پاکستانی فوج کےترجمان کی گیدڑبھبکی، کشمیرپرنیوکلیئرجنگ کا خطرہ

پاکستان کے وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے ہفتہ کوکہا کہ پاکستان اپنے بیرون ممالک دفاتر میں ایک 'کشمیرسیل' بنائے گا۔ انہوں نے کہا کہ اہم دارالحکومتوں کی شناخت کی جائے گی اور سبھی سفارت خانوں میں ایک کشمیرڈیسک بنائی جائے گی۔

Aug 17, 2019 05:01 PM IST | Updated on: Aug 17, 2019 05:16 PM IST
پاکستانی فوج کےترجمان کی گیدڑبھبکی، کشمیرپرنیوکلیئرجنگ کا خطرہ

پاکستانی فوج کےترجمان جنرل آصف غفورنےکہا ہے کہ کشمیرپرنیوکلیئرجنگ کا خظرہ ہے۔ فوٹو: پی ٹی آئی ۔

ہندوستان کے وزیردفاع راجناتھ سنگھ نےجمعہ کوکہا کہ ہندوستان اپنی 'نوفرسٹ یوز' (پہلے استعمال نہ کرنے) کی نیوکلیئرپالیسی کا جائزہ لےسکتا ہے۔ ہفتہ کواس پرردعمل ظاہرکرتے ہوئے پاکستانی فوج کےترجمان جنرل آصف غفورنےکہا کہ کشمیرپریقینی طورپرنیوکلیئر جنگ کا خطرہ ہے۔ انہوں نےکہا کہ پاکستانی سیکورٹی اہلکارہندوستان کے کسی بھی حملے کا جواب دینےکےلئے پوری طرح سے تیارہیں۔

وہیں پاکستان کے وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے ہفتہ کوکہا کہ پاکستان اپنے بیرون ممالک دفاترمیں ایک 'کشمیرسیل' بنائےگا۔ انہوں نےکہا کہ اہم دارالحکومتوں کی شناخت کی جائے گی اورسبھی سفارت خانوں میں ایک کشمیرڈیسک بنائی جائے گی۔

Loading...

وزیردفاع کے بیان کے بعد آیا پاکستان کا یہ جواب

پاکستان کا یہ بیان وزیردفاع راجناتھ سنگھ کے بعد آیا ہے۔ واضح رہے کہ جمعہ کووزیردفاع راجناتھ سنگھ نے پوکھرن میں کہا تھا 'نیوکلیئرہتھیاروں کے استعمال کولے کراب تک ہماری پالیسی 'پہلے استعمال نہ کرنے' کی رہی ہے۔ اب مستقبل میں کیا ہوتا ہے، یہ اس وقت کے حالات پرمنحصرکرتا ہے'۔ راجناتھ سنگھ کے اس بیان کےبعد پاکستان کی بوکھلاہٹ میں مزید اضافہ ہوگیا ہے، جس کے بعد اس نے کہا ہے کہ کشمیرپرنیوکلیئرجنگ کا خطرہ ہے۔

ہندوستان کے قدم سے بوکھلایا ہوا ہے پاکستان

واضح رہے کہ ملک کی مودی حکومت کے جموں وکشمیرسے دفعہ 370 کے بیشترشقوں کو ہٹانےاورریاست کی تقسیم کرنے سے پاکستان بری طرح سے بوکھلایا ہوا ہے۔ اپنی اس بوکھلاہٹ کےسبب وہ پوری دنیا سے اس معاملے میں مداخلت کا مطالبہ کررہا ہے، لیکن اسے ہرطرف سے مایوسی کے علاوہ اورکچھ ہاتھ نہیں لگ رہا۔ دنیا کےبڑے ملک امریکہ، چین اورروس بھی اس کی کوئی مدد نہیں کررہے ہیں۔ اسی کے سبب پاکستان اپنے ناپاک منصوبوں کومسلسل اپنے بیانات سے ظاہرکررہا ہے۔

Loading...