உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ہندوستان میں ختم ہوا تو اب پاکستان میں شروع ہوگیا کسانوں کا آندولن، جانیں یہاں کیوں پریشان ہیں کسان

    ہندوستان (India) میں کسانوں نے ایک سال لمبی جدوجہد کے بعد جہاں اپنا آندولن (Farmer Protest) واپس لےلیا ہے وہیں اب پاکستان (Pakistan) کے پنجاب میں کسانوں نے اپنے تیور تیزکر دیئے ہیں۔ وہ بجلی بلوں میں زیادہ بلنگ اور گیہوں  سپورٹ قیمت کے معاملے پرصوبائی حکومت کے خلاف احتجاج کر رہے ہیں۔ کسانوں کا کہنا ہے کہ حکومت ان کی پریشانیوں پر دھیان نہیں دے رہی ہے۔

    ہندوستان (India) میں کسانوں نے ایک سال لمبی جدوجہد کے بعد جہاں اپنا آندولن (Farmer Protest) واپس لےلیا ہے وہیں اب پاکستان (Pakistan) کے پنجاب میں کسانوں نے اپنے تیور تیزکر دیئے ہیں۔ وہ بجلی بلوں میں زیادہ بلنگ اور گیہوں  سپورٹ قیمت کے معاملے پرصوبائی حکومت کے خلاف احتجاج کر رہے ہیں۔ کسانوں کا کہنا ہے کہ حکومت ان کی پریشانیوں پر دھیان نہیں دے رہی ہے۔

    ہندوستان (India) میں کسانوں نے ایک سال لمبی جدوجہد کے بعد جہاں اپنا آندولن (Farmer Protest) واپس لےلیا ہے وہیں اب پاکستان (Pakistan) کے پنجاب میں کسانوں نے اپنے تیور تیزکر دیئے ہیں۔ وہ بجلی بلوں میں زیادہ بلنگ اور گیہوں  سپورٹ قیمت کے معاملے پرصوبائی حکومت کے خلاف احتجاج کر رہے ہیں۔ کسانوں کا کہنا ہے کہ حکومت ان کی پریشانیوں پر دھیان نہیں دے رہی ہے۔

    • Share this:
      لاہور: ہندوستان (India) میں کسانوں نے ایک سال لمبی جدوجہد کے بعد جہاں اپنا آندولن (Farmer Protest) واپس لے لیا ہے وہیں اب پاکستان (Pakistan) کے پنجاب میں کسانوں نے اپنے تیور تیز کر دیئے ہیں۔ وہ بجلی بلوں میں زیادہ بلنگ اور گیہوں سپورٹ پرائز کے موضوع پر صوبائی حکومت کے خلاف احتجاج کر رہے ہیں۔ کسانوں کا کہنا ہے کہ حکومت ان کی پریشانیوں پر دھیان نہیں دے رہی ہے۔

      پاکستان کسان اتحاد (پی کے آئی) کے نمائندگان نے لاہور میں سول سکریٹریٹ میں چیف سکریٹری کامران علی افضل سے ملاقات کی اور ان کو اپنی پریشانیوں کے بارے میں جانکاری دی۔ حالانکہ اس ملاقات کے بعد کسانوں نے اپنا مشتعل احتجاج کچھ وقت کے لئے ملتوی کردیا ہے۔ یہ جانکاری ڈان اخبار نے دی ہے۔

      اطلاع کے مطابق، چیف سکریٹری کامران علی افضل نے کہا کہ کسانوں کو کسی بھی بات کی فکرنہیں کرنی چاہئے۔ ان کے بجلی کے بلوں کو معاف کرنے کے لئے بات چیت جاری ہے۔ وہیں گیہوں کی قیمت سے متعلق بھی حکومت فکر مند ہے۔ اس کے علاوہ پی کے آئی کے خالد حسین بٹ نے چیف سکریٹری کو کسانوں کی پریشانیوں سے واقف کرایا۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: