உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    پاکستان: 31 مارچ کو ہوگا Imran Khan کی قسمت کا فیصلہ، تحریک عدم اعتماد کی تجویز پر عمل شروع

    پاکستان: 31 مارچ کو ہوگا عمران خان کی قسمت کا فیصلہ

    پاکستان: 31 مارچ کو ہوگا عمران خان کی قسمت کا فیصلہ

    Imran Khan,No confidence vote: اپوزیشن لیڈر شہباز شریف نے جب پارلیمنٹ میں تحریک عدم اعتماد کو پیش کیا، تو اسے راست طور پر نشر کیا گیا تھا۔ انہوں نے تجویز کو پڑھتے ہوئے کہا کہ اس ایوان کا اعتماد کھو دینے کے بعد وزیراعظم عمران خان کو اپنا عہدہ چھوڑ دینا چاہئے۔ حالانکہ اس سے پہلے پارلیمنٹ میں 25 مارچ کو سیشن بلایا تھا، لیکن ایوان کے صدر نے تجویز پیش کرنے کی اجازت دینے سے انکار کردیا تھا۔

    • Share this:
      نئی دہلی: پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان (Imran Khan) کو عہدے سے ہٹانے کے لئے پیر کو اپوزیشن جماعتوں نے پارلیمنٹ میں تحریک عدم اعتماد (No Confidence Motion) کی تجویز پیش کر دی۔ پارلیمنٹ میں تحریک عدم اعتماد کو اپوزیشن لیڈر شہباز شریف نے پیش کیا۔ اب اس تجویز پر جمعرات کو بحث ہوگی اور تحریک عدم اعتماد پر سات دنوں کے اندر ووٹنگ کا عمل مکمل ہوگا۔

      اپوزیشن لیڈر شہباز شریف نے جب پارلیمنٹ میں تحریک عدم اعتماد کو پیش کیا، تو اسے راست طور پر نشر کیا گیا تھا۔ انہوں نے تجویز کو پڑھتے ہوئے کہا کہ اس ایوان کا اعتماد کھو دینے کے بعد وزیراعظم عمران خان کو اپنا عہدہ چھوڑ دینا چاہئے۔ حالانکہ اس سے پہلے پارلیمنٹ میں 25 مارچ کو سیشن بلایا تھا، لیکن ایوان کے صدر نے تجویز پیش کرنے کی اجازت دینے سے انکار کردیا تھا۔

      ذرائع کی مانیں تو اپوزیشن جماعتوں کو بھروسہ ہے کہ حکومت گرانے کے لئے کل 342 اراکین میں سے 172 اراکین کا ساتھ مل سکتا ہے، لیکن وہیں دوسری طرف حکومت نے دعویٰ کیا ہے کہ اس کے پاس ایوان میں مناسب حمایت ہے، جس سے اپوزیشن جماعتوں کی کوششیں ناکام ہوجائیں گی۔

      یہ بھی پڑھیں۔

      پاکستان: Imran Khan حکومت کا آخری دن قریب! اہم اتحادی بلوچ لیڈر کا کابینہ سے استعفی

      سال 2018 میں پاکستان کا وزیر اعظم بننے سے قبل عمران خان نے عوام سے نیا پاکستان بنانے کا وعدہ کیا تھا اور اسی وعدے پر وہ اقتدار میں آئے تھے، لیکن مدت کار ختم ہونے سے قبل ہی اپوزیشن نے وزیر اعظم اور ان کی پارٹی پر بدعنوانی کے سنگین الزامات عائد کئے ہیں۔

      آپ کو بتادیں کہ پاکستانی پارلیمنٹ (قومی اسمبلی) کے سکریٹریٹ کے سامنے اپوزیشن جماعتوں نے گزشتہ 8 مارچ کو وزیراعظم عمران خان کے خلاف تحریک عدم اعتماد کی تجویز پیش کی تھی۔ اپوزیشن نے الزام لگایا تھا کہ عمران خان کی قیادت والی پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کی حکومت ملک میں بڑھتی ہوئی مہنگائی اور اقتصادی بحران کے لئے ذمہ دار ہے۔ اس کے بعد سے ملک کی سیاست میں غیریقینی کے بادل منڈلا رہے تھے۔ اپوزیشن نے ایوان کے صدر سے 14 دنوں کے اندر سیشن بلانے کی گزارش کی تھی۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: