உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    چین نے پھر دیا کنگال دوست کا ساتھ، Pakistan کو ملا 2.3 ارب ڈالر کا قرض

     پاکستانی وزیر خزانہ مفتح اسماعیل نے جمعہ کو کہا کہ چینی بینکوں کے کنسورشیم سے 2.3 بلین ڈالر کا قرض اسٹیٹ بینک آف پاکستان کے اکاؤنٹ میں جمع کیا گیا ہے۔ چین کے اس قرض پاکستان کے کم ہوتے زرمبادلہ کے ذخائر کو بڑھاوا دینے میں مدد ملے گی۔

    پاکستانی وزیر خزانہ مفتح اسماعیل نے جمعہ کو کہا کہ چینی بینکوں کے کنسورشیم سے 2.3 بلین ڈالر کا قرض اسٹیٹ بینک آف پاکستان کے اکاؤنٹ میں جمع کیا گیا ہے۔ چین کے اس قرض پاکستان کے کم ہوتے زرمبادلہ کے ذخائر کو بڑھاوا دینے میں مدد ملے گی۔

    پاکستانی وزیر خزانہ مفتح اسماعیل نے جمعہ کو کہا کہ چینی بینکوں کے کنسورشیم سے 2.3 بلین ڈالر کا قرض اسٹیٹ بینک آف پاکستان کے اکاؤنٹ میں جمع کیا گیا ہے۔ چین کے اس قرض پاکستان کے کم ہوتے زرمبادلہ کے ذخائر کو بڑھاوا دینے میں مدد ملے گی۔

    • Share this:
      چین نے مالی بحران کا شکار پاکستان کو 2.3 ارب ڈالر کا قرض دیا ہے۔ پاکستانی وزیر خزانہ مفتح اسماعیل نے جمعہ کو کہا کہ چینی بینکوں کے کنسورشیم سے 2.3 بلین ڈالر کا قرض اسٹیٹ بینک آف پاکستان کے اکاؤنٹ میں جمع کیا گیا ہے۔ چین کے اس قرض پاکستان کے کم ہوتے زرمبادلہ کے ذخائر کو بڑھاوا دینے میں مدد ملے گی۔

      پاکستان کے وزیر خزانہ مفتح اسماعیل (Pakistani Finance Minister Miftah Ismail) نے ٹویٹر پر لکھا، "مجھے یہ اعلان کرتے ہوئے خوشی ہو رہی ہے کہ چینی کنسورشیم Chinese Consortium سے 15 ارب RMB (تقریباً 2.3 بلین ڈالر) کا قرض آج اسٹیٹ بینک آف پاکستان (SBP) کے اکاؤنٹ میں جمع کر دیا گیا ہے۔" زرمبادلہ کے ذخائر foreign exchange reserves میں اضافہ ہوا ہے۔

      دو روز قبل چین پاکستان کے درمیان ہوا تھا معاہدہ۔
      پاکستان نے دو روز قبل چین کے ساتھ 2.3 ارب ڈالر کے تجارتی قرضے کے معاہدے پر دستخط کیے تھے۔ انہوں نے لین دین میں سہولت فراہم کرنے پر چینی حکومت کا شکریہ بھی ادا کیا تھا۔ وزیر خارجہ بلاول بھٹو زرداری نے بھی چینی قیادت کا شکریہ ادا کیا تھا۔ انہوں نے کہا تھا کہ پاکستانی عوام ہمارے سدا بہار دوستوں کی مسلسل حمایت پر شکر گزار ہیں۔

      فروری سے پاکستان اپنے تیزی سے کم ہوتے زرمبادلہ کے ذخائر کو برقرار رکھنے کے لیے قرضوں کی درخواست کر رہا تھا۔ تاہم آئی ایم ایف IMF نے پاکستان کو قرض دینے کے لیے کئی شرائط رکھی تھیں۔ جس کے بعد پاکستان کو اپنے سدا بہار دوست چین کا رخ کرنا پڑا۔
      پاکستانی روپے کی قیمت میں مسلسل کمی
      بڑھتے ہوئے تجارتی خسارے اور تیزی سے پیسے کو نکالنے کے سبب پاکستانی روپے کی قیمت ڈالر کے مقابلے مسلسل گر رہی ہے۔ قرض کی ادائیگی کی آخری تاریخ نے اسٹیٹ بینک آف پاکستان کے غیر ملکی زرمبادلہ کے ذخائر پر زبردست دباؤ ڈالا ہے۔


      پاکستان لوٹنے پر نواز شریف ہو سکتی ہے جیل، PAKISTAN کے قانونی وزیر کا بیان

      اس وجہ سے پاکستان کی طرح زرمبادلہ کے ذخائر فروری سے اپریل کے آخری ہفتے تک 5.1 ارب ڈالر سے کم ہوکر 11.3 ارب ڈالر رہ گئے۔ پاکستان کے سینٹرل بینک کے مطابق 10 جون کو ان کے زرمبادلہ کے ذخائر 8.99 بلین ڈالر تھا جو 17 جون کو بڑھ کر 14.21 بلین ڈالر ہو گیا تھا۔ (ایجنسی ان پٹ کے ساتھ)
      Published by:Sana Naeem
      First published: