اپنا ضلع منتخب کریں۔

    تو کیا تڑپ۔تڑپ کر مرے گی پاکستانی عوام؟ شہباز حکومت کو الٹی میٹم، ایک ہفتے میں کریں یہ کام ورنہ

    پاکستان کی فارما انڈسٹری (Pharma Industry) نے شہباز حکومت کو دوا ساز فیکٹریاں بند کرنے کی وارننگ دی ہے۔ ملک میں پہلے ہی اشیائے خوردونوش کی قلت ہے۔

    پاکستان کی فارما انڈسٹری (Pharma Industry) نے شہباز حکومت کو دوا ساز فیکٹریاں بند کرنے کی وارننگ دی ہے۔ ملک میں پہلے ہی اشیائے خوردونوش کی قلت ہے۔

    پاکستان کی فارما انڈسٹری (Pharma Industry) نے شہباز حکومت کو دوا ساز فیکٹریاں بند کرنے کی وارننگ دی ہے۔ ملک میں پہلے ہی اشیائے خوردونوش کی قلت ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • pakistan
    • Share this:
      اسلام آباد: مالی بحران کا شکار پاکستان کو ایک اور بڑا جھٹکا لگ گیا ہے۔ اب یہاں کی دوا ساز فیکٹریاں حکومت سے تنگ آچکی ہیں۔ پاکستان کی فارما انڈسٹری (Pharma Industry) نے شہباز حکومت کو دوا ساز فیکٹریاں بند کرنے کی وارننگ دی ہے۔ ملک میں پہلے ہی اشیائے خوردونوش کی قلت ہے، اگر یہاں کارخانے بند ہو گئے تو ادویات کی بھی قلت ہو جائے گی اور ایسی صورت حال میں پاکستانی عوام تڑپ۔تڑپ کر مر سکتے ہیں۔

      فارما انڈسٹری کو موجودہ قیمتوں پر دوائیوں کی فروخت میں مشکلات کا سامنا ہے، اس لیے پاکستان فارماسیوٹیکل مینوفیکچررز ایسوسی ایشن (پی پی ایم اے) نے حکومت کو دواؤں کی قیمتوں میں اضافے کا مطالبہ کرتے ہوئے ایک ہفتے کا الٹی میٹم دیتے ہوئے خبردار کیا ہے کہ اگر ایسا نہ کیا گیا تو فارما سیوٹیکل مینوفیکچررز ایسوسی ایشن (پی پی ایم اے) نے حکومت کو ایک ہفتے کا الٹی میٹم دیا ہے۔ ملک بھر میں فیکٹریاں بند رہیں گی۔

      پاکستان کی مصیبتوں کی نہیں نظر آرہی کوئی انتہا، آئی ایم ایف سے بیل آؤٹ پیکج پر اٹکی بات

      پاکستانی میڈیا اے آر وائی نیوز کے مطابق پاکستان فارماسیوٹیکل مینوفیکچررز ایسوسی ایشن نے وزارت خزانہ اور صحت کے وزراء اور ڈرگ ریگولیٹری اتھارٹی آف پاکستان (ڈریپ) کے سی ای او کو خط لکھ کر ادویات کی قیمتوں میں اضافے کا مطالبہ کیا ہے۔ خط میں فارما انڈسٹری نے حکومت کو الٹی میٹم دیا کہ اگر حکومت نے 'ایک ہفتے کے اندر' قیمتوں میں اضافہ نہ کیا تو وہ ملک بھر میں اپنی فیکٹریاں بند کر دے گی۔ ایسوسی ایشن نے پیٹرولیم مصنوعات اور امریکی ڈالر کی قیمتوں میں اضافے کی تلافی کے لیے ادویات کی قیمتوں میں اضافے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ ادویات کی تیاری اور ان کی موجودہ قیمتوں پر فروخت کرنا ناممکن ہو گیا ہے۔



      فارما انڈسٹری نے قیمتوں میں اضافہ نہ کرنے کی صورت میں ادویات کی قلت کا انتباہ دیتے ہوئے کہا کہ لیٹر آف کریڈٹ (LCs) نہ کھلنے کی وجہ سے فیکٹریوں کو ادویات کی تیاری میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا تھا۔ جنوری کے شروع میں، فارما انڈسٹری نے خبردار کیا تھا کہ ادویات کی قلت کا بحران مزید بڑھ سکتا ہے کیونکہ فارماسیوٹیکل کمپنیاں خام مال کی قلت کا شکار ہیں۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: