உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Pak پارلیمنٹ تحلیل پر سپریم کورٹ کا فیصلہ رات آٹھ بجے ، چیف جسٹس نے ڈپٹی اسپیکر کے فیصلہ کو بتایا غلط

     سپریم کورٹ   آف پاکستان (Supreme Court of Pakistan)نے سماعت کے بعد آج اہم فیصلہ سنایا ہے۔

    سپریم کورٹ آف پاکستان (Supreme Court of Pakistan)نے سماعت کے بعد آج اہم فیصلہ سنایا ہے۔

    پاکستان(Pakistan) میں عمران خان (Imran Khan)حکومت کے خلاف اپوزیشن جماعتوں کی جانب سے پیش کی گئی تحریک عدم اعتماد کو مسترد کرتے ہوئے قومی اسمبلی کی تحلیل کے معاملے پر سپریم کورٹ آف پاکستان (Supreme Court of Pakistan)نے سماعت کے بعد آج اہم فیصلہ سنایا ہے۔

    • Share this:
      اسلام آباد: صدر مملکت عارف علوی اور ڈپٹی اسپیکر قاسم خان سوری کی جانب سے پاکستان(Pakistan) میں عمران خان (Imran Khan)حکومت کے خلاف اپوزیشن جماعتوں کی جانب سے پیش کی گئی تحریک عدم اعتماد کو مسترد کرتے ہوئے قومی اسمبلی کی تحلیل کے معاملے پر سپریم کورٹ آف پاکستان (Supreme Court of Pakistan)نے سماعت کے بعد آج اہم فیصلہ سنایاہے۔سماعت کےدوران کورٹ نے کہاکہ اسپیکرکی رولنگ کو غلط ماناہے کورٹ نے قومی مفادات کو مد نظر رکھتے ہوئے فیصلہ کرنے ہوگا ۔

      اس سے پہلے جمعرات کو سپریم کورٹ میں کیس کی سماعت کے دوران عمران خان اور صدر عارف علوی کے وکلا نے اپنے دلائل پیش کیے تھے۔ چیف جسٹس عمر عطا بندیال نے کہا کہ جب اسپیکر قیصر نے 28 مارچ کو تحریک عدم اعتماد کی مخالفت نہیں کی تو ڈپٹی ا سپیکر سوری نے 3 اپریل کو اسے کیوں مسترد کردیا۔

      یہ بھی پڑھیں:Munjali: کنگنا کے لاک اپ میں منور فاروقی اور انجلی اروڑہ کے جلوے، ’مونجلی‘ کرنے لگا ٹرینڈ

      صدر مملکت عارف علوی کے وکیل علی ظفر نے سپریم کورٹ کو بتایا کہ ان کا قومی اسمبلی تحلیل کرنے کا فیصلہ آئینی تھا۔ اس پر چیف جسٹس سپریم کورٹ عمر عطا بندیال نے صدر مملکت عارف علوی کے وکیل سے سوال کیا کہ اگر سب کچھ آئین کے مطابق ہو رہا ہے تو سیاسی بحران کیا ہے؟ چیف جسٹس نے کہا کہ حکومت کے خلاف لائی گئی تحریک عدم اعتماد کو ووٹ کے بغیر مسترد کرنا آئین کے آرٹیکل 95 کی خلاف ورزی ہے۔ ملک میں وسط مدتی انتخابات ہوئے تو اربوں روپے خرچ ہوں گے۔

      سپریم کورٹ نے عمران خان سے'غیر ملکی سازش' کے ثبوت مانگ تھے جسٹس جمال خان مندوخیل نے جمعرات کو کہا کہ اگرچہ ڈپٹی اسپیکر قومی اسمبلی قاسم خان سوری نے 3 اپریل کے فیصلے کا اعلان کیا جس میں وزیراعظم عمران خان کے خلاف تحریک عدم اعتماد کو مسترد کر دیا گیا تھا لیکن اسپیکر اسد قیصر نے اس پر دستخط کر دیئے۔ دی نیوز انٹرنیشنل کی رپورٹ کے مطابق سپریم کورٹ کا لارجر بینچ آج اس معاملے پر فیصلہ سنا سکتا ہے۔

      یہ بھی پڑھیں:Poonam Pandey نے کنگنا کے ’لاک اپ‘ میں ساری حدیں کیں پار، فینس سے اپنا وعدہ پورا کیا

      اس سے قبل ’دی ایکسپریس ٹریبیون‘ کی ایک رپورٹ میں کہا گیا تھا کہ پاکستانی محکمہ خارجہ کے اعلیٰ حکام نے عمران خان کی حکومت کے پاکستان کے محکمہ خارجہ کے حکام کے مطابق حکومتیں اور رہنما بدلتے رہتے ہیں لیکن ان حکومتوں کی جانب سے جو کچھ کیا گیا ہو اس کا خمیازہ پاکستان کو بہت مشکل اور طویل عرصے تک بھگتنا پڑ سکتا ہے۔ ایک اہلکار نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر ایکسپریس ٹریبیون کو بتایا کہ اب ہمارے سفیر بھی وزارت خارجہ کو کھل کر سب کچھ نہیں بتائیں گے۔

      رپورٹ کے مطابق محکمہ خارجہ کے حکام کا کہنا ہے کہ ان کے ذہن میں یہ خوف پیدا ہو گیا ہے کہ ان کا کوئی خط پبلک ڈومین میں لایا جا سکتا ہے، جب کہ یہ خفیہ دستاویز عمران خان کے الزامات کا امریکہ اور یورپ کے ساتھ پاکستان کے تعلقات پر بہت گہرا اثر پڑے گا۔ یہاں اپوزیشن تنظیم پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے واضح کیا ہے کہ اپوزیشن کی اتحادی جماعتیں اب عمران خان کا سڑکوں کے ساتھ ساتھ عدالت میں بھی مقابلہ کریں گی۔
      Published by:Mirzaghani Baig
      First published: