உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    نئے آئی ایس آئی چیف کی تقرری پر پاکستانی وزیر اعظم عمران خان اور آرمی چیف قمر جاوید باجوہ میں کشیدگی

    وزیر اعظم کی طرف سے کچھ سجھاؤ دئے گئے تھے جنہیں باجوہ نے نہیں کیا قبول

    وزیر اعظم کی طرف سے کچھ سجھاؤ دئے گئے تھے جنہیں باجوہ نے نہیں کیا قبول

    لیفٹیننٹ جنرل ندیم انجم (Nadeem Anjum) کو آئی ایس آئی کا نیا سربراہ بنایا گیا ہے۔ پیر کو عمران خان کے ساتھ طویل ملاقات میں آرمی چیف قمر جاوید باجوہ نے برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ حکومت کو فوج کے معاملات میں مداخلت نہیں کرنی چاہیے۔

    • Share this:
      نئی دہلی: پاکستانی خفیہ ایجنسی آئی ایس آئی ISI کے نئے سربراہ کی تقرری پر وزیر اعظم عمران خان اور آرمی چیف قمر جاوید باجوہ (Qamar Javed Bajwa) کے درمیان کشیدگی بڑھتی جا رہی ہے۔ لیفٹیننٹ جنرل ندیم انجم (Nadeem Anjum)  کو آئی ایس آئی کا نیا سربراہ بنایا گیا ہے۔ پیر کو عمران خان کے ساتھ طویل ملاقات میں آرمی چیف قمر جاوید باجوہ نے برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ حکومت کو فوج کے معاملات میں مداخلت نہیں کرنی چاہیے۔

      سی این این نیوز 18 کو موصول ہونے والی ایکسکلوز معلومات کے مطابق عمران خان چاہتے تھے کہ فیض حامد کو دسمبر تک آئی ایس آئی کا سربراہ بنائے رکھا جائے لیکن قمر جاوید باجوہ نے واضح کر دیا تھا کہ یہ کسی قیمت پر نہیں ہو سکتا۔ انہوں نے صاف کر دیا تھا کہ فیض حامد کو 15 نومبر تک اس عہدے پر برقرار رکھا جا سکتا ہے۔

      عمران خان کی بات نہیں مان رہے باجوہ
      آرمی چیف قمر جاوید باجوہ نے عمران خان سے سخت بات کہی کہ آپ فیض حامد کو پسند کرتے ہیں، اس کا یہ مطلب نہیں کہ وہ (حامد) ہمیشہ عہدے پر برقرار رہیں گے۔ حالانکہ یہ بھی کہا جا رہا ہے کہ میٹنگ کے دوران دونوں نے کشیدگی کے مسائل حل کر لیے ہیں۔ دراصل پاک فوج کے ہیڈ کوارٹرز سے ندیم انجم کی تقرری کے اعلان کے پانچ دن بعد بھی وزیراعظم دفتر کی جانب سے کوئی نوٹیفکیشن جاری نہیں کیا گیا تھا۔

      وزیر اعظم کی طرف سے کچھ سجھاؤ دئے گئے تھے جنہیں باجوہ نے نہیں کیا قبول
      عمران خان کے قریبی ذرائع کا کہنا ہے کہ وزیر اعظم کی جانب سے پیر کی میٹنگ میں کچھ سجھاؤ دئے گئے تھے جنہیں باجوہ نے قبول نہیں کیا۔ اس میں ایک آئی ایس آئی میں تنظیمی تبدیلی کی تجویز بھی تھی۔ کہا جا رہا ہے کہ عمران خان ؎اس بات سے پریشان ہیں کہ ان کے عہدے کو اہمیت نہیں دی جا رہی ہے۔ ذرائع کے مطابق عمران خان نے قمر جاوید باجوہ کو بتایا ہے کہ آئی ایس آئی کے سربراہ کی تقرری کا اعلان پہلے وزیراعظم آفس سے ہونا چاہیے تھا۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: