ہوم » نیوز » عالمی منظر

کورونا وائرس : پاکستان میں ڈاکٹرس کے پاس ہی نہیں ہیں ماسک اور دستانے ، ایک کی موت کے بعد ہڑتال کی وارننگ

پاکستان کے گلگت بلتستان کے ایک افسر شاہ زمان نے اتوار کو بتایا کہ ایران سے لوٹے عقیدتمندوں کی جانچ کررہے ڈاکٹر اسامہ ریاض کی کورونا انفیکشن سے موت ہوگئی ۔

  • Share this:
کورونا وائرس : پاکستان میں ڈاکٹرس کے پاس ہی نہیں ہیں ماسک اور دستانے ، ایک کی موت کے بعد ہڑتال کی وارننگ
پاکستان کے گلگت بلتستان کے ایک افسر شاہ زمان نے اتوار کو بتایا کہ ایران سے لوٹے عقیدتمندوں کی جانچ کررہے ڈاکٹر اسامہ ریاض کی کورونا انفیکشن سے موت ہوگئی ۔

پاکستان میں کورونا وائرس کے مریضوں کی تعداد بڑھ کر 800 سے زیادہ ہوگئی ہے جبکہ چھ لوگوں کی موت بھی ہوچکی ہے ۔ حالانکہ کورونا انفیکشن سے ملک کو بچانے کے کام میں مصروف ڈاکٹرس کے پاس ہی حفاظتی ساز و سامان جیسے ماسک ، سوٹ اور دستانے کی بھی کمی ہے ۔ گلگت بلتستان میں کورونا وائرس کا علاج کررہے ڈاکٹر کی کورونا انفیکشن سے موت کے بعد اب پاکستان میں ڈاکٹرس کی ہڑتال کا خطرہ منڈلانے لگا ہے ۔


پاکستان کے گلگت بلتستان کے ایک افسر شاہ زمان نے اتوار کو بتایا کہ ایران سے لوٹے عقیدتمندوں کی جانچ کررہے ڈاکٹر اسامہ ریاض کی کورونا انفیکشن سے موت ہوگئی ۔ پہلے ان کی موت کی وجوہات پر پاکستانی حکومت نے خاموشی اختیار کر رکھی تھی ، لیکن اب یہ واضح ہوگیا ہے کہ ان کی موت کورونا انفیکشن کی وجہ سے ہی ہوئی ہے ۔ جنوبی ایشیائی ممالک میں پاکستان میں ہی کورونا کے سب سے زیادہ معاملات سامنے آئے ہیں اور ان میں زیادہ تر معاملات سندھ میں سامنے آئے ہیں ، جو کہ ایران سے متصل ہے ۔


وہیں دوسری طرف عمران خان حکومت نے اس بات کا اعتراف کیا ہے کہ اسامہ ریاض کے علاوہ کئی دیگر ڈاکٹرس میں بھی کورونا انفیکشن کی علامتیں پائی گئی ہیں ۔ پاکستان انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنس کے صدر ڈاکٹر اسفندیار خان نے اتوار کو اسلام آباد میں ایک پریس کانفرنس کرکے عمران حکومت کو وارننگ دی ہے کہ یا تو ڈاکٹرس کو سہولیات دی جائیں اور ان کے تحفظ کا خیال رکھا جائے ، نہیں تو ایک ہڑتال کیلئے تیار رہیں ۔


اسفندیار نے کہا کہ حفاظتی سازوسامان کے بغیر کورونا وائرس متاثرین کا علان کرنا ڈاکٹرس کیلئے خودکشی کرنے جیسا ہے ۔ اگر ایسا ہی ہوتا رہا اور ڈاکٹر کو سہولیات دستیاب نہیں کرائی گئیں تو کوئی بھی کسی کورونا متاثر کو چھونے کیلئے تیار نہیں ہوگا ۔ اسفندیار نے جلد از جلد حفاظتی سازوسامان نہ ملنے کی صورت میں ہڑتال کی دھمکی دی ہے ۔
First published: Mar 23, 2020 05:28 PM IST