உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    پاکستان کے سابق وزیراعظم عمران خان کے حکم پر باتھ روم میں بند کردئیے گئے تھے پاکستانی FIA کے چیف

    پاکستان کے سابق وزیراعظم عمران خان کے حکم پر باتھ روم میں بند کردئیے گئے تھے پاکستانی FIA کے چیف

    پاکستان کے سابق وزیراعظم عمران خان کے حکم پر باتھ روم میں بند کردئیے گئے تھے پاکستانی FIA کے چیف

    میمن کی جانب سے کیے گئے اس انکشاف کے مطابق، اس کے بعد عمران خان کے سابق چیف سکریٹری اعظم خان نے میمن کا ہاتھ پکڑا اور انہیں باتھ روم میں لے جا کر بند کردیا۔ میمن نے کہا کہ اعظم خان نے اس وقت مجھے میرے ردعمل کے لئے پھٹکار بھی لگائی تھی۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • New Delhi, India
    • Share this:
      پاکستان کی فیڈرل جانچ ایجنسی (ایف آئی اے) کے سابق ڈائریکٹر جنرل بشیر میمن نے ایک ہیکر کے اُس دعوے کی تصدیق کی ہے کہ سابق وزیراعظم عمران خان کے کہنے پر انہیں باتھ روم میں بند کردیا گیا تھا۔ بدھ کو میڈیا رپورٹس میں یہ خبر سامنے آئی ہے۔ بتادیں کہ ایک ہیکر نے سلسلہ وار ٹوئٹ کرتے ہوئے میمن اور خان کے درمیان ہوئی میٹنگ کا پورا واقعہ شیئر کیا تھا۔ حالانکہ اب یہ ٹوئٹ ہٹادئیے گئے ہیں۔

      عمران خان کی جانب سے مریم نواز کے خلاف غیر مہذب زبان کا استعمال کرنے پر ظاہر کیا تھا اعتراض
      جی او ٹی وی کے مطابق، میمن نے ہیکر کے دعووں کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان مسلم لیگ نواز (پی ایم ایل ۔ این) کی لیڈر مریم نواز کے خلاف غیر مہذب زبان کا استعمال کرنے پر انہوں نے خان کے تئیں سخت ردعمل ظاہر کیا تھا۔ میمن کی جانب سے کیے گئے اس انکشاف کے مطابق، اس کے بعد عمران خان کے سابق چیف سکریٹری اعظم خان نے میمن کا ہاتھ پکڑا اور انہیں باتھ روم میں لے جا کر بند کردیا۔ میمن نے کہا کہ اعظم خان نے اس وقت مجھے میرے ردعمل کے لئے پھٹکار بھی لگائی تھی۔

      یہ بھی پڑھیں:
      مسلم ورلڈ لیگ نے پہلی مرتبہ کہی ہندوستانی سے وابستہ یہ بڑی بات، جانئے کیا کہا؟

      یہ بھی پڑھیں:
      سیاست سے دور رہے گی پاکستانی فوج؟ آرمی چیف جنرل باجوا نے عوام سے کیا یہ بڑا وعدہ

      بتادیں کہ آڈیو لیک کا مدعا پچھلے ہفتہ سوشل میڈیا پر آیا تھا۔ ایک آڈیو میں وزیراعظم شہباز شریف اور ان کے سربراہ سکریٹری توقیر شاہ کے درمیان بات چیت کا ایک ٹیپ سامنے آیا تھا جس سے وہاں کی پوری حکومت ہل گئی تھی۔ وہیں، دوسرے آڈیو میں پاکستان کے وزیراعظم شہباز شریف، قومی اسمبلی کے اسپیکر سردار ایاز صادق، مرکزی وزیر داخلہ رانا ثنا اللہ، مرکزی وزیر دفاع خواجہ آصف، مرکزی وزیر قانون اعظم نظیر تارڑ اور مرکزی منصوبہ بندی وزیر احسن اقبال کی آواز ہونے کا دعویٰ کیا جارہا ہے۔ یہ سبھی وزیراعظم کی قیام گاہ میں کوئی میٹنگ کررہے تھے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: