உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Pakistanمیں عمران خان کے اقتدارسےمحروم ہونے پر ، ہند۔پاک تعلقات پر کیسے پڑے گا اثر ؟ جانئے یہ 5 اہم باتیں

    Youtube Video

    ہندوستان اور پاکستان (India-Pakistan)کے تعلقات کو لے کر بھی کئی سوالات اٹھتے ہیں۔ یہ سوال اہم ہو جاتا ہے کہ اگر عمران کی حکومت گر جاتی ہے تو ہندوستان کے ساتھ تعلقات پر کیا اثرات مرتب ہوں گے؟ کیا پاکستان اورہندوستان کے تعلقات میں کوئی نیا موڑ آئے گا یا عمران کی دستبرداری سے ہند ۔ پاک تعلقات کشیدہ رہیں گے؟

    • Share this:
      Imran Khan News:پاکستان میں سیاسی ہلچل جاری ہے۔ پاکستان کے وزیر اعظم کے عہدے سے عمران خان(Pakistan PM Imran Khan) کی برطرفی تقریباً طے مانی جارہی ہے۔ ایسے میں ہندوستان اور پاکستان (India-Pakistan)کے تعلقات کو لے کر بھی کئی سوالات اٹھتے ہیں۔ یہ سوال اہم ہو جاتا ہے کہ اگر عمران کی حکومت گر جاتی ہے تو ہندوستان کے ساتھ تعلقات پر کیا اثرات مرتب ہوں گے؟ کیا پاکستان اورہندوستان کے تعلقات میں کوئی نیا موڑ آئے گا یا عمران کی دستبرداری سے ہند ۔ پاک تعلقات کشیدہ رہیں گے؟ پاکستان میں تحریک عدم اعتماد (no-confidence vote seeking)کے بعد عمران خان کی حکومت اب اقتدار سے محروم ہونے کے دہانے پر ہے جس کی ایک بڑی وجہ پاکستان کی فوج ہے۔بتایاجارہاہے کہ عمران خان کے فوج کے ساتھ تعلقات اب اتنے اچھے نہیں رہے۔ ایسے میں عمران خان کی وزیراعظم کی کرسی سےمحرومی یقینی ہوگئی ہے۔

      عمران خان کی حکومت گر تی ہے تو تو ہندوستان پر کیا اثرات ہو سکتے ہیں مرتب ؟

      1. پاکستان میں سیاسی بحران اپنے عروج پر ہے۔ پاکستان کی فوج اس بحران میں اہم رول ادا کررہی ہے۔ اس کا مطلب ہے کہ پاکستان اور ہندوستان کی پالیسی میں کسی بڑی تبدیلی کا کوئی امکان نہیں۔ چاہے نواز شریف کے بھائی شہباز شریف ہی اقتدار میں آجائیں۔

      2. پاکستان میں چاہے کسی بھی پارٹی یا مخلوط حکومت کی تشکیل ہو، جب تک پاکستانی فوج وہاں حکومت بنانے اورگرارنے میں مداخلت کرتی رہے گی، پاکستان اور ہندوستان کے تعلقات بہتر نہیں ہوں گے۔

      یہ بھی پڑھیں : یکم اپریل سے یہ چیزیں ہوں گی مہنگی: TV۔ AC، فریج، LED کے ساتھ Mobile چلانا بھی مہنگا، جانیں کتنا بڑھے گا بوجھ؟

      3. کچھ دن پہلے جب پاکستانی فوج نے عمران خان حکومت کو پریشا ن کرنا شروع کیا تو عمران خان نے وہاں کی فوج کو چھیڑنے کے لیے ہندوستان کی خارجہ پالیسی کی ستائش کرتے ہوئے کھل کر ہندوستانی حکومت کی تعریف کی۔

      4.ہندوستان میں پاکستان کے ساتھ تعلقات بہتر ہونے کے خدشات اس لیے بھی ظاہر کیے جا رہے ہیں کہ پاکستان میں اپوزیشن مسلم لیگ ن یا پاکستان پیپلز پارٹی ہو سکتی ہے۔ جب اقتدار ان کے ہاتھ میں آئے گا تو ان کا پورا زور اس بات پر ہو گا کہ پاکستان کی فوج کو کیسے خوش رکھا جائے۔ ظاہر ہے کہ اس کے لیے انہیں ہندوستان کے خلاف مزید سخت رویہ اختیار کرنا پڑ سکتا ہے۔

      5. عمران خان کے جانے سے دو ۔تین چیزیں ممکن ہیں۔ پہلا یہ کہ ہندوستان اور پاکستان کے تعلقات جوں کے توں رہ سکتے ہیں۔ پاک فوج کی مداخلت سےہندوستان کے ساتھ تعلقات میں کشیدگی برقرار رہ سکتی ہے۔ ایک اور امکان ہے کہ اگر عمران اقتدار سے مجروم تو پاکستان میں بنیاد پرست قوتیں مضبوط ہوں گی جس کا اثر ہندوستان پر بھی پڑے گا۔
      Published by:Mirzaghani Baig
      First published: