உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Pakistan میں توہین مذہب کے الزام میں شخص کا قتل، پیڑ سے لٹکا کر جان نکلنے تک مارے گئے اینٹ اور پتھر

    Pakistan میں توہین مذہب کے الزام میں شخص کا قتل، پیڑ سے لٹکا کر جان نکلتے تک مارے گئے اینٹ اور پتھر  (File Photo of Pakistan Police / News18)

    Pakistan میں توہین مذہب کے الزام میں شخص کا قتل، پیڑ سے لٹکا کر جان نکلتے تک مارے گئے اینٹ اور پتھر (File Photo of Pakistan Police / News18)

    Blasphemy Law in Pakistan: پاکستان (Pakistan) میں ایک دردناک ہجومی تشدد (Mob Lynching) کا معامہ سامنے آیا ہے ۔ پاکستان کے خانیوال ضلع کے ایک گاؤں میں مبینہ طور پر قرآن کریم کی توہین کرنے کے معاملہ میں ایک شخص کو ہجوم نے پتھر مار مار کر ہلاک کر دیا ۔

    • Share this:
      اسلام آباد : پاکستان (Pakistan) میں ایک دردناک ہجومی تشدد (Mob Lynching)  کا معامہ سامنے آیا ہے ۔ پاکستان کے خانیوال ضلع کے ایک گاؤں میں مبینہ طور پر قرآن کریم کی توہین کرنے کے معاملہ میں ایک شخص کو ہجوم نے پتھر مار مار کر ہلاک کر دیا ۔ پاکستانی کے اخبار ڈان کی ایک رپورٹ کے مطابق گزشتہ روز جنگل ڈیرہ گاؤں میں مغرب کی نماز کے بعد اعلان کیا گیا کہ ایک شخص نے مبینہ طور پر قرآن کریم کے نسخے کے کچھ صفحات کو پھاڑ کر آگ لگادی ہے ، جس کے بعد سینکڑوں مقامی لوگ جمع ہوگئے ۔

      رپورٹ میں عینی شاہدین کے حوالے سے بتایا گیا ہے کہ اس واقعہ کی اطلاع پولیس ٹیم کو پہلے ہی مل گئی تھی اور پولیس نے مشتبہ شخص کو اپنی حراست میں بھی لے لیا تھا ۔ تاہم ہجوم نے اس کو پولیس کی حراست سے چھین لیا اورایک درخت سے لٹکا کر اس کو پتھر مار مار کر ہلاک کردیا ۔ متاثرہ شخص نے مبینہ طور پر بے قصور ہونے کا دعوی بھی کیا ، لیکن مشتعل بھیڑ نے رحم کی اس کی فریاد کو نظر انداز کردیا ۔

      اس دوران پولیس اہلکاروں نے بچانے کی بھی کوشش کی ، لیکن مشتعل بھیڑ نے پولیس والوں پر بھی حملہ کردیا ۔ بی بی سی اردو کی ایک رپورٹ کے مطابق مقتول شخص کی شناخت مشتاق احمد کے طور پر ہوئی ہوئی جو کہ بارا چاک گاوں کا رہنے والا تھا ۔ پولیس نے اس سلسلہ میں تین سو افراد کے خلاف کیس درج کیا ہے اور ان میں سے 62 افراد کو گرفتار کرلیا گیا ہے ۔



      عمران خان نے طلب کی رپورٹ

      وہیں دوسری طرف پاکستان کے وزیراعظم عمران خان نے اس واقعہ کا نوٹس لیتے ہوئے آئی جی پنجاب پولیس سے رپورٹ طلب کی ہے ۔ عمران خان نے ایک ٹویٹ میں کہا کہ کسی فرد یا گروہ کی جانب سے قانون کو ہاتھ میں لینے کی کوشش برداشت نہیں کی جائے گی ۔

      ساتھ ہی ساتھ عمران خان نے فرائض کی انجام دہی میں ناکام رہنے والے پولیس اہلکاروں کے خلاف کارروائی کی تفصیلات بھی طلب کی ہیں ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: