உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    پاکستان: عمران خان کی گرفتاری کی تمام تیاریاں مکمل، PTI نے دی سنگین نتائج کی وارننگ

    پاکستان: عمران خان کی گرفتاری کی قیاس آرائی

    پاکستان: عمران خان کی گرفتاری کی قیاس آرائی

    پاکستان کے سابق وزیر اعظم عمران خان پر گرفتاری کی تلوار لٹکنے لگی ہے۔ پاکستان تحریک انصاف کے نائب صدر شاہ محمود قریشی نے وزیر اعظم شہباز شریف کی حکومت کو وارننگ دی ہے کہ اگر عمران خان کے خلاف کوئی غیر مناسب کارروائی کی گئی تو اس کے سنگین نتائج بھگتنے ہوں گے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Delhi, India
    • Share this:
      اسلام آباد: پولیس نے 20 اگست کو اسلام آباد میں ایک عوامی ریلی کے دوران آئی جی پولیس اسلام آباد اور ایک خاتون مجسٹریٹ کو دی گئی مبینہ دھمکیوں پر سابق وزیر اعلیٰ عمران خان کے خلاف انسداد دہشت گردی ایکٹ کی دفعہ 7 کے تحت معاملہ درج کیا ہے۔ اس کے بعد عمران خان پر گرفتاری کی تلوار لٹکنے لگی ہے۔ پاکستان تحریک انصاف پارٹی کے نائب صدر شاہ محمود قریشی نے وزیر اعظم شہباز شریف کی حکومت کو وارننگ دی ہے کہ اگر عمران خان کے خلاف کوئی غیر مناسب کارروائی کی گئی تو اس کے سنگین نتائج بھگتنے ہوں گے۔

      نیوز ایجنسی اے این آئی کی ایک خبر کے مطابق، پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے صدر کے خلاف دہشت گردی مخالف قانون (اے ٹی اے) کے تحت معاملہ درج کیا گیا ہے۔ ایسی قیاس آرائیاں کی جارہی ہیں کہ جلد یا اگلے کچھ دنوں میں عمران خان کی گرفتاری بھی ہوسکتی ہے۔ کبھی فوج کے قریبی رہے عمران خان نے اقتدار سے بے دخل کئے جانے کے بعد پلٹ وار کیا۔ طاقتور پاکستانی فوجی سربراہ جنرل قمر جاوید باجود سے عمران خان اس لئے ناراض ہوئے کیونکہ اقتدار بچانے میں فوج نے ان کی کوئی مدد نہیں کی۔

      پاکستان تحریک انصاف پارٹی کے نائب صدر شاہ محمود قریشی نے وزیر اعظم شہباز شریف کی حکومت کو وارننگ دی ہے کہ اگر عمران خان کے خلاف کوئی غیر مناسب کارروائی کی گئی تو اس کے سنگین نتائج بھگتنے ہوں گے۔
      پاکستان تحریک انصاف پارٹی کے نائب صدر شاہ محمود قریشی نے وزیر اعظم شہباز شریف کی حکومت کو وارننگ دی ہے کہ اگر عمران خان کے خلاف کوئی غیر مناسب کارروائی کی گئی تو اس کے سنگین نتائج بھگتنے ہوں گے۔


      یہ بھی پڑھیں۔

      ہندوستان کے خلاف نہیں کی جارہی ہے دہشت گردانہ سازش، پاکستان نے کی خبروں کی تردید

      پاکستان کے وزیر داخلہ رانا ثناء اللہ نے اتوار کو کہا تھا کہ سرکاری اداروں کے افسران کو دھمکی دینے اور ریلی میں اشتعال انگیز بیان دینے کے لئے سابق وزیر اعظم عمران خان کے خلاف معاملہ درج کرنے پر حکومت غور کر رہی ہے۔ عمران خان نے ایک عوامی جلسے میں اعلیٰ پولیس افسران، ایک خاتون مجسٹریٹ، پاکستان کے الیکشن کمیشن اور سیاسی مخالفین کے خلاف ان کے معاون شہباز گل سے کئے گئے برتاو سے متعلق معاملہ درج کرنے کی دھمکی دی تھی۔ شہباز گل کو گزشتہ ہفتے ملک سے غداری کے الزام میں گرفتار کیا گیا تھا۔

      پاکستانی وزیر داخلہ رانا ثناء اللہ نے الزام لگایا کہ پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ اور سابق وزیر اعظم عمران خان اپنے خطاب میں فوج اور دیگر اداروں کو مسلسل نشانہ بنا رہے ہیں۔ اس سے پہلے پاکستان کے الیکٹرانک میڈیا واچ ڈاگ نے عمران خان کی لائیو نشریات پر بھی روک لگانے کا حکم دیا تھا۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: