ایکسکلوزیو: آئی ایس آئی اور پاکستانی فوج کی خطرناک سازش ، جہادی لے رہے نیو کلیئر وار کی ٹریننگ

ذرا سوچئے اگر نیو کلیئر ہتھیار دہشت گردوں کے ہاتھ لگ جائے تو اس کا انجام کیا ہوگا ؟ لیکن دہشت گردوں کیلئے سیف ہیون مانے جانے والے پاکستان کو اس سے کوئی سروکار نہیں ۔

Sep 19, 2019 04:46 PM IST | Updated on: Sep 19, 2019 04:46 PM IST
ایکسکلوزیو: آئی ایس آئی اور پاکستانی فوج کی خطرناک سازش ، جہادی لے رہے نیو کلیئر وار کی ٹریننگ

علامتی تصویر

آئی ایس آئی اور پاکستانی فوج ایک ایسی خطرناک سازش رچ رہی ہے ، جو صرف پاکستان ہی نہیں بلکہ پوری دنیا کو تباہی کے راستے پر لے جاسکتی ہے ۔ ذرا سوچئے اگر نیو کلیئر ہتھیار دہشت گردوں کے ہاتھ لگ جائے تو اس کا انجام کیا ہوگا ؟ لیکن دہشت گردوں کیلئے سیف ہیون مانے جانے والے پاکستان کو اس سے کوئی سروکار نہیں ۔

خفیہ ایجنسیون کو ملی پختہ جانکاری کے مطابق پاکستان چین کی فنڈنگ اور اس کی تکنیک کا استعمال کرکے دہشت گردوں کو نیوکلیئر وار فیئر کی ٹریننگ مہیا کرا رہا ہے ۔ خفیہ ان پٹ کے مطابق سی پی آئی سی ( چین پاکستان اکنامک کوریڈور ) میں چین نے جو نیو کلیئر مینیو فیکچرنگ اور ڈیفنس یونٹ بنائی ہے ، اس میں تقریبا 80 فیصدی تحریک طالبان اور طالبان کے  نظریہ سے متاثر لوگ ٹریننگ لے رہے ہیں۔

Loading...

اس ٹریننگ انسٹی ٹیوٹ کو پاکستان نے 912  ملین ڈالر کی لاگت سے بنایا ہے۔ یہ پاکستان چین ٹیکنیکل اور ووکیشنل ٹریننگ انسٹی ٹیوٹ ، گوادر اور سیٹیلائٹ ریسرچ سینٹر ہے ۔ یہ گوادر اور بلوچستان کے علاوہ مزید تین مقامات پر واقع ہے۔

اس کے علاوہ سی پی آئی سی میں ہی پاکستان اور چین کے مشترکہ وینچر سے تیار ایک ایرلی وارننگ سسٹم بنانے کا انسٹی ٹیوٹ بھی ہے ۔ وہاں بھی ایسے ہی افراد کو ٹریننگ دی جارہی ہے ۔ علاوہ ازیں پاکستان چین کو اعتماد میں لے کر گوادر کے تربت علاقہ سے لے کر بلوچستان کے کھجدر تک روڈ بنوا رہا ہے تاکہ دہشت گردوں کا گڑھ مانے جانے والے ان علاقوں میں دہشت گردی کا انفراسٹرکچر تیار کیا جاسکے ۔

پاکستان کے اس دوہرے گیم میں چین بھی پھنستا نظر آرہا ہے ۔ دراصل پاکستان ان انسٹی ٹیوٹ میں ٹریننگ یافتہ دہشت گردوں کا استعمال چین کے شنجیانگ خطہ میں ایغور مسلمانوں کو حمایت دینے کیلئے کرے گا ۔ کہا جاتا ہے کہ شنجیانگ میں چین نے تقریبا 10 لاکھ مسلمانوں کو ایک طرح کی حراست میں رکھا ہوا ہے ۔ حالانکہ چین نے ان خبروں کی کئی مرتبہ تردید کی ہے ، لیکن اس دوران شنجیانگ میں لوگوں کی نگرانی کے کئی ثبوت بھی سامنے آئے ہیں ۔

Loading...