உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    پاکستان: فوج کے قافلے پر خود کش حملہ، 21 جوان شدید طور پر زخمی

    پاکستان میں فوج کے قافلے پر خود کش حملہ، 21 جوان شدید طور پر زخمی

    پاکستان میں فوج کے قافلے پر خود کش حملہ، 21 جوان شدید طور پر زخمی

    حملہ آور نے خیبر پختونخوا صوبہ کے شمالی وزیرستان میں میر علی بائی پاس روڈ پر فوج کی گاڑی کو نشانہ بنایا۔ ذرائع نے بتایا کہ حملے میں کم ازکم 21 فوجی زخمی ہوئے ہیں۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Delhi, India
    • Share this:
      اسلام آباد: پاکستان کے بدامن علاقہ خیبر پختونخوا صوبہ میں منگل کے روز ایک خود کش حملہ آور نے فوج کے ایک قافلے پر حملہ کردیا، جس میں کم از کم 21 فوجی زخمی ہوگئے۔ حملہ آور نے خیبر پختونخوا صوبہ کےشمالی وزیرستان میں میر علی بائی پاس روڈ پر فوج کی گاڑی کو نشانہ بنایا۔

      فوج نے بتایا کہ حملے میں کم از کم 21 فوجی زخمی ہوئے ہیں اور انہیں فوری طور ایک فوجی ابتدائی طبی مرکز میں داخل کرایا گیا ہے۔ سبھی زخمیوں کی حالت مستحکم بتائی گئی ہے۔ حال میں تحریک طالبان پاکستان کے ذریعہ جنگ بندی کے باوجود قبائلی اضلاع میں دہشت گردوں کے ذریعہ سیکورٹی فورسز پر حملوں میں اضافہ ہوا ہے۔

      واضح رہے کہ گزشتہ اتوار کو بلوچستان میں ایک ہیلی کاپٹر کریش میں پاکستانی فوج کے دو میجر سمیت 6 فوجیوں کی موت ہوگئی۔ گزشتہ پیر کے روز پاکستانی فوج کی میڈیا ونگ انٹر-سروسیز پبلک ریلیشن نے اس کی جانکاری دی تھی۔ حادثہ کے بارے میں جانکاری دیتے ہوئے بتایا تھا کہ گزشتہ اتوار کی دیر رات ہرنائی ضلع کے خوست شہر کے پاس ایک پلاننگ مشن کے دوران یہ حادثہ ہوا۔ وہیں گزشتہ 9 اگست کو شمالی وزیرستان قبائلی ضلع میں ایک خود کش حملے میں کم از کم 4 پاکستانی فوجی مارے گئے تھے اور سات لوگ زخمی ہوگئے تھے۔

      وہیں، 4 جولائی کو علاقے میں سیکورٹی اہلکاروں کے قافلے پر ایک خودکش حملہ آور نے حملہ کیا تھا۔ اس دوران کم از کم 10 سیکورٹی اہلکار زخمی ہوگئے تھے۔ وہیں ‘دی بلوچستان‘ پوسٹ نے دعویٰ کیا کہ بلوچ  باغیوں نے فوج کے ہیلی کاپٹر کو مار گرایا ہے۔ واضح رہے کہ اس سے قبل اگست کے مہینے میں بھی ہیلی کاپٹر کریش میں 6 پاکستانی فوجیوں کی موت ہوگئی تھی۔ ‘دی بلوچستان‘ پوسٹ نے دعویٰ کیا ہے کہ اس کے ہیلی کاپٹر کریش کے پیچھے بلوچ باغیوں کا ہاتھ ہے۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: