدمے میں پاکستان

پاکستان کےوزیراعظم عمران خان نےخود ایک تقریرمیں کہا ہےکہ جموں وکشمیرسےدفعہ370 ہٹائےجانے کے بعد سے پاکستان صدمےمیں ہے۔

Sep 07, 2019 08:34 PM IST | Updated on: Sep 07, 2019 08:39 PM IST
عمران خان نےایل اوسی کا دورہ کرکےکہا- آرٹیکل 370 ہٹنےسے صدمے میں پاکستان

پاکستان کے وزیراعظم عمران خان نےکیا ایل اوسی کا دورہ

اسلام آباد: پاکستانی وزیراعظم عمران خان نے جمعہ کو ایل اوسی کا دورہ کیا۔ جہاں پرعلاقے میں کشیدگی کےدرمیان بارڈرپرموجودہ حالات کے بارے میں انہیں اطلاع دی گئی۔ اے این آئی کےمطابق عمران خان نے پاکستان کے 'دفاعی اورشہید دیوس' کےموقع پرایل اوسی کا دورہ کیا۔ بتا دیں کہ اسی دن 'کشمیرکے ساتھ اتحاد کا گھنٹہ' بھی منایا گیا۔

ڈان کی رپورٹ کے مطابق پاکستانی وزیراعظم کے ساتھ فوج کےسربراہ جنرل قمرباجوہ بھی اس موقع پرموجود رہے۔ اس موقع پرپاکستان کے وزیردفاع پرویز کھٹک، وزیرخارجہ شاہ محمود شاہ قریشی اورکشمیرپربنائی گئی اسپیشل کمیٹی کے چیئرمین سید فخرامام بھی موجود رہے۔ انٹرسروسیزپبلک ریلیشن (آئی ایس پی آر) کےمطابق اپنے اس سفرکےدوران پاکستانی وزیراعظم عمران خان کوایل اوسی پرچل رہے حالات کی اطلاعات دی گئی۔

Loading...

 کہا- پاکستان 370 ہٹانے سے صدمے میں

ایک بیان میں دعویٰ کیا گیا، عمران خان نے پاکستان کی طرف سے مبینہ طورپرہندوستان کی طرف سے کی گئی جنگ بندی کا زبردست جواب دینے کی تعریف کی ساتھ ہی مبینہ طور پر ہندوستان کی جارحیت کا جواب دینے کوپاکستان تیاررہے گا یہ بات بھی کہی۔ اس سفر کے دوران عمران خان نے وہاں موجود فوجیوں اورمارے گئے فوجیوں کےاہل خانہ سے بھی ملاقات کی۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ پاکستان ہندوستانی حکومت کےدفعہ 370 ہٹائےجانے اور جموں وکشمیرکوخصوصی ریاست کا درجہ دیئے جانے کے قدم سے صدمے میں ہیں۔

عمران خان نےاس کےجواب میں پھراپنا پرانا راگ الاپتے ہوئے ہرجمعہ کوکشمیرکے ساتھ اتحاد کا گھنٹہ کی بات بھی کہی۔ حالانکہ پہلے ہی ہفتےمیں عمران خان کا یہ مہم پھس ہوچکی ہے۔ کئی سارے حکومت کے کوششوں کے باوجود بھی پاکستان میں اس مہم میں چند لوگوں کی بھیڑ اکٹھا نہیں ہوسکی تھی۔ کچھ لوگوں کے سڑک پراترنےکےبعد اس مہم کےآگے جاری رہنے کے بہت کم ہی آثارنظرآرہے ہیں۔ اس مہم کےکامیاب ہونےسےپاکستانی حکومت ایک بار پھرسےغصے میں ہے۔

Loading...