உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    پاکستانی فوجی سربراہ قمر جاوید باجوا نے کہا- پاکستان میں تمام سازشوں کو بنا دیں گے ناکام

    پاکستانی فوجی سربراہ قمر جاوید باجوا نے کہا- پاکستان میں تمام سازشوں کو بنا دیں گے ناکام

    پاکستانی فوجی سربراہ قمر جاوید باجوا نے کہا- پاکستان میں تمام سازشوں کو بنا دیں گے ناکام

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:

      راولپنڈی: پاکستان آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوا نے کور کمانڈرز کانفرنس میں روایتی اور غیرروایتی خطرات سے نمٹنے کیلئے مکمل تیار رہنے کی ہدایت دیتے ہوئے کہا پاکستان میں امن تباہ کرنے کی سازشوں کو ہرقیمت پرناکام بنادیں گے۔ ’ڈان نیوز‘ کے مطابق پاکستانی فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے ڈائریکٹر جنرل میجر جنرل بابر افتخار کی جانب سے بیان میں کہا گیا ہے کہ آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوا کی زیر صدارت کور کمانڈرز کانفرنس ہوئی۔ کانفرنس میں عالمی، علاقائی، داخلی سیکورٹی کی صورتحال سمیت افغانستان کی تازہ ترین صورتحال پرغور کیا گیا۔
      کانفرنس میں پاک افغان سرحد کی صورتحال، احتیاطی اقدامات پربھی گفتگو ہوئی۔ آرمی چیف نے مؤثربارڈرمینجمنٹ نظام پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئےکہا بارڈرمینجمنٹ سے نقل و حرکت اور داخلی سیکورٹی صورتحال کنٹرول میں ہے۔ آرمی چیف نے افغانستان سے غیرملکی عملے کے انخلامیں فوج کے کردار کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان خطے میں دیرپا امن کے لئے کوشاں ہے۔ اس موقع پر آرمی چیف نے تمام فارمیشنزکی پرامن محرم کے لئے کوششوں کوسراہتے ہوئے روایتی، غیرروایتی خطرات سے نمٹنے کی تیاریوں پر اطمینان کا اظہار کیا۔ جنرل قمر جاوید باجوا نے روایتی، غیرروایتی خطرات سے نمٹنے کیلئے مکمل تیار رہنے کی ہدایت دیتے ہوئے کہا پاکستان میں امن تباہ کرنے کی سازشوں کو ہرقیمت پرناکام بنادیں گے۔




      پاکستان آرمی چیف جنرل قمرجاوید باجوا نے کہا ہے کہ جنگ زدہ افغانستان میں پائیدار امن اور استحکام کے حصول کے لیے بین الاقوامی برادری کی جانب سے تعمیری روابط اور اور انسانی امداد ضروری ہے۔
      پاکستان آرمی چیف جنرل قمرجاوید باجوا نے کہا ہے کہ جنگ زدہ افغانستان میں پائیدار امن اور استحکام کے حصول کے لیے بین الاقوامی برادری کی جانب سے تعمیری روابط اور اور انسانی امداد ضروری ہے۔

      دریں اثنا پاکستان آرمی چیف جنرل قمرجاوید باجوا نے کہا ہے کہ جنگ زدہ افغانستان میں پائیدار امن اور استحکام کے حصول کے لیے بین الاقوامی برادری کی جانب سے تعمیری روابط اور اور انسانی امداد ضروری ہے۔ پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ انٹر سروسز پبلک ریلیشنز (آئی ایس پی آر) کے ڈائریکٹر جنرل کی جانب سے ٹوئٹس کے سلسلے میں کہا گیا کہ اجلاس میں عالمی، علاقائی اور ملکی سلامتی کی صورتحال کا جامع جائزہ لیا گیا۔
      کانفرنس میں افغانستان کی موجودہ صورتحال خصوصاً پاک افغان سرحد پر سیکورٹی اور مختلف خطرات کے خلاف مؤثرحفاظتی اقدامات سے آگاہ کیا گیا۔ آرمی چیف نے جامع بارڈر مینجمنٹ کے نظام کی افادیت پر اطمینان کا اظہارکیا، جس کی بدولت خطے میں بحرانی صورتحال کے دوران پاکستان کی سرحدوں اور داخلی سلامتی کی صورتحال برقرار رکھنے میں مدد ملی۔ انہوں نے افغانستان سے غیر ملکیوں اور افغان باشندوں کے انخلا اور ٹرانزٹ سے متعلقہ کوششوں میں پاک فوج کے تعاون اورکردار کو سراہا اور امن کے لئے پاکستان کے پختہ عزم کا اعادہ کیا۔ انہوں نے کہا کہ عالمی برادری کی جانب سے افغانستان کے لیے تعمیری روابط اور پائیدار انسانی امداد دیرپا امن اور استحکام کے لیے ضروری ہیں۔انہوں نے کہا کہ خوشحال اور پرامن خطے کے لیے تمام علاقائی اسٹیک ہولڈرز کے درمیان قریبی تعاون ضروری ہے۔

      Published by:Nisar Ahmad
      First published: