உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ہندوستان کے لئے اتنا میٹھا کیوں بول رہے ہیں شہباز شریف؟ کیا ہے Pakistan کا ارادہ؟

    پاکستان کے سفارتی ذرائع کا کہنا ہے کہ دونوں جانب سے کشیدہ تعلقات کی وجہ سے برسوں سے جمی برف کو پگھلانے کی واضح خواہش ہے۔ غریب پاکستان کو اپنی معاشی حالت بہتر کرنی ہے اور ہندوستان اس میں مدد کرسکتا ہے۔

    پاکستان کے سفارتی ذرائع کا کہنا ہے کہ دونوں جانب سے کشیدہ تعلقات کی وجہ سے برسوں سے جمی برف کو پگھلانے کی واضح خواہش ہے۔ غریب پاکستان کو اپنی معاشی حالت بہتر کرنی ہے اور ہندوستان اس میں مدد کرسکتا ہے۔

    پاکستان کے سفارتی ذرائع کا کہنا ہے کہ دونوں جانب سے کشیدہ تعلقات کی وجہ سے برسوں سے جمی برف کو پگھلانے کی واضح خواہش ہے۔ غریب پاکستان کو اپنی معاشی حالت بہتر کرنی ہے اور ہندوستان اس میں مدد کرسکتا ہے۔

    • Share this:
      اسلام آباد: پاکستان (Pakistan) میں اقتدار تبدیل کرنے کے بعد اس کے سر بھی بدل گئے ہیں۔ ہمیشہ ہندوستان کے تئیں زہر اگلنے والا پاکستان اب ہندوستان کی تعریف کر رہا ہے۔ نئے نئے وزیر اعظم بنے شہباز شریف کو وزیر اعظم نریندر مودی (PM Narendra Modi) نے نہ صرف ٹوئٹ کرکے ان کو مبارکباد دی، بلکہ انہیں رسمی خط بھی لکھا۔ شہباز شریف نے بھی خط کا جواب لکھ کر شکریہ ادا کیا۔ شہبازشریف نے نہ صرف ہندوستان کے ساتھ مل کر کام کرنے کی خواہش ظاہر کی، بلکہ کشمیر کا موضوع بھی اٹھایا۔ ایسے بڑا سوال یہ ہے کہ شہباز شریف ہندوستان کے لئے اتنا میٹھا کیوں بول رہے ہیں اور پاکستان کا ارادہ کیا ہے؟

      ہندوستان اور پاکستان کے وزرائے اعظم نے اپنے صفحات میں دونوں ہی ممالک کے درمیان ’تخلیقی کام' کو لے کر خواہش ظاہر کی۔ سال 2019 میں ہندوستان کے جموں وکشمیر کا خصوصی درجہ ختم کرنے کے بعد پاکستان کے اس وقت کے وزیر اعظم عمران خان حکومت لال ہوگئی تھی۔ دونوں ممالک کے درمیان سبھی دوطرفہ تعلقات رک گئے تھے۔ عمران خان نے بات چیت کے لئے کشمیر میں آرٹیکل 370 کو بحال کرنے کی شرط رکھ دی تھی۔ شہباز شریف نے بھی اپنے خط میں کشمیر کا راگ الاپا ہے، لیکن یہ پاکستان کے لمبے وقت سے چلے آرہے رخ پر ہی مبنی ہے۔

      یہ بھی پڑھیں۔

      اقتدار سے بے دخلی کے بعد بدل گیا Imran Khan کا لہجہ، کہا- میں ’نہ اینٹی انڈیا نہ اینٹی امریکہ‘

      وزیر اعظم مودی نے کیا کہا؟

      پاکستانی اخبار ایکسپریس ٹریبیون نے وزیر اعظم اور شہباز شریف کے درمیان خط کے ذریعہ ہوئی بات چیت پر ایک رپورٹ شائع کی ہے۔ رپورٹ میں پاکستان کے آفیشیل ذرائع کے حوالے سے کہا گیا کہ ہندوستانی وزیر اعظم مودی چاہتے ہیں کہ ’دہشت گردی سے پاک‘ ماحول میں تعلقات میں سدھار کیا جائے۔ وزیر اعظم مودی نے اپنے خط میں پاکستان کو شیئر چیلنجز کو لے کر 'تخلیقی کام' کی اپیل کی ہے۔ شہباز شریف نے بھی اس کے جواب میں اسی طرح کا جذبہ ذکر کیا ہے، لیکن یہ بھی دعویٰ کیا ہے کہ پاکستان دہشت گردی کا شکار رہا ہے اور قربانی دی ہے۔

      اقتصادی بدحالی سے گزر رہا ہے پاکستان

      پاکستان کے سفارتی ذرائع کا کہنا ہے کہ اب دونوں ہی جانب سے کشیدہ تعلقات کی وجہ سے برسوں سے جمی برف کو پگھلانے کی واضح خواہش ہے۔ کیونکہ گزشتہ کئی برسوں سے چلی آرہی کشیدگی کی وجہ سے کسی کا بھلا نہیں ہوا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس وقت پاکستان کی اقتصادی بدحالی کی صورتحال سے گزر رہا ہے۔ معیشت کو پھر سے مضبوط بنانے کے لئے ہندوستان کے ساتھ اچھے تعلقات گھریلو محاذوں پر اس کی مدد کرسکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان کو بھی اس میں فائدہ ہوگا اور وہ چین پر توجہ مرکوز کر پائے گا، جس کے ساتھ اس کی کشیدگی میں اضافہ ہوا ہے۔

       
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: