عمران خان کی سابق اہلیہ ریحام خان نے جیتا ہتک عزت کا مقدمہ، جھوٹے ثابت ہوئے پاکستانی چینل کے دعوے

مقدمہ جیتنے کے بعد ریحام نے کہا، " مجھے بیحد خوشی خوشی ہے کہ آخرکار انصاف ہوا۔ میں بے قصور ہوں۔ یہ ثابت کرنے کیلئے مجھے ایک لمبی لڑائی لڑنی پڑی۔ کئی نیوز چینلوں نے اپنے ایجنڈے اور ذاتی مفاد کیلئے میری شبیہ کا استعمال کیا"۔

Nov 14, 2019 07:24 AM IST | Updated on: Nov 14, 2019 10:11 AM IST
عمران خان کی سابق اہلیہ ریحام خان نے جیتا ہتک عزت کا مقدمہ، جھوٹے ثابت ہوئے پاکستانی چینل کے دعوے

پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان کی سابق اہلیہ ریحام خان نے ایک پاکستانی نیوز چینل کے خلاف ہتک عزت کا مقدمہ جیت لیا ہے۔ پاکستانی نیوز چینل میں ریحام کی نجی زندگی کو لیکر کچھ دعوے کئے گئے تھے جو بعد میں جھوٹے ثابت ہوئے۔ نیوز چنل نے کیس ہارنے کے بعد ریحام خان سے معافی مانگی ہے۔ لندن کے ہائی کورٹ میں پیر کو اس معاملے میں سماعت ہوئی۔ اس دوران جسٹس میتھیو نکلن نے دونوں فریقوں کے درمیان صلح اور نیوز چینل کے ریحام  خان سے معافی نامے کی جانکاری دی۔

جانیں کیا ہے پورا معاملہ؟

دراصل پاکستان کے نیوز چینل دنیا ٹی وی  میں جون 2018 کے ایک شو میں عمران خان کی دوسری بیگم ریحام خان بھی پہنچی تھی۔ ریحام کے مطابق اس شو میں شیخ راشد پاکستان کے موجودہ وزیر ریل نے ان پر کئی سنگین الزام لگائے تھے اور نجی زندگی کو لیکر کئی جھوٹے دعوے کئے تھے۔

چینل کے شو میں شیخ راشد نے لگائے تھے سنگین الزام

Loading...

ریحام خان  کے وکیل ایلیکس کاکرین نے بتایا، "شیخ راشد نے میری موکلہ (ریحام خان) پر سب سے بڑا الزام یہ لگایا تھا کہ انہوں نے سابق شوہر عمران خان کے سیاسی حریف اور پاکستان مسلم لیگ کے ساتھ ملی بھگت کی۔ ساتھ ہی عمران خان کے خلاف لکھنے کیلئے نواز شریف کے بھائی شہباز شریف سے موٹی رقم لی۔ حالانکہ کورٹ میں سبھی دعوے ثابت نہیں ہو پائے'۔

کیس جیتنے کے بعد کیا بولیں ریحام خان۔۔

مقدمہ جیتنے کے بعد ریحام خان نے کہا، " مجھے بیحد خوشی ہے کہ آخرکار انصاف ہوا۔ میں بے قصور ہوں۔ یہ ثابت کرنے کیلئے مجھے ایک لمبی لڑائی لڑنی پڑی۔ کئی نیوز چینلوں نے اپنے ایجنڈے اور ذاتی مفاد کیلئے میری شبیہ کا استعمال کیا"۔ ریحام نے آگے کہا "مجے امید ہے کہ میری جیت منصفانہ صحافت اور اخلاقی سیاست کو تقویت بخشے گی"۔

Loading...